تازہ ترین

جموں و کشمیر میں مارکیٹ انٹرونشن سکیم کو کابینہ کی منظوری

۔12لاکھ ٹن سیبوں کی خریداری کرنے کیلئے مرکزی کابینہ کی منظوری

تاریخ    22 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   
(File Photo)

مانٹیرنگ ڈیسک
سرینگر// مرکزی کابینہ نے مارکیٹ انٹرونشن سکیم کے تحت جموں کشمیر میں موجودہ میوہ سیزن کے دوران12لاکھ ٹن سیب کی خریداری کی منظوری دی ہے۔ حکومت نے بازار میں دخل دینے کے منصوبے کے تحت جموں و کشمیر میں سیب کی خرایداری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ خریداری  مارکیٹ انٹرونشن سکیم کی گذشتہ برس کی شرائط پر ہی کی جائے گی۔وزیر اعظم ہند نریندر مودی کی صدارت میں بدھ کو ہوئی کابینہ میٹنگ میں اِس تجویز کو منظوری دی گئی۔ سرکاری بیان میں کہا گیا’’ مرکزی کابینہ نے جموں کشمیر میں موجودہ سیزن سال 2020-21 کیلئے مارکیٹ انٹرونشن اسکیم کی توسیع کو منظوری دی ہے‘‘۔نیشنل ایگریکلچرل کاپریٹیو مارکیٹنگ فیڈریشن آف انڈیا لمیٹیڈ کی طرف سے کسانوں کو ان کے بینک کھاتوں میں سیب کی قیمت براہ راست منتقل کی جائے گی۔ تقریباً 12 لاکھ ٹن سیب کی خرایداری اس منصوبے کے تحت کی جا سکتی ہے۔حکومت نے’’ این اے ایف ای ڈی ‘‘کو 2500 کروڑ روپے کے ضمانتی فنڈ کا استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ اگر کوئی نقصان ہوتا ہے تو مرکز اور مرکز کے زیر انتظام ریاست نصف رقم ادا کریں گے۔ مقامی انتظامیہ منڈیوں میں بنیادی سہولت مہیا کروائے گی اور خریداری کے نظام کی مسلسل نگرانی کرے گی۔ سرکار کے مطابق خریداری مرکزی ایجنسی نیشنل ایگریکلچرل کاپریٹیو مارکیٹنگ فیڈریشن آف انڈیا لمیٹیڈ ریاست کی طرف سے نامزد ایجنسی محکمہ باغبانی، ہارٹیکچر پروسسنگ اینڈ مارکیٹنگ کارپوریشن اور ڈائریکٹوریٹ آف پلاننگ اینڈ مارکیٹنگ کے ذریعے کے ذریعے کریگی۔ گزشتہ سیزن کی منتخب قیمتوں کی قائم شدہ کمیٹی کو اس سیزن میں بھی سیبوں کے مختلف زمروں اور اقسام کی قیمت طے کرنے کیلئے قائم رکھا جائے گا،جبکہ جموں کشمیر کی انتظامیہ منتخبہ منڈیوں میں بنیادی ضروریات کی دستیابی کو یقینی بنائے گی۔ خریداری کے عمل  کے بہتر اور جاری نفاذ کی نگرانہ مرکزی سطح پر کابینہ سیکریٹری کی سربراہی میں کی جائے گی،جبکہ کارڈی نیشن کمیٹی جموں کشمیر میں چیف سیکریٹری کی سربراہی میں کام کریگی۔
 
 

شکریہ وزیر اعظم و مرکزی کابینہ!

سیب اگانے والوں کیلئے راحت: سنہا

نیوز ڈیسک
 
سرینگر// لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے وزیر اعظم ہند نریندر مودی اور مرکزی کابینہ کا جموں کشمیر میں سیبوں کے حصول کیلئے مارکیٹ انٹر وینشن سکیم منظور کرنے کیلئے شکریہ ادا کیا ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ سکیم سیب اُگانے والوں کیلئے ایک بڑی راحت ہے اس کے تحت کسی بھی رکاوٹ کے خلاف ایک جامع بیمہ کور فراہم ہو گا جس سے سیب اگانے والوں کی آمدن یقینی بنے گی ۔ اس سکیم سے مارکیٹنگ اور ٹرانسپورٹیشن سے متعلق مسائل بھی حل ہوں گے اور سیب اگانے والوں کو اپنی فصلوں سے بہتر آمدن حاصل ہو گی ۔سنہا نے کہا کہ حکومت باغبانی شعبے کو آگے لے جانے کیلئے وعدہ بند ہے تا کہ سیب اگانے والوں کی روزی روٹی کو فروغ حاصل ہو سکے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ سکیم کے تحت  12 ایل ایم ٹی سیبوں کی فروخت ہو گی جس سے نہ صرف منافع حاصل ہو گا بلکہ دیہی علاقوں میں روز گار کے مواقعے بھی ضمنی خدمات جیسے پیکنگ ، ٹرانسپورٹیشن وغیرہ کے ذریعے پیدا ہوں گے ۔یہ سکیم جموں کشمیر کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ستمبر 2019 میں شروع کی گئی اور جموں کشمیر کے سیب اگانے والوں نے اسے کافی سراہا ۔ سکیم کے تحت سیب نیشنل ایگریکلچر کواپریٹو مارکیٹنگ فیڈریشن آف انڈیا لمٹیڈ ( این اے ایف ای ڈی ) براہ راست اُگانے والوں سے 5 مقررہ کلیکشن سنٹروں سے حاصل کرے گی ۔ جو سو پور ( بارہمولہ ) ، پارمپورہ ( سرینگر ) ، شوپیاں ، کولگام اور اننت ناگ کی میوہ اور سبزی منڈیوں میں قائم کئے گئے ہیں ۔