تازہ ترین

مزید خبرں

تاریخ    29 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


موجودہ حکومت نے میوہ صنعت کو مکمل نظراندازکیا

سابق وزیرعبدالغنی وکیل کاالزام

سرینگر//سابق وزیرعبدالغنی وکیل نے الزام لگایا ہے کہ موجودہ حکومت نے میوہ صنعت کوبالکل نظراندازکیا ہے حالانکہ میوہ اُگانے والے کافی مالی دشواریوں سے دوچار ہیں۔ایک بیان میں عبدالغنی وکیل نے کہا کہ حیرانگی کی بات ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے حالیہ سپیشل پیکیج میں میوہ صنعت کاکہیں نام ونشان نظرنہیںآتا ۔انہوں نے کہا کہ میوہ اُگانے والے گزشتہ دوبرسوں سے خسارے کاسامنا کررہے ہیں جس کی وجہ موسمی حالات،امن وقانون کی ابترصورتحال اورموجودہ کووِڈ بیماری ہے۔وکیل نے کہا کہ پھربھی سرکار نے میوہ صنعت کے فروغ کو مکمل نظراندازکیا ہے حالانکہ میوہ صنعت لاکھوں لوگوں کو روزگار فراہم کررہی ہے اورجموں کشمیرکے اقتصادیات کی ریڑھ کی ہڈی ہے۔عبدالغنی وکیل نے مرکزی سرکاراور جموں کشمیرحکومت پرزوردیا کہ وہ میوہ اُگانے والوں کی اقتصادی بدحالی کو مدنظررکھ کرمیوہ صنعت کوبڑھاوادینے کیلئے ایک خصوصی پیکیج کااعلان کریں اورکسانوں کے ،کے سی سی لون کو معاف کرنے کے احکامات صادر کریں جو میوہ اُگانے والوں کی دیرینہ مانگ ہے ۔انہوں نے الزام لگایا کہ موجوہ سرکار نے میوہ اُگانے والوں کو ہرقسم کی امداد فراہم کرنے کا کئی بار یقین دیاتھالیکن وہ سراسرجھوٹ ثابت ہوا۔انہوں نے کہا کہ اُن میوہ اُگانے والوں کو بھی آج تک کسی قسم کی امدادفراہم نہیں کی گئی جن کا میوہ کووِڈ- 19وباء کی وجہ سے ملک کے مختلف کولڈ اسٹوروں میں تباہ ہوا،اور اُن فروٹ گرورس کو بھی کوئی امداد نہیں دی گئی جن کی فصلیں اچانک برف باری سے تباہ ہوگئی ۔ 
 

 درماندہ 5,13,157 شہریوں کو جموں کشمیر واپس لایاگیا 

جموں//حکومت جموں وکشمیر نے کووِڈلاک ڈاون کے سبب ملک کے مختلف حصوں میں درماندہ جموںوکشمیر کے 5,13,157شہریوں کو براستہ لکھن پور اور کووِڈخصوصی ریل گاڑیوں اور بسوں کے ذریعے تمام رہنما خطوط اور ایس او پیز پر عمل پیرا  رہ کر یوٹی واپس لایا۔حکومت نے لکھن پور کے ذریعے اَب تک بیرون ملک سے934مسافرو ں کویوٹی واپس لایا ہے ۔ اِس طرح جموںوکشمیر حکومت نے اَب تک 155کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوں اور براستہ لکھن پور بسو ںکے کاروان میں اَب تک بیرون یوٹی درماندہ 5,13,157شہریو ں کو کووِڈ۔19 وَبا سے متعلق تمام اَحتیاطی تدابیر پر عمل کرکے واپس لایا۔تفصیلات کے مطابق 27 ستمبرسے28 ستمبر 2020ء کی صبح تک لکھن پور کے راستے سے4349درماندہ مسافریوٹی میں داخل ہوئے۔اَب تک 134ریل گاڑیوں میں یوٹی کے مختلف اَضلاع سے تعلق رکھنے والے124,596درماندہ مسافر جموں پہنچے جبکہ 21خصوصی ریل گاڑیوں سے 15,696مسافر اودھمپور ریلوے سٹیشن پر اُترے۔
 
 

