ملک میں کورونا کے سرگرم معاملات میں پھر کمی واقع

تاریخ    22 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


یواین آئی
نئی دہلی//ملک میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس (کووڈ۔19) کے سرگرم معاملوں میں پھر سے کمی آئی ہے اور سرگرم معاملوں کی شرح کم ہوکر 4.85 فیصد پر آگئی ہے ۔ملک میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران سرگرم معاملوں میں 4047 کی کمی آئی ہے جس سے یہ تعداد کم ہوکر 4,39,747 رہ گئی ہے ۔ گزشتہ کچھ دنوں سے سرگرم معاملوں میں مسلسل کم آرہی تھی لیکن جمعہ کو اس تعداد میں 491 کا اضافہ ہوا تھا۔ اس دوران ملک میں کورونا کے معاملے 90.50 لاکھ سے زیادہ ہوگئے ہیں لیکن اطمینان کی بات یہ ہے کہ اس بیماری سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور صحتیاب ہونے کی شرح بڑھ کر 93.67 فیصد آگئی ہے ۔وزارت صحت وخاندانی فلاح وبہبود کی وزارت کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں 46,232 نئے معاملے سامنے آئے اور متاثروں کی تعداد بڑھ کر 90.50 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے ۔ اس دوران 49,715 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جسے ملا کر مجموعی طور سے کورونا سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد اب 84.78 لاکھ ہوگئی ہے ۔ اس مدت میں 564 اور مریضوں کی موت ہونے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 1,32,726 ہوگئی ہے ۔ ملک میں سرگرم معاملوں کی شرح کم ہوکر 4.85 فیصد پر آگئی ہے اور اموات کی شرح بھی کم ہوکر 1.46 ہوگئی ہے ۔گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں سرگرم معاملوں میں سب سے زیادہ کمی دہلی میں آئی ہے ۔ راجدھانی میں سرگرم معاملوں میں 2,285 کی کمی آئی ہے جس کے بعد یہ تعداد 40,936 رہ گئی ہے ۔کورونا سے سب سے زیادہ متاثر مہاراشٹر میں سرگرم معاملے 1460 کم ہوکر 79268 رہ گئے ہیں۔ ریاست میں اس دوران 155 مریضوں کی موت ہونے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 46,511 ہوگئی ہے ، وہیں ابھی تک 16.42 لاکھ لوگ کورونا سے صحتیاب ہوچکے ہیں۔کیرلہ میں صحتیاب ہوئے مریضوں کی تعداد 4.81 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے اورسرگرم معاملے 398 کم ہوکر 67954 رہ گئے ہیں۔ 1997 لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔جنوبی ریاست کرناٹک میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا کے سرگرم مریضوں کی تعداد417 کم ہوکر 24,771 رہ گئی ہے ۔ریاست میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 11,621 ہوگئی ہے اور اب تک تقریبا 8.33 لاکھ صحتیاب ہوئے ہیں۔آبادی کے لحاظ سے ملک کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش میں سرگرم معاملوں میں 600 کے اضافے کے ساتھ یہ 23,357 ہوگئی ہے اور اس وبا سے 7500 لوگوں کی موت ہوچکی ہے ۔اڈیشہ میں سرگرم معاملے کم ہوکر 7040 ہوگئے ہیں اور 1608 لوگوں کی موت ہوچکی ہے ۔ جبکہ صحتیاب ہونے والے لوگوں کی تعداد تین لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے ۔ تلنگانہ میں کورونا کے سرگرم معاملے کم ہوکر12,070 رہ گئے ہیں اور 1426 لوگوں کی موت ہوچکی ہے جبکہ 2.49 لاکھ سے زیادہ لوگ اس وبا سے صحتیاب ہوچکے ہیں۔مغربی بنگال میں 7923 ،پنجاب میں 4572 ،مدھیہ پردیش میں 3138 ، گجرات میں 1212 ، چھتیس گڑھ میں 2691، راجستھان میں 2130،ہریانہ میں 2138، جموں وکشمیر میں 1622، اتراکھنڈ میں 1138، آسام میں 971، جھارکھنڈ میں 939، گوا میں 672، پڈوچیری میں 609، تریپورہ میں 366، ہماچل پردیش میں 500، چنڈی گڑھ میں 255، منی پور میں 232، میگھالیہ میں 106، لداخ میں 96، سکم میں 96، انڈمان ونکوبار میں 61، ناگالینڈ میں 56،اروناچل پردیش میں 49 اور دادر۔نگرحویلی اور دمن ودیو میں دو لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔
