سینیگال: کشتی ڈوبنے کے واقعے میں 140 مہاجرین ہلاک

تاریخ    31 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


لندن//مہاجرین سے متعلق عالمی ادارے 'انٹرنیشنل آفیسر فار مائیگریشن' (آئی او ایم) نے جمعرات 29 اکتوبر کو اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ ہفتے سینیگال کے ساحل سمندر پر 200 مہاجرین پر مشتمل جس جہاز کے ڈوبنے کا واقعہ پیش آیا تھا اس میں 140 سے بھی زیادہ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اس کے مطابق اس برس سمندری جہاز کا اب تک یہ سب سے بھیانک واقعہ ہے۔آئی او ایم نے اس سلسلے میں ایک بیان جاری کرنے کے ساتھ ہی ٹویٹ بھی کیا ہے، جس میں اس واقعے پر گہرے صدمے کا اظہار کیا گیا ہے۔  ''گزشتہ ہفتے وسطی بحیرہ روم میں چار جہازوں کے حادثے پیش آئے اور پھر اس کے بعد یہ بڑا سانحہ پیش آیا جس پر ہمیں شدید افسوس اور غم ہے۔''وسطی بحیرہ روم میں یہ واقعہ گزشتہ ہفتے پیش آیا تھا جس کے بعد سینیگال کے حکام نے بتایا تھا کہ اس واقعے میں کم از کم 10 افراد ہلاک ہوگئے لیکن 60 کو بچا لیا گیا ہے۔ تاہم تازہ رپورٹ کے مطابق جہاز میں 200 تارکین وطن سوار تھے جس میں سے کم از کم 140 ہلاک ہوگئے ہیں۔
 

تازہ ترین