جموں وکشمیر میں حالات انتہائی خراب 

 پنچایتی اراکین کو تحفظ فراہم کیاجائے:پنچایت کانفرنس

یواین آئی
جموں// آل جموں و کشمیر پنچایت کانفرنس کے صدر انیل شرما نے مرکزی زیرانتظام علاقہ کے حالات کو انتہائی خراب قرار دیتے ہوئے حکومت سے پنچایت اراکین کو سیکورٹی فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جہاں فلمی اداکاروں کو چوبیس گھنٹے کے اندر سیکورٹی فراہم کی جاتی ہے وہیں جموں و کشمیر میں جمہوریت کو زندہ رکھنے کے لئے سرگرم عمل پنچایت اراکین کو اس سہولیت سے محروم رکھا گیا ہے۔انیل شرما نے پیر کے روز یہاں نامہ نگاروں کو بتایا،’’جموں و کشمیر میں حالات گذشتہ چھ ماہ سے انتہائی خراب بنے ہوئے ہیں۔ پچھلے بیک ٹو ولیج پروگرام کے دوران سید رفیع کو قتل کیا گیا۔ بعد ازاں اجے بھارتی اور سجاد احمد کھانڈے کو قتل کیا گیا۔ اب اقلیتی طبقے سے تعلق رکھنے والے بی ڈی سی چیئرمین بھوپیندر سنگھ کو قتل کیا گیا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا،’’اب سرکار ضمنی پنچایتی انتخابات  منعقدکرانے جا رہی ہے۔ پاکستان نہیں چاہتا ہے کہ جموں و کشمیر میں جمہوری ادارے مضبوط ہوں۔ ہم وزیر اعظم اور وزیر داخلہ سے گزارش کرتے ہیں کہ ہمارے لوگوں کو سیکورٹی دی جائے‘‘۔ انیل شرما نے سوالیہ انداز میں کہا کہ بالی وڈ اداکارہ کنگنا رناوت کو ایک دن میں سیکورٹی فراہم کی گئی لیکن یہاں کیونکر پنچایت اراکین کو اس سہولیت سے محروم رکھا جا رہا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا،’’کیا کنگنا رناوت جیسے فلم سٹارس کے لئے کوئی قواعد و ضوابط نہیں ہیں۔ کیا یہ قواعد و ضوابط صرف ہمارے لئے ہیں۔ جہاں فلم اداکاروں کو ایک دن میں سیکورٹی فراہم کی جاتی ہے وہیں جمہوری اداروں کو مضبوط کرنے کے لئے قربانیاں دینے والوں کو سیکورٹی فراہم نہیں کی جاتی ہے‘‘۔ 
 
 
 

سوگام لولاب میں ٹائل فیکٹری میں آگ نمودار

اشرف چراغ
 
کپوارہ//سوگام لولاب میں سوموار شام کو آگ کی ایک واردات میں ایک ٹائیل فیکٹری مشینری سمیت خاکستر ہوئی۔اطلاعات کے مطا بق ڈار کنکریٹ میں آگ شام کو ظاہر ہوئی۔بتایا جاتا ہے کہ آگ گیس کااخراج ہونے کی وجہ سے لگی اور اس نے آناًفاناًفیکٹری کو اپنی لپیٹ میں لیا۔تاہم فائر برگیڈ کے بروقت جائے واردات پر پہنچ جانے کی وجہ سے آج کو مزید پھیلنے سے روکا گیا ۔آگ سے فیکٹر ی کا بڑا حصہ جل گیا اور فیکٹری میں موجود مشینری بھی تباہ ہوئی ۔
 

اننت ناگ میں اپنی پارٹی کاضلع سطحی اجلاس 

 جموں وکشمیر میں انتخابی عمل بحال کرنے کی اپیل

سرینگر//اپنی پارٹی نے انتخابی عمل فوری طور بحال کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ نتخابات کے انعقاد سے جموں وکشمیر میں امن وخوشحالی کے نئے دور کا آغاز کرنے میں مدد ملے گی۔ پارٹی کے جنرل سیکریٹری رفیع احمد میر نے ڈاک بنگلہ کھنہ بل میں ایک پارٹی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے حکومت ِ ہند پرزور دیاکہ جتنا جلدی ممکن ہوسکے جموں وکشمیر میں انتخابات کرائے جائیں۔  پارٹی ضلع صدر اننت ناگ عبدالرحیم راتھر بھی اس موقع پر موجود تھے۔دونوں لیڈران نے متعلقہ علاقوں کے مسائل اور ضروریات کو اُجاگر کیا۔جنرل سیکریٹری نے پارٹی کے سیاسی وترقیاتی ایجنڈے پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا ’’ہماری جماعت سیاسی مفادات کیلئے کھوکھلے نعروں اور عوام کو دھوکہ دینے پر یقین نہیں رکھتی، ہماری سیاست حقیقت پر مبنی ہے اور ہم اُسی چیز کا وعدہ کریں گے جوقابل ِ حصول ہے‘‘۔ ضلع صدر عبدالرحیم راتھر نے 5اگست 2019 کے بعدپیداشدہ صورتحال اور موجودہ حالات پر کہاکہ پارٹی قیادت اگست2019میں کی گئی آئینی تبدیلیوں کا معاملہ عدالت عظمیٰ میں سنجیدگی سے لڑ رہی ہے۔ پارٹی کے پاس بہترین لیڈرشپ ہے جن کے پاس صلاحیت ہے کہ وہ جموں وکشمیر کے لوگوں کے خوابوں کو حقیقت میں بد ل سکے۔
 

