ایک لاکھ46ہزار ویکسین پہنچ گئے

۔16جنوری کو 28مراکزپر2800طبی ورکروں کی ٹیکہ کاری ہوگی

تاریخ    14 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // پورے بھارت کے ساتھ ساتھ جموں و کشمیر میں 16جنوری سے شروع ہونے والی کورونا مخالف1لاکھ 46ہزار500 ویکسین جموں اور کشمیر پہنچ گئے ہیں۔ان ویکسینوں کو ایک خصوصی یارے میں پہلے جموں اور اسکے بعد سرینگر لایا گیا۔فی الحال ویکسین کو برزلہ میں قائم ڈویژنل ڈرگ سٹور میں کو رکھا گیا ہے۔سٹیٹ ایمونائزیشن آفیسر ڈاکٹر قاضی ہارون نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’پہلے مرحلے کیلئے 79ہزار ویکسین سرینگر پہنچ گئے ہیں جہاں سے یہ مختلف ٹیکہ کاری مراکز کیلئے روانہ کئے جائیں گے‘‘۔ڈاکٹر ہارون نے کہا کہ دور افتادہ اور سرحدی علاقوںمثلا ًگریز، کرنا ، ٹنگڈار اور دیگر علاقوں تک ویکسین پہنچانے کیلئے  خصوصی ہیلی کاپٹروں کا انتظام کیا گیا ہے اورپہلے مرحلے سے قبل تمام علاقوں میں ویکسین پہنچ جائیں گے‘‘۔ ڈائریکٹر ہیلتھ سمیر متو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا’’ ایک لاکھ 46ہزار ویکسینوں میں سے67ہزار 500 ویکسین جموں جبکہ 79ہزار کشمیر پہنچ گئے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ ویکسین پہلے پونے ، بعد میں جموں اور پھر پرواز کے ذریعے سرینگر پہنچائے گئے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ کشمیر صوبے میں 60ہزار اور جموں صوبے میں 46ہزار ہیلتھ ورکروں کو ویکسین دیئے جائیں گے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ مخالف ٹیکہ کاری کیلئے مرکزی حکومت نے 17جنوری کو منعقد ہونے والی پلس پولیو مہم کو منسوخ کردیا ہے ‘‘۔ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز نے کہا ’’ 16جنوری کے روز کشمیر میں 1400سے زائد ہیلتھ وکروں کی ٹیکہ کاری ہوگی‘‘ ۔ویکسین دینے کا یہ سلسلہ بعد میں بدستور جاری رہے گا۔ یاد رہے کہ ویکسین کا ڈوز ہر ایک شخص کو 2بار دینا ہوگا۔ پہلا ویکسین دینے کے 28روز بعد دوسرا ویکسین دیا جائیگا۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ 16جنوری کو کورونا مخالف ٹیکہ کاری کے پہلے مرحلے میں جموں و کشمیر میں ایک لاکھ 6ہزار ہیلتھ ورکروں کو ویکسین دیا جائے گا اور مہم کا آغاز شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ اور جی ایم سی جموںمیں ہوگا ،جہاں لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا اور انتظامیہ کے دیگر افسران موجود رہیں گے۔ بعد میں وزیر اعظم نریندر مودی ٹیکہ لینے والے ہیلتھ ورکروں کے ساتھ براہ راست تبادلہ خیال کریں گے۔ 
 

تازہ ترین