ماچھوا باغ مہتاب میں مسلح تصادم آرائی| 2جنگجو جاں بحق، فوجی زخمی

امسال ہتھیار اُٹھانے والے 8نوجوانوں نے خود سپردگی کی: آئی جی پی

تاریخ    29 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// سرینگر کے مضافاتی علاقے اکبر کالونی ماچھوا آری باغ میں شبانہ مسلح تصادم آرائی میں دو جنگجو جاں بحق ہوئے جبکہ ایک فوجی اہلکار زخمی ہوا ۔جھڑپ میں ایک تین منزلہ عالیشان مکان تباہ ہوا۔ مہلوک جنگجوئوں میں سے ایک غیر ملکی تھا۔ اکبر کالونی ماچھوا  میں منگل کی شام قریب 7بجے 50آر آر، پولیس اور سی آر پی ایف نے محاصرہ کیا۔پولیس کو یہاں جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ طور پر اطلاع ملی تھی۔جونہی محاصرہ تنگ کر کے قریب 8بجے تلاشی کارروائی کا آغاز کیا گیا تو یہاں موجود جنگجوئوں نے فورسز پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار شدید زخمی ہوا جس کے بعد روشنی کا انتظام کیا گیا۔ رات قریب 10بجے تک یہاں دھماکے اور زوردار فائرنگ ہوتی رہی۔اسکے بعد رات کے بارہ بجے ایک بار پھر آپریشن شروع کیا گیا اور طرفین کے درمیان گولیوں کا تبادلہ ہوا جو کئی گھنٹوں تک جاری رہا جس کے بعد پہلے ایک جنگجو جاں بحق ہوا اوپھر دوسرا جنگجو بھی مارا گیا۔اس دوران تین منزلہ عالیشان مکان کو آگ بھی لگی جس کے نتیجے میں وہ تباہ ہوا اور قابل رہائش نہیں رہا۔مہلوک جنگجوئوں کی شناخت28سالہ جاوید احمد گنائی ولد غلام رسول ساکن وانپورہ پلوامہ اور غیر ملکی خالد الیاس کے بطور کی گئی۔ جاوید20 جون کو جنگجوئوں کی صف میں شامل ہوا تھا۔انکی تحویل سے ایک رائفل، ایک پستول اور ایک گرینیڈ بر آمد کیا گیا۔

آئی جی پی

انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر زون وجے کمار نے کہا ہے کہ رواں سال 8جنگجوئوں نے فورسز کے سامنے معرکہ آرائیوں کے دوران خود سپردگی کی جبکہ اکتوبر میں 5جنگجوئوں نے خود کو پولیس کے حوالے کیا ۔میڈیا سے بات کرتے ہوئے وجے کمار نے کہا کہ انٹلی جنس معلو مات اور دیگر ٹیکنیکل انفارمیشن کی بنیاد پر سیکورٹی فورسز کو کامیابیاں حاصل ہورہی ہیں ۔ان کا کہناتھا کہ سرینگر پولیس کو جنگجوئوں کی نقل وحرکت کے حوالے سے مکمل اطلاعات موصول ہوتی ہیں ،پولیس کا سرینگر میں بہترین نیٹ ورک ہے ۔وجے کمار نے کہا کہ مصدقہ اطلاع ملنے پر ماچھوا بڈگام میں مشترکہ طور پر جنگجو مخالف آپریشن عمل میں لایا گیا ۔انہوں نے کہا کہ تلاشی کارروائی کے دوران فورسز پر جنگجوئوں نے فائرنگ کی۔انہوں نے کہا ’معرکہ آرائی میں پاکستانی جنگجو الیاس اور دوسرا جاوید احمد ساکن پلوامہ جاں بحق ہوئے ‘۔انہوں نے کہا کہ ہائی وے حملے میں الیاس کے ملوث ہونے کی قیاس آرائیوں کو خارج از امکان نہیں قرار دیا جاسکتا ،اسکی تحقیقات کی جارہی ہے ۔ان کا کہناتھا کہ ماچھوا بڈگام میں محاصرے میں پھنسے جنگجوئوں کو خود سپردگی کرنے کا پورا  موقع دیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ جنگجوئوں نے خود سپردگی کی پیشکش ٹھکرا دی جبکہ مقامی جنگجو نوجوان کو سر نڈر کرنے کے لئے کافی وقت دیا گیا ۔انہوں نے کہا ’ میں ایک پھر مقامی جنگجو نوجوانوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ تشدد کا راستہ ترک کرکے مین اسٹریم میں شامل ہوجائیں اور اپنے والدین کیساتھ زندگی گزاریں ‘۔
 

تازہ ترین