ایک دن میں مہاراشٹر میں 155 اور دہلی میں118  کی موت
نئی دہلی// عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) سے سب سے زیادہ متاثر مہاراشٹر میں اس انفیکشن سے گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 155 اور قومی راجدھانی دہلی میں 118 لوگوں کی موت ہوگئی۔کورونا سے متاثر ان دونوں ریاستوں میں حالانکہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران سرگرم معاملوں کی تعداد کم ہوئی ہے ۔ مہاراشٹر میں کورونا سے اب تک 46,511 لوگوں کی جان جاچکی ہے جو ملک میں کورونا سے ہوئی مجموعی اموات کا تقریبا 35 فیصد ہے ۔ وہیں دہلی میں کورونا سے کچھ دنوں میں اموات کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اب تک 8159 لوگوں کی جان جاچکی ہے ۔وزارت صحت وخاندانی فلاح وبہبود کی جانب سے سنیچر کی صبح جاری اعدادوشمار کے مطاب گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں46,232 نئے معاملے سامنے آئے ہیں اور متاثروں کی تعداد تقریبا 90.50 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے اور صحتیاب ہونے والوں کی تعداد 84.78 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ 564 اور مریضوں کی موت کے ساتھ ہی مرنے والوں کی تعداد 1,32,736 ہوگئی ہے ۔ملک میں کورونا کے سرگرم معاملوں کی تعداد میں 4047 کی کمی کے بعد اب سرگرم معاملے کم ہوکر 439,747 رہ گئے ہیں۔یواین آئی
جانچ کا اعدادوشمار ساڑھے13 کروڑ سے زیادہ
نئی دہلی// کورونا وائرس کی زیادہ سے زیادہ جانچ کرکے وائرس متاثروں کا جلد پتہ لگا کر اسے کنٹرول کرنے کی مہم میں بیس نومبر کوملک میں مجموعی جانچ کا اعدادووشمار تیرہ کروڑ سے زیادہ ہوگیا ہے ۔ملک میں عالمی وبا کووڈ۔19 کا پہلا واقعہ اس سال 30 جنوری کو سامنے آیا تھا اور اس کے بعد حکومت نے مسلسل جانچ کا دائرہ بڑھاکر متاثروں کا پتہ لگانے اور وائرس کی روک تھام پر زور دیا۔انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) کی سنیچر کو جاری اعدادوشمار میں بتایا گیا ہے کہ 20 نومبرکو 13 کروڑ چھ لاکھ 57 ہزار 808 پر پہنچ گیا ہے ۔ اس میں 20 نومبر کو دس لاکھ 66 ہزار بائیس جانچ کی گئی۔کورونا وائرس کے بڑے پیمانے پر پھیلنے کی روک تھام کے لئے ملک میں روزانہ اس کی زیادہ سے زیادہ جانچ کی مہم میں 24 ستمبر کو ایک دن میں 14 لاکھ 92 ہزار 409 نمونوں کی جانچ کا ریکارڈ ہے ۔یواین آئی
پنجا ب کی دہلی کو مدد کی پیشکش
چنڈی گڑھ// پنجاب کے وزیراعلی کیپٹن امرندر سنگھ نے دہلی میں تیزی سے بڑھتے کووڈ معاملوں سے نمٹنے میں ہر ممکن مدد دینے کی پیش کش کی ہے۔انہوں نے ریاست میں وبا کی روک تھام میں بے مثال کام کرنے والے پنجاب کے کووڈ سپاہیوں کی ستائش کی۔ انہوں نے بھروسہ دیا کہ کووڈ وبا کی دوسری لہر سے نمٹنے کیلئے ریاستی حکومت پوری طرح تیار ہے۔ریاست میں کووڈ کی دوسری لہر سے نمٹنے کیلئے ہر ممکن قدم اٹھانے کا بھروسہ دیتے ہوئے کیپٹن سنگھ نے کہا کہ دہلی سخت لڑائی لڑرہی ہے اور ضرورت پڑنے پر ہم ہر مدد کیلئے تیار ہیں۔ میں یہ پہلے کہہ چکا ہوں۔‘‘وزیراعلی نے آج یہاں کہا کہ یہ کوئی نہیں جانتا کہ پنجاب میں دوسری لہر کب آئیگی،قومی دارالحکومت خطے (این سی آر) اور دیگر ریاستوں میں پھر سے بڑھتے کورونا کے معاملوں سے واضح ہے کہ یہ ممکنہ طورپر یہ ضرور گھٹے گا۔انہوں نے محکمہ صحت اور او ٹی ایس ملازمین پر پورا یقین ظاہر کیا کہ وہ اس چیلنج کے خلاف پھر پورے اتحاد سے لڑیں گے۔
 

تازہ ترین