بارہمولہ میں کئی سیاسی کارکنوں کی شمولیت

سرینگر//ضلع بارہمولہ کے اسمبلی حلقہ سنگرامہ سے متعدد سیاسی کارکنان بشمول پنچایتی نمائندگان نے پیر کو اپنی پارٹی میں شمولیت اختیار کر لی۔پارٹی ترجمان کے مطابق اپنی پارٹی میں پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ یوتھ کے جنرل سیکریٹری نصیر حسین شاہ، بلاک صدر سنگرامہ محمد اکبر ملک ، پیپلز کانفرنس یوتھ ضلع صدر سنگرامہ مدثر شیخ، محمد مقبول لون، نذیر احمد لون، محمد اشرف شاہ، عبدالاحد میر ، راتھر عادل سنگرامہ، عبدالقیوم گنائی  ہائیگام، غلام احمد ڈار بلگام، محمد مقبول میرسرپنچ بلگام، فہمیدہ بانو رنگیل، شکیل احمدگنائی ہائیگام، امتیاز احمد، یاور احمد اور سرور حسین ڈار، مدثر احمد لون اشکورہ، ہلال احمد میر، عبدالحمید ، محمد اکبر وانی، زبیر احمد ملک، جنید تانترے، احمد ارسلان تانترے، ایاز احمد ڈار، سیدعامر قریشی، مقبول احمد رفیع آباد اور شفقت حسین لون نوپورہ نے شمولیت کی۔ پارٹی ترجمان جاوید بیگ اور ضلع صدر بارہمولہ شعیب لون نے ان سبھی کارکنوں کا خیر مقدم کیا۔ انہوں نے سبھی افراد سے گذارش کی کہ وہ متعلقہ علاقوں میں لوگوں کے مشکلات کو اُجاگر کرنے اور اُن کا ازالہ کرنے میں انتھک کام کریں۔
 
 

 گاندربل میں سبزیاں مہنگے داموں فروخت

عوام کی انتظامیہ سے مداخلت کی اپیل 

ارشاد احمد
گاندربل//ضلع گاندربل میں سبزیوں کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے مداخلت کی اپیل کی ہے۔گاندربل کے مختلف علاقہ جات سے لوگوںنے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سبزی فروشوں نے مہنگے داموں پیاز،ٹماٹر،آلو، گوبھی،مٹراورپالک سمیت دیگر سبزیاں فروخت کرنے کا سلسلہ شروع کیا ہے ۔مشتاق احمد راتھر ساکن بی ہامہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ گاندربل قصبے میں سبزی فروش پیاز 70 روپے،ٹماٹر 80 روپے،آلو 60 روپے اورپالک 90 روپے فروخت کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ضلع انتظامیہ کی جانب سے کوئی مارکیٹ چیکنگ نہیں ہورہی ہے اور نہ ہی پولیس کی جانب سے ان کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے۔لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے اس سلسلے میں مداخلت کی اپیل کی ہے۔
 

کشمیر عظمیٰ کے رکنِ ادارہ  بلال فرقانی کو صدمہ 

چاچی صاحبہ انتقال کر گئیں ، صحافتی حلقوں کا اظہارتعزیت 

سرینگر//کشمیر عظمیٰ کے نامہ نگار اور انجمن اردو صحافت کے صوبائی صدر (کشمیر)بلال فرقانی کی چاچی اتوار کو انتقال کر گئیں ۔ادارئہ کشمیر عظمیٰ کے جملہ اراکین نے سوگوار کنبے بالخصوص بلال فرقانی سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔انجمن اردو صحافت اور جملہ صحافتی برادری نے سوگوارخاندان بالخصوص بلال فرقانی کے ساتھ تعزیت وہمدردی کا اظہار کیا ۔اہلیہ غلام احمد بٹ ساکن بٹہ وارہ سرینگر مختصر علالت کے بعد رحلت کر گئیں ۔ انجمن اردو صحافت نے مرحومہ کی مغفرت اور غمزدہ خاندان کیلئے صبر جمیل کی دعا کی ہے ۔انجمن کے صدر ریاض ملک نے ایک تعزیتی پیغام میں کہا ہے کہ انجمن اردو صحافت کے جملہ اراکین بلال فر قانی کے اس صدمہ جانکاہ میں برابر شریک ہیں ۔انہوں نے مرحومہ کے بلند درجات کیلئے دعا کی ۔ادھر خاندانی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ مرحومہ کی فاتحہ خوانی بدھ وار 30ستمبر صبح10بجے اُنکے آبائی مقبرہ واقع بٹہ وارہ نزدیک بجلی گھر پر انجام دی جائے گی ۔کشمیر نیوز سروس اور ادارہ ایشین میل کے مدیران محمد اسلم بٹ اور رشید راہل نے بھی صحافی بلال فر قانونی سے تعزیت کا اظہار کیا ۔
 

سوپور میں نقب زن گرفتار 

غلام محمد
سوپور//سوپور بازار میں نقب زنی کی واردات انجام دینے کے سلسلے میں پولیس نے ایک شخص کوگرفتارکیا ۔ پولیس ترجمان کے مطابق  4ستمبرکو تھانہ سوپور کو اطلاع موصول ہوئی کہ 3اور4ستمبر کی درمیانی رات کو مین بازار میں دو دکانوں سے سازوسامان اڑالیا گیا اور کئی دیگر دوکانوں کے تالے توڑ دئے گئے۔ اطلاع موصول ہوتے ہی پولیس نے کیس زیر ایف آئی آرنمبر243/2020  درج کرلیااور ایک اسپیشل ٹیم تشکیل دیکر تحقیقات شروع کردی۔ تحقیقات کے دوران پولیس نے سخت کوشش کے باوجود د کئی افراد سے پوچھ تاچھ کی۔اس دوران پولیس نے سی سی ٹی فوٹیج حاصل کی اور ٹریڈ رس ایسوسی ایشن کی مدد سے پولیس کی ٹیم نے پرویز احمد سعیدساکن نارائین باغ شادی پورہ گاندربل کو گرفتارکرلیا ۔ انہوں نے اپنے جرم کا اعتراف کیا۔اس سلسلے میں مزید تحقیقات جاری ہے ۔
 

گاندربل میں جنگلی بھنگ کی کاشت تباہ

سرینگر// گاندربل پولیس اور محکمہ مال نے مشترکہ طور پر فسٹ کلاس مجسٹریٹ گاندرل کی نگرانی میں پولیس پوسٹ ناگ بل کے علاقے میں سڑک کے کنارے پھیلی بھنگ کی کاشت کو تباہ کیا ۔ عوام نے گاندربل پولیس کی کارروائی کو سراہنا کی اور قریبی علاقوں میں بھی اس طرح کی مہم جاری رکھنے کی اپیل کی ۔کے این ایس
 

غیرقانونی کان کنی پر چھاپے 

پلوامہ میں16ٹپرضبط،30بلیک لسٹ

پلوامہ//لوگوں کی شکایات پر ڈپٹی کمشنرپلوامہ رگھولنگر نے27ستمبر کو لاسی پورہ،کاکہ پورہ،اور گالندھر میں شبانہ چھاپے مار کر غیرقانونی کان کنی کرتے ہوئے بیسیوں ٹپروں کو ضبط کیا۔چھاپوں کے دوران16ٹپر ضبط کئے گئے جبکہ اے آرٹی اونے30ٹپروں کو بلیک لسٹ کرکے باندھ دیا۔ ڈپٹی کمشنر نے اے آر ٹی او کو حکم دیا کہ ضبط کئے گئے ٹپروں کی رجسٹریشن،ڈرائیونگ لائسنس اور پرمٹ منسوخ کئے جائیں ،اس کے علاوہ متعلقہ تحصیلداروں کو ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی گئی ۔انہوں نے دفعہ144کے باوجود غیرقانونی کان کنی پر برہمی کا اظہار کیا۔ڈپٹی کمشنر نے متعلقہ محکموں کو دن رات غیرقانونی کان کنی پر نظر رکھنے کی ہدایت دی ۔
 

 اوڑی میں خستہ حال سڑکیں اور پانی کی بوسیدہ پائپیں

خواجہ شفیع کی قیادت میں وفد صوبائی کمشنر سے ملاقی 

سرینگر//رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی شمالی کشمیرکے ایک وفدنے چیئرمین شمالی کشمیر خواجہ محمد شفیع کی قیادت میں صوبائی کمشنر کشمیر پی کے پولے سے ملاقات کی جس میں شمالی کشمیر کے عوامی مسائل کو اجاگرکیاگیا ۔ وفد نے دھنی سیداں اوڑی کی خستہ حال سڑک، پانی کی بوسیدہ پائپیں، پرائمری ہیلتھ سینٹروں میں عملہ کی کمی اور دوردراز علاقوںمیں ڈاکٹروں کی کمی جیسے مسائل صوبائی کمشنر کشمیر کی نوٹس میںلائے۔ وفد میںبارہمولہ، کپوارہ، بانڈی پورہ اضلاع میں عوام کودرپیش مشکلات سے آگاہ کیا گیا۔بیان کے مطابق صوبائی کمشنر نے انہیں یقین دلایا کہ عوامی مسائل کو فوری طور پر حل کیاجائے گا۔
 

قاضی گنڈ میں60 کلوفکی برآمد 

گاڑی ضبط اور ڈرائیو ر گرفتار

سرینگر// پولیس نے قاضی گنڈ میں60 کلو فکی برآمد کر کے ایک غیر مقامی ڈرائیور کو گرفتار کر لیا ہے۔ ایس ڈی پی او قاضی گنڈ محمد شفیق کی نگرانی میں ایس ایچ او قاضی گنڈ ارشاد احمد کی سربراہی میں پولیس نے بونیگام قاضی گنڈ کے قریب ایک ناکہ پر ایک گاڑی سے تلاشی کے دوران  6 پیٹیوں میں60 کلو گرام فکی برآمدکی ۔گاڑی کے ڈرائیور رنجیت سنگھ ولد ویشن سنگھ آر ساکن جالندھر پنجاب کو گرفتار کیا گیا جبکہ گاڑی میں سوار دوسرا آ دمی فرار ہونے میں کامیاب ہوا۔پولیس نے اس سلسلے میںایک کیس درج کر لیا ہے۔
 

 سمبل اور سوپور میں پولیس پبلک میٹنگوں کا انعقاد 

سرینگر //تر گام شادی پورہ سمبل میں ایک پولیس پبلک میٹنگ کا انعقاد ہواجس میں علاقے کے ذی عزت شہریوںاور اوقاف کمیٹی ممبران نے شرکت کی ۔ میٹنگ کی صدارت ایس ایچ او سمبل منیب اسلام نے کی۔میٹنگ کے دوران عوام نے منشیات سے نجات ، سڑکوں پر تعمیراتی کاموں کیلئے موادڈالنے کے علاوہ علاقے کے دیگر اہم مسائل اجاگر کئے ۔ ایس ایچ او سمبل نے شرکاء کے مسائل غور سے سننے کے بعد لوگوں کو یقین دلایا کی کہ ان کے مطالبات کو ترجیہی بنیادوں پر حل کیا جائے گا اور دیگر مسائل کو انتظامہ کی نوٹس میں لایا جائے گا تاکہ اُن کا جلدی سے ازلہ کیاجاسکے۔ ایس ایچ او سمبل نے اس موقع پر بتایا کہ اس طرح کی میٹنگیں منعقد کرنے کا اصل مقصد بہتر پولیسنگ کیلئے شرکاء سے تجاویز اور صلاح مشورے طلب کرنا ہوتاہے کیونکہ پولیس کا فرض  بنتا ہے کہ لوگوں کے جان مال کے تحفظ اور معاشرے سے جرائم کا قلع قمع کیا جائے۔ادھر تھانہ پولیس پانزلہ سوپور کی جانب سے پولیس کمیونٹی پارٹنر شپ گروپ کا انعقاد لڈو رفیع آباد میں کیاگیا۔ میٹنگ کی صدارت ایس ایچ او پانزلہ نے کی جس میں لڈو اور لڈورہ رفیع آباد کے معزز شہریوں اور پرائمری اسکول کے طلبہ نے شرکت کی ۔ میٹنگ میں شریک لوگوں نے اپنے مطالبات پولیس کے سامنے پیش کئے۔پولیس نے انہیںیقین دلایاکہ اُن کے مسائل ترجیہی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے اور شرکاء  سے تلقین کی کہ اپنے آس پاس میں سماج دشمن عناصر پر نظر گزر رکھیں۔سی این سی /جے کے این ایس 
 
 

ریاسی میں لوگوں کو پانی کی شدید قلت کا سامنا

زاہد ملک
 
ریاسی//جموں کشمیر کے دیگر اضلاع کی طرح ریاسی ضلع میں بھی گزشتہ 72 گھنٹوں سے محکمہ پی ایچ ای کے ڈیلی ویجر ملازمین کی کام چھوڑ ہڑتال جاری ہے جس کی وجہ سے پورے ضلع میں لوگوں کو پانی کی شدید قلت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ڈیلی ویجروں کا مطالبہ ہے کہ ان کی بقایا تنخواہیں فوری طور واگزار کی جائیں اور مستقل کیا جائے۔ان کا کہنا ہے کہ ان کی تنخواہیں گزشتہ کئی ماہ سے التوا میں پڑی ہوئی ہیں جس کی وجہ سے وہ اہل خانہ سمیت فاقہ کشی کا شکار ہورہے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ کووڈ 19 کے دوران انہوں نے محنت سے دن رات قرنطینہ مراکز، دفاتر، ہسپتالوںاور عام لوگوں تک پانی بنا کسی خلل کے سپلائی کیا لیکن پھر بھی ان کے ساتھ حکومت کی جانب سے سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہا ہے۔پی ایچ کے ڈیلی ویجروں نے کہا کہ آج تک جتنی بھی حکومتیں آئی، ان کی جائز مانگوں کو کسی نے بھی حل نہیں کیا بلکہ صرف انہیں جھوٹی یقین دہانی ملتی رہی۔انہوں نے کہا کہ آج تک ریاسی ضلع میں کئی ایک ڈیلی ویجر ملازمین کی موت بھی ہوئی لیکن اس کے بعد نہ ہی تو حکومت کی جانب سے اور نہ ہی محکمہ کے اعلیٰ افسران نے ان کے ا ہل خانہ کی خبر لی اور وہ دردر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں۔پی ایچ ای ڈیلی ویجرز ایسوسی ایشن ضلع صدر ریاسی دویندر سنگھ نے کہا کہ وہ گزشتہ 72 گھنٹوں سے کام چھوڑ ہڑتال پر ہیں لیکن اس دوران حکومت کی جانب سے ان کی مشکلات کو کوئی بھی سننے نہیں آیا اور شام سے وہ پھر سے 72 گھنٹے کیلئے کام چھوڑ ہڑتال پر بیٹھیں گے۔انہوں نے سوالیہ انداز میں کہا کہ جموں کشمیر کے بی جے پی کے اعلیٰ لیڈران اس مسلے میں خاموش کیوں بیٹھے ہیں ،کیا انہیں ہماری یہ کام چھوڑ ہڑتال دکھائی نہیں دے رہی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے مطالبات کو لیکر ڈٹے رہیں گے ،جب تک کہ جموں کشمیر کی انتظانیہ کی جانب سے کوئی حل نکالا جاتا۔ڈیلی ویجروں کی کام چھوڑ ہڑتال سے لوگوں میں پانی کی ہا ہا کار مچی ہوئی ہے۔ضلع کے مختلف مقامات سے لوگوں نے کہا کہ گزشتہ تین دن سے انہیں پانی سپلائی نہیں کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے انہیں پانی کی شدید قلت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ گرمی کے اس موسم میں جہاں ایک طرف سے انہیں پانی سپلائی نہ ملنے سے طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہیں مویشیوں کو بھی کئی کلومیٹر کی دوری پر پانی پلانے کیلئے لے جانا پڑتا ہے۔
 

پردیش کانگریس کمیٹی کا بھگت سنگھ کو خراج عقیدت

جموں //جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی نے  113 ویں یوم پیدائش کے موقع پربھگت سنگھ کو خراج عقیدت پیش کیا ہے۔ جے کے پی سی سی نے بھگت سنگھ کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے انہیں ملک کا ایک عظیم انقلابی قرار دیا ۔پارٹی لیڈروں نے کہا کہ مادر وطن اور اعلیٰ قربانی سے ان کے قربانی کے جذبے نے طاقتور برطانوی سلطنت کی جڑیں ہلا کر رکھ دیں اور ملک کی آزادی کی جدوجہد کو بڑی طاقت ملی۔ انہوں نے کہا کہ سکھ دیو اور راج گرو کے ساتھ صرف 23 سال کی عمر میں ان کی اعلیٰ قربانی نے برطانوی نوآبادیاتی حکمرانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے کروڑوں شہریوں کو متاثر کیا اور قربانی کے جذبے سے بھرے ہندوستانیوں نے آزادی کے حصول کے لئے جابرانہ حکمرانی کا مقابلہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ 
 

مغل شاہراہ پر واقع نوری چھم آبشار

سیاحتی ترقی کیلئے وزیر اعظم ترقیاتی پروگرام میں شامل 

یو این آئی 
 
جموں// جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ میں واقع نوری چھم آبشار ایک بڑا سیاحتی مقام بننے والا ہے۔مغل شہنشاہ جہانگیر کی شریک حیات نور جہاں کے نام سے منسوب نوری چھمب آبشار وزیر اعظم ترقیاتی پروگرام مرحلہ اول میں شامل کیا گیا ہے جس کے تحت حکومت اس سیاحتی مقام پر تمام سہولیات کو سیاحوں کے لئے دستیاب رکھے گی۔بتادیں کہ یہ آبشار ضلع پونچھ سے قریب چالیس کلو میٹر دور  پیر کی گلی کے نیچے بہرام گالہ گاؤں میں ایک پہاڑی پر واقع ہے جہاں پر تاریخی مغل روڈ اس کے پاس سے ہی گذرتا ہے۔پونچھ ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو افسر تنویر خان نے بتایا کہ یہ جگہ بھی بہت جلد سیاحتی مقامات کی فہرست میں شامل ہوگی اور اس سے جموں میں سیاحوں کی تعداد میں اضافہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اس مقام کی ایک خاص تاریخی حیثیت ہے اور سیاح یہاں آکر اس کے قدرتی حسن سے لطف اندوز ہوں گے۔ایگزیکٹو انجینئر ٹورزم سریش کمار، جو اس پروجیکٹ کے نگران ہیں، نے بتایا کہ 'ڈیولپمنٹ آف نوری چھمب' کے نام سے موسوم یہ خوبصورت پروجیکٹ قریب چار کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہوگا اور اس خوبصورت مقام کے لئے سرکاری اراضی پربنیادی ڈھانچہ تعمیر ہوگا۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک مرکزی اسکیم کے تحت تعمیر کیا جا رہا ہے اور اس کی تعمیر ماہ رواں کے آخر تک مکمل ہونے کی توقع ہے۔موصوف نے کہا کہ پروجیکٹ قریب نوے فیصد مکمل ہے جہاں پارکنگ، کیفٹیریا، پارک وغیرہ جیسی سہولیات دستیاب ہوں گی۔یو این آئی
 

جموں، کٹھوعہ اور سانبہ میں ریت وباجری نکالنے کا معاملہ

اپنی پارٹی کا تحقیقات کا مطالبہ

جموں//اپنی پارٹی صوبائی صدر جموں منجیت سنگھ نے مطالبہ کیا ہے کہ جموں، سانبہ اور کٹھوعہ اضلاع میں کان کنی مافیا اور پنجاب وجموں وکشمیر پولیس کے درمیان ساز باز کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کرائی جائے۔ انہوں نے کہاکہ لیفٹیننٹ گورنرمنوج سنہا اور پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کو چاہئے کہ باجری اور ریت کی نکاسی کے کاروبار سے جڑے مقامی لوگوں کو پولیس کی طرف سے ہراساں کئے جانے کے الزامات کی تحقیقات  کرائی جائے۔ ایک بیان میں منجیت سنگھ نے کہاکہ مقامی لوگوں کو ہراساں کیاجارہاہے، اُن کے ٹریکٹر اور ٹرالیوں کو ضبط کیا جاتا ہے جبکہ مبینہ طور مائننگ مافیا کی پولیس حمایت کر رہی ہے اور انہیں تقویت بخش رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ مقامی انتظامیہ اور پولیس کو چاہئے کہ مافیا کلچر کو فروغ نہ دیاجائے جنہوں نے متعدد علاقہ جات سے مقامی افراد کے ہاتھوں سے کاروبار اور وسائل پولیس کی مدد سے زبردستی لے گئے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیاکہ غیر قانونی طور رائلٹی جمع کرنے کی اجازت دینے والے پولیس حکام اور سول انتظامیہ کے عہدیداران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔
 

بھارت کورونا جنگ جیتے گا: کوویندر

جموں//سابق نائب وزیراعلیٰ کویندر گپتا نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی پوری دنیا میں غیر متنازعہ رہنما کے طور پر سامنے آئے ہیں جب انہوں نے تمام ممالک سے کووڈ-19 کے خلاف متحد ہونے کی دعوت دی۔انہوں نے کہا کہ مودی کی فیصلہ کن قیادت میں ہندوستان  کورونا وائرس سے مؤثر طریقے سے لڑنے میں کامیاب ہوگی ۔ کوویندر نے  شاستری نگر جموں میں جئے دیپ شرما ، کارپوریٹر وارڈ 22 کی موجودگی میں وارڈ آفس کی تعمیراتی کام کا آغاز کرتے ہوئیان باتوں کا اظہار کیا۔سابق نائب وزیر اعلی نے کہا کہ وزیر اعظم مودی جس طرح سے کرونا جنگ کی قیادت کررہے ہیں ، اب یہ دنوں کی بات ہے کہ ہندوستان اپنی سرزمین سے مہلک وائرس کے خاتمے میں عالمی لیڈر کے طور پر ابھرے گا۔ انہوں نے وزیر اعظم مودی کے آفاقی طرز عمل کی بھی تعریف کی جس کے ذریعہ انہوں نے کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں لوگوں کے سماجی موقف ، سیاسی وابستگیوں اور مذہبی پس منظر سے قطع نظر لوگوں کے تمام طبقات میں شامل کیا ہے جو جلد ہی لوگوں کی حیثیت سے اس کوشش کی کامیابی کی بنیاد بن جائے گی۔ انہوں نے وارڈ 22 کے عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ اپنے روز مرہ کے معمول کے کاموں کے لئے گھروں سے نکلتے ہوئے حکومت کی طرف سے جاری کردہ کوویڈ 19 کے تمام رہنما اصولوں پر عمل کریں۔منڈل نائب صدر کے ایل شرما، ونود ابرول ، کیول چوھدری ، اوم پال ، اشوک ساہنی ، اشوک شرما۔ پرمیندر سنگھ ، پورن چند ، ستیش بخشی ، راجندر ، بھوپندر سنگھ بھی سابق وزیر اعلی کے ہمراہ تھے۔
 

مودی سرکارکسانوں کی آمدنی دوگنا کرنے کی وعدہ بند : ترسیم منہاس

جموں //مرکزی حکومت نے ملک بھر میں 10ہزار کسان پروڈیوسر آرگنائزیشن (ایف پی او) تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے جو مودی سرکار کی کاشتکاروں کی آمدنی کو دوگنا کرنے کی کوششوں کا ایک حصہ ہے۔ ان ایف پی اوز کے ذریعہ کسانوں کو اپنی فصلوں کی زیادہ قیمت مل جائے گی ۔یہ بات وزیر اعظم جن کلیان کاری یوجنا پرسار مہم (پی ایم جے کے وائی پی اے) کے یو ٹی کے کنوینر ترسیم منہاس نے ضلع سانبہ کے بیر پور میں منعقدہ ایک کانفرنس میں کہی۔ اجلاس پنچایت صدر پروین گپتا نے منعقد کیا جس میں کسانوں کے مسائل ، غریب علاقوں میں مقیم عام عوام کے مسائل سمیت بہت سے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔منہاس نے کہا کہ مرکزی حکومت کے ذریعہ جاری کی گئی اسکیموں کا فائدہ ناداروں اور عام لوگوں کو نہیں مل رہا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم کے ذریعہ عوامی بہبود کے لئے شروع کی گئی بڑی اسکیموں پر روشنی ڈالی جن میں مدرا یوجنا ، کسان کریڈٹ کارڈ اسکیم ، وزیر اعظم فصل بیمہ سکیم ، اسٹریٹ وینڈر ز ، پھڑی ، دودھ ، سبزیوں وغیرہ شامل ہیں۔منہاس نے کسانوں کے لئے خصوصی طور پر نافذ کی جانے والی سکیموں پر تبادلہ خیال کیا ، جس میں وزیر زراعت کیلاش چودھری کے ذریعہ ملک بھر میں 10000 ایف پی او مراکز کھولنے کی بھی فراہمی کا بندوبست کیا گیا ہے تاکہ کاشتکار فصلوں کا مناسب جائزہ لے کر اپنی فصلوں کو زیادہ قیمتیں حاصل کرسکیں۔اس کے علاوہ سہولت مراکز کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا گیا جس میں جموں و کشمیر میں ہر ضلع ، تحصیل ، بلاک ، اور پنچایت کی سطح پر سویدا کیندر کھولنے پر زور دیا گیا۔ منہاس نے کہا کہ جموں و کشمیر میں کم از کم 300 سوویدا مراکز پہلے ہی کھولنے کے لئے تیار ہیں۔ اس طرح سے ان تمام سکیموں سے لوگوں کو فائدہ ہوسکتا ہے۔اجلاس کے اختتام پر پنچایت صدر بیر پور پروین گپتا نے شکریہ کا ووٹ پیش کیا۔ ریاستی نائب صدر راہول شرما ، بلاک صدر مارہ کلبھوشن سنگھ اور میڈیا ورکر سنی جمبوال بھی کانفرنس میں موجود تھے۔
 

آؤ چلیں گائوں کی اور

کٹھوعہ میں انتظامات کو حتمی شکل 

کٹھو عہ// ضلع ترقیاتی کمشنر کٹھوعہ او پی پی بھگت نے 2 اکتوبر سے 12 اکتوبر 2020 تک منعقد ہونے والے 'بیک ٹو ولیج ' پروگرام کے تیسرے مرحلہ کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے بلاک ڈیولپمنٹ افسران کے اجلاس کی صدارت کی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں  نے بی ڈی اوز سے اپیل کی کہ وہ گرام پنچایت پروفائل ، ترقیاتی پیشرفت کی رپورٹ کے علاوہ تمام مطلوبہ دستاویزات تیار رکھیں ۔ اس کے علاوہ بیک ٹو ولیج پروگراموں کے پہلے پروگراموںمیں اٹھائے گئے معاملات ، شکایات اور مطالبات کے بارے میں لی ہوئی کاروائی کی رپورٹ بھی تیار رکھیں۔انہوں نے اے سی ڈی کٹھوعہ کو یہ بھی ہدایت کی کہ وہ ہر پنچایت میں منریگا کا ڈرافٹ پلان اور 15 ایف سی ، پنچایت نیوز لیٹر اور کافی ٹیبل بک آسانی سے دستیاب رکھیں۔ ڈی سی نے مزید ہدایت دی کہ B2V کے تحت ہر پنچایت میں کاموں کے تازہ ترین اعداد و شمار کو ظاہر کرنا چاہیے۔ ڈی سی نے افسران پر زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائے کہ دورے پر جانے الے تمام افسروں کو مقررہ فارمیٹ پر متعلقہ معلومات فراہم کی جائیں اور متعلقہ بلاکس کے ہر وزٹنگ آفیسر کے ساتھ رابطہ افسر مقرر کریں۔ اے ڈی سی کٹھوعہ نرائن دت ا ور ضلع کٹھوعہ کے تمام 19 بلاکوں کے بی ڈی اوز نے اجلاس میں شرکت کی۔
 

تازہ ترین