مدثرعلی کے گھر دوسرے روزبھی تعزیت پرسی کاسلسلہ جاری

سیاسی،سماجی،ادبی ،مذہبی وصحافتی انجمنوں کے وفود نے لواحقین کی ڈھارس بندھائی

تاریخ    22 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// گریٹر کشمیر کے سینئر ایڈیٹر اور جواں سال صحافی مدثر علی کے انتقال پر دوسرے روز پر اُن کی رہائش گاہ واقع نیو کالونی چرار شریف میں تعزیتی مجلس کا سلسلہ جاری رہا ،جس میں مختلف طبقہ ہائے فکر سے وابستہ لوگوں اور انجمنوں نے اہل خانہ کے ساتھ تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے حق میں دعائے مغفرت کی۔ دوسرے روز بھی چرار شریف میں مدثر علی کے گھر میں ہر سو مایوسی دیکھنے کو ملی اور ہر ایک آنکھ اشکبار نظر آئی۔ پورے علاقے میں ماتم کی کفیت سنیچر کو بھی تھی اور علاقے میں ہر ایک فرد مدثر علی کی موت سے نڈھال نظر آرہا تھا۔ رشتہ داروں،ہمسایوں اور دوستوں کے علاوہ سیاسی، سماجی، مذہبی، ادبی اور صحافتی انجمنوں کے وفود و نمائندوں کی آواجاہی کا سلسلہ بھی دیکھنے کو ملا۔پی ڈی پی کے سینئر لیڈران کے ایک وفد نے چرار شریف جاکر’’ گریٹرکشمیر‘‘ کے مرحوم صحافی مدثر علی کے گھر جاکر اہلخانہ سے تعزیت کی ۔وفد میں پی ڈی پی کے جنرل سیکریٹری غلام نبی لون ہانجورہ، سیکریٹری عبدالحمید کوہ شین،ضلع صدر سرینگر خورشید عالم اور جنرل سیکریٹری یوتھ عارف لائیگروکے علاوہ دیگر کارکنان جن میں محمد یاسین بٹ، عبدالروف بٹ، محمد شفیع کندنگر، فیاض احمد ریشی اور سراج ڈار کے علاوہ دیگر کارکنان بھی شامل تھے۔ وفد میں شامل لیڈران نے مرحوم مدثر علی کو اعلیٰ درجے کا صحافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ غریب لوگوں کی مشکلات کو اجاگر کرنے میں پیش پیش رہتے تھے۔اس دوران نیشنل کانفرنس کے وسطی زون صدر علی محمد ڈار اور ترجمان عمران نبی ڈار نے سنیچر کو چرار شریف جاکر نوجوان صحافی مدثر علی کے اہل خانہ کیساتھ تعزیت کی اور ڈھارس بندھائی۔ اس موقعے پر مرحوم کے حق میں دعائے مغفرت اور کلمات ادا کئے گئے اور مرحوم کی جنت نشینی اور بلند درجات کیلئے دعا کی گئی۔ مدثر علی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے پارٹی لیڈران نے کہا کہ مدثر علی نے کم عمری میں ہی صحافت کے میدان میں اپنا لوہا منوایا تھا اور اُن کی عہد جوانی میں موت سے صحافتی میدان میں ایک خلاء پید اہوگیا ہے، جسے پُر کرنا مشکل ہے۔ انٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے چیئرمین محمد احسن اونتو اور مسلم کانفرنس کے چیئرمین شبیر احمد ڈارنے بھی چرار شریف جاکر مدثر علی کے اہل خانہ کے ساتھ اس سانحہ پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مدثر علی کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ اپنے کام اور محنت کی وجہ سے وہ ہردلعزیز تھے،اور ہمیشہ انکے لبوں پر مسکراہٹ رہتی تھی۔مشترکہ بیان میں انہوں نے گریٹر کشمیر کے ساتھ تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مدثر علی ایک پیشہ ور صحافی تھے جنہوں نے ہمیشہ صداقت کو منظر عام پر لایا اور کبھی بھی اپنے اصولوں کے ساتھ سمجھوتہ نہیں کیا۔
 

تازہ ترین