تازہ ترین

سینئر ڈاکٹر سمیت 11فوت | مہلوکین کی تعداد 473،33غیریاستی مزدوروں اور 23فورسز اہلکاروںسمیت مزید 507 کا اضافہ

تاریخ    10 اگست 2020 (30 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // ڈسٹرکٹ اسپتال پلوامہ کے سینئر میڈیکل آفیسر سمیت جموں و کشمیر میں اتوار 9اگست کو مزید11افراد کورونا وائرس کی وجہ سے فوت ہوگئے۔ اس طرح مہلوکین کی تعداد بڑھکر 474ہوگئی ہے جن میں سے 35جموں جبکہ 438کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ اتوار کو33غیریاستی مزدوروں، 6بی ایس ایف اور آئی ٹی بی کے 26 اہلکاروں سمیت مزید 507افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اسطرح متاثرین کی مجموعی تعداد 24897ہوگئی ۔ ان میں سے 5611جموں جبکہ 19286کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ تازہ 507متاثرین میں سے 155سرینگر، 44 بارہمولہ، 22پلوامہ، 15کولگام، 6شوپیان، 32اننت ناگ، 10بڈگام، 26کپوارہ،33غیر ریاستی مزدوروں اور 6 بی ایس ایف اہلکاروں سمیت سمیت 50بانڈی پورہ، 18گاندربل، 42جموں،2راجوری،13رام بن، 5 کٹھوعہ، 4 ادھمپور، گگوال کیمپ سانبہ کے 26آئی ٹی بی پی اہلکاروں سمیت 32 سانبہ، 9ڈوڈہ، 10پونچھ اور12ریاسی سے تعلق رکھتