تازہ ترین

۔14ماہ بعد پی ڈی پی لیڈرشپ سر جوڑ کر بیٹھ گئی

عوامی رابطہ مہم شروع کرنے اور سیول سو سائٹی سے مشاورت کا فیصلہ

تاریخ    23 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر //پی ڈی پی نے 5 اگست 2019کو جموں و کشمیر کے عوام کو ’’غیر قانونی طور پربے اختیار کرنے کے عمل ‘‘کے خلاف متحدہ رد عمل پر وعدہ بند رہنے اور کسی قسم کا سمجھوتہ نہ کرنے کا عہد دہرایا ہے۔پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کی14ماہ بعدباضابطہ طور پر سیاس امور سے متعلق لیڈران کی میٹنگ منعقد ہوئی جس میں پارٹی کی سنیئر ترین لیڈرشپ موجود تھی۔ میٹنگ میں موجودہ صورتحال  کے علاوہ عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ اور پارٹی امورات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔میٹنگ میں 5اگست کے واقع پر پارٹی صدر کے ردعمل کو صحیح ٹھہراتے ہوئے تمام لیڈران نے تائید کی بلکہ متحدہ ردعمل کو بھی صحیح ٹھہرایا گیا۔ پارٹی نے انہیں گپکار اعلامیہ پر حکمت عملی مرتب کرنے کیلئے اختیاردیدیا۔ میٹنگ میں موجود ایک سنیئر لیڈر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ محبوبہ مفتی کو عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ پر کوئی بھی فیصلہ لینے اور اس سلسلے میں حکمت عملی مرتب کرنے کیلئے اختیاردیا گیا‘‘۔ انہوں نے بتایا کہ میٹنگ میں محبوبہ مفتی کو پارٹی لیڈرشپ نے ہر قسم کی حمایت دینے کی یقین دہانی کراتے ہوئے انکی جانب سے اپنائے گئے موقف کو بر حق قرار دیا ۔ پی ڈی پی میٹنگ میں ایک اہم فیصلہ کرتے ہوئے آئندہ دنوںکے دوران عوامی رابطہ مہم شروع کرنے اور لوگوں تک پہنچنے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا،تاکہ لوگوں کوموجودہ سیاسی صورتحال سے باخبر رکھا جائے۔ میٹنگ میں یہ بھی فیصلہ لیا گیا کہ پارٹی مختلف امورات پر دانشوروں،ماہرین سیاست، سیول سوسائٹی و تجارتی انجمنوں کی لیڈرشپ اور دیگر لوگوں سے بھی آرائیں حاصل کریں گی،اور انہیں زیر غور لایا جائے گا،جس کے بعد پارٹی اپنی حکمت عملی مرتب کرے گی۔  میٹنگ میں بتایا گیا کہ حکومت کی جانب سے جموں کشمیر میں عملائی جارہی ’’ عوام مخالف‘‘ پالسیوں کا توڑ کیا جائیگا۔ نشست میں اس بات پر اتفاق پایا گیا’’ گزشتہ زائد از ایک سال سے  بی جے پی کی جانب سے جوپالیسیاں جموں کشمیر کے عوام پر تھونپی گئیں ان کا توڑ کیا جائے گا‘‘۔پارٹی ترجمان سہیل بخاری کا کہنا ہے میٹنگ میں یک زباں ہو کر کہا گیا کہ 5اگست کو جموں و کشمیر کے عوام کو’’ غیر قانونی طور پر بے اختیار کرنے کا فیصلہ‘‘ لوگوں پر زبردستی تھونپاگیا ہے،اور یہ فیصلہ نہ صرف لوگوں کو نامنظور ہے بلکہ اس فیصلہ کے خلاف جموں و کشمیر کے لوگ متحد طور پر لڑیں گے۔ میٹنگ میں پی ڈی پی کے نائب صدر اے آر ویری، جنرل سیکریٹری جی این لون ہانجورہ، نعیم اختر ، سرتاج مدنی، ڈاکٹر محبوب بیگ، نظام الدین بٹ، سید فاروق اندرابی، صوفی عبدالغفار، پیر زادہ منصور حسین، آسیہ نقاش، ایڈوکیٹ محمد یوسف بٹ، فیاض احمد میر، آغا سید محسن، مشتاق  احمد شاہ، سفینہ بیگ، اعجاز احمد میر، انجم فاضلی، نذیر احمد خان اور وحید الرحمان پرہ شامل تھے۔ اس سے قبل ضلع صدر بڈگام نذیر احمد خان سینکڑوں کارکنوں اور حمایتیوں کے ہمراہ محبوبہ مفتی سے ملاقی ہوئے اور انہیں مختلف امور کی جانکاری دی۔