تازہ ترین

جائیدد ٹیکس کا نفاذ عوام کی پریشانیوں میں اضافہ ہوگا: کشمیر اکنامک الائنس

تاریخ    14 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// کشمیر اکنامک الائنس نے ہفتہ کو میونسپل کارپوریشنوں ، میونسپل کونسلوں اور میونسپل کمیٹیوں کے ذریعہ اپنے اپنے علاقوں میں جائیداد ٹیکس لگانے کے اختیارات دینے کے فیصلے پر حکومت کی تنقید کی۔الائنس کے شریک چیئرمین فاروق احمد ڈار نے کہا کہ موجودہ قوانین میں ترمیم لانا حکومت کا معمول بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا ’’لوگوں پر یہ جائیدادٹیکس نافذ کرنا ناانصافی ہے‘‘۔انہوں نے کہا’’ معیشت کمزور ہونے کی وجہ سے لوگ پہلے ہی مالی بحران کا شکار ہیں، اب غیر ضروری اور غیر منقولہ جائیداد پرٹیکس ان پر مزید بوجھ ڈالے گا۔‘‘انہوں نے مزید کہا کہ ان فیصلوں کے بجائے حکومت ہند جو لوگوں اور کاروباری شعبے کے لئے ایک لاکھ کروڑ روپے سے زائد کا مقروض ہے وہ یہ رقم دے۔ڈار نے کہا’’ہمیں غیر یقینی صورتحال اور کووڈ لاک ڈاؤن کی وجہ سے کافی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے جبکہ لوگ افسردہ اور دباؤ کا شکار ہیں اور اس طرح کے اقدام سے ان کی پریشانیوں میں مزید اضافہ ہوگا۔