تیونسی صدر کے نام ’زہریلے لفافے‘ سے خاتون اہلکار بصارت سے محروم

تاریخ    30 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


لندن //تیونسی صدر کو ارسال کیے گئے ’زہریلے لفافے‘ کے حوالے سے وسیع پیمانے پر تحقیقات جاری ہیں جسے کھولتے ہی صدارتی محل ڈائریکٹرکی بصارت ختم ہو گئی تھی۔ تیونسی صدارتی محل کی جانب سے جاری بیان کے حوالے سے مزید کہا ہے کہ 25 جنوری کو صدارتی محل میں آنے والی ڈاک میں ایک لفافہ بھی تھا جس پر صدر جمہوریہ کا نام درج تھا جبکہ لفافہ بھیجنے والے کا نام کہیں نہیں لکھا گیا تھا۔صدارتی محل کی ڈائریکٹر نے صدر کے نام آنے والے لفافے کو جانچنے کے لیے جیسے ہی کھولا انکی حالت غیر ہو گئی اور وہ بے ہوش ہو کر گر گئیں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ لفافہ کھولتے ہی ڈائریکٹر کی بصارت ختم ہو گئی اور انہیں سرمیں شدید درد محسوس ہونے لگا، لفافے میں کوئی مکتوب نہیں تھا وہ خالی تھا۔صدارتی محل کی جانب سے اپنی نوعیت کے منفرد واقعے کے حوالے سے مزید کہا ہے کہ جس وقت خاتون ڈائریکٹر نے صدر کے نام لفافے کو کھولا وہاں انک ا ایک اسسٹنٹ بھی موجود تھا۔
 

تازہ ترین