کلدیپ ہنڈو اورکیاکنگ کوچ بلقیس میر لیفٹیننٹ گورنر سے ملے | حکومت کھیل کود صلاحیت رکھنے والوں کی نشاندہی اور سہولیات فراہم کرنے کیلئے حکمت عملی پر کام کر رہی

تاریخ    14 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سری نگر//دروناچاریہ اَنعام یافتہ ووشو کوچ کلدیپ ہنڈو اور معروف کیاکنگ اینڈ کینوئنگ کوچ بلقیس میر نے آج یہاں راج بھون میں لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا سے ملاقات کی۔دونوں شخصیات نے لیفٹیننٹ گورنر کو یونین ٹریٹری میں کھیل کود کی ترقی و فروغ سے متعلق تمام جانکاری دی ۔ اُنہوں نے کھیل کود پالیسی اور کھیلو اِنڈیا ٹیم کی عمل آوری سے متعلق مختلف معاملات پر غور وخوض کیا ۔ اِس کے علاوہ یوٹی میں آبی کھیلوں کو فروغ اور دیگرمتعلقہ معاملات پر بھی دوران میٹنگ زیر بحث لائے ۔اِس دوران جموںوکشمیر کے نوجوانوں کو بین الاقوامی بشمول کامن ویلتھ گیمزاور اولمپکس مقابلوں میں حصہ لینے کے لئے تربیت فراہم کرنے سے متعلق حکمت عملی مرتب کے امکانات پر غور ہوا۔  لیفٹیننٹ گورنر نے اس موقعہ پر کہا حکومت جموں وکشمیر میں کھیل کود صلاحیت رکھنے والے کھلاڑیوں کو تمام سہولیات فراہم رکھنے کے لئے ہمہ جہتی حکمت عملی پر کام کر رہی ہے جس کے لئے معروف کھلاڑیوں کی خدمات بھی حاصل کی جارہی ہے اور اُبھرتے کھلاڑیوں کے لئے سپارنسر شپ مواقع بھی تلاش کئے جارہے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ مختلف کھیل مقابلوں سے جموں وکشمیر میں کھیل کود شعبے میں مثبت تبدیلی آئی ہے ۔
 
 

سپورٹس کونسل افرادی قوت کی قلت سے دوچار

جموں//یو این آئی//جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی طرف سے سپورٹس کے فروغ کے لئے دو سو کروڑ روپے کی منظوری کے باوجود بھی جموں و کشمیر سپورٹس کونسل افرادی قوت کی شدید قلت سے دوچار ہے۔کونسل کے اندرونی ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ یونین ٹریٹری میں سپورٹس کے تین مختلف زمروں میں صرف 45 کوچس کام کر رہے ہیں جبکہ یہ تعداد 88 ہونی چاہئے۔انہوں نے کہا: 'جونیئر کوچس کی تعداد 62 ہونی چاہئے لیکن  صرف 21 جونیئر کوچس ہی کام کر رہے ہیں۔ سینئر کوچس کے مجموعی طور 18 پوسٹس ہیں جبکہ صرف 16 سینئر کوچس کام کر رہے ہیں'۔ذرائع نے بتایا کہ سال 2017 میں حکومت نے کوچس کی موجودہ تعداد کو منظوری دی تھی۔کونسل کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ کوچس کی مجموعی تعداد 88 ہونی چاہئے لیکن ہمارے پاس صرف 45 کوچس ہیں جو کام کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سینئر کوچس میں سے دو کی سبکدوشی کے بعد صرف سولہ کوچس ہی کام پر لگے ہوئے ہیں جن میں سے والی بال کے لئے دو، اتھیلیٹک کے لئے دو، کھو کھو کے لئے دو، ہاکی کے لئے دو، ویٹ لفٹنگ کے لئے دو جبکہ بوکسنگ، فٹ بال، باسکٹ بال، کرکٹ، جمناسٹکس اور جوڈو کے لئے ایک ایک کوچ اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں۔
 

تازہ ترین