تازہ ترین

جموںمیںعارضی ملازمین نے لنگر لنگوٹے کس لئے | 12اکتوبر کو راج بھون گھیرائو کیلئے ’آئو چلو کشمیر‘ کی کال

تاریخ    19 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   
(فائل فوٹو)

سید امجد شاہ
جموں//جموں و کشمیر کیجول لیبرز یونائیٹڈ فرنٹ (جے کے سی ایل یو ایف) نے 2 اکتوبر کو راج بھون کا گھیرائو کرنے کیلئے ’آئو چلو کشمیر‘‘ کی کال دی ہے۔ تنظیم کے صوبائی صدرعمران پرے نے کہا’’ہم نے لکھنپور سے 19سرکاری محکموں کے عارضی ملازمین کے لئے’ آئوچلو کشمیر‘کال دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے گذشتہ کئی سال سے زیر التوا مطالبات کو پورا کرنے کے لئے گاندھی جینتی کے موقعہ پر گاندھیائی طرز کے احتجاج کو اپنایا ہے۔پرے نے کہا کہ 23 ستمبر کو عارضی ملازمین لکھن پور سے اپنا مارچ شروع کریں گے اور کٹھوعہ ، سانبہ ، جموں ، راجوری ، پونچھ ، ادھم پور ، رام بن ، ڈوڈہ اورکشتواڑکے ملازمین پیدل سفر کرتے ہوئے سرینگر جاتے ہوئے دوسرے ساتھیوں کے ساتھ ملیں گے۔ پرے نے دعویٰ کیا کہ وہ پیدل ہی سرینگر کی طرف مارچ کریں گے۔ان کاکہناتھا’’لگ بھگ 10000اعارضی ملازمین یکم اکتوبر کو جموں کے مختلف علاقوں سے اننت ناگ پہنچیں گے اور وہاں جنوبی کشمیر (اننت ناگ ، پلوامہ ، کولگام اور شوپیان) کے تمام کارکنان ان کے ساتھ سرینگر کے لئے مزید مارچ میںشامل ہوں گے، دوسرے اضلاع کے کارکن بھی اسی دن اپنے مارچ کا آغاز کریں گے، اگلے دن 2اکتوبر (گاندھی جینتی) کو وہ سب سرینگر پہنچ کر راج بھون کا گھیرائو کریں گے‘‘۔پر ے نے مزید کہا’’ ہم سرینگر میں ہزاروں ملازمین مظاہرے کریں گے جب تک کہ حکومت ان کے باقاعدہ ہونے ، کم سے کم اجرت ایکٹ کے نفاذ اور جموں و کشمیر میں زیر التوا اجرت کی واگزاری کے بارے میں فیصلہ نہ لے لے‘‘۔اس دوران لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی انتظامیہ کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایاکہ ان کو باقاعدہ بنانا ہے یا نہیں ،ابھی تک اس بارے میں کوئی حتمی فیصلہ نہیں لیا گیا۔ان کاکہناتھا’’ہمیں ان کے درمیان صحیح اور غلط کی تلاش کرنی ہوگی، ان کو فلٹر کرنے میں وقت لگے گا،ان میں سے بہت سے کام پرموجود بھی نہیں ہیں لیکن ان کے نام درج ہیں ،وہ دکانیں چلاتے ہیں یا دوسرے کام کرتے ہیں، ان میں سے کچھ افسروں کے گھروں میں کام کرتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ بے روزگار پڑھے لکھے نوجوانوں کو ملازمت دے کر میرٹ کو ترجیح دینی چاہئے اورعارضی ملازمین کو باقاعدہ بنایا جاسکتا ہے ، لیکن اس میں وقت لگے گا۔قابل ذکر ہے کہ سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی زیرقیادت پی ڈی پی۔ بی جے پی حکومت نے جموں و کشمیر کے مختلف سرکاری محکموں میں کام کرنے والے 60000عارضی ملازمین کی ملازمت کو باقاعدہ بنانے کا اعلان کیا تھالیکن اس سلسلے میں کوئی ٹھوس پیشرفت نہ ہوپائی۔
 

تازہ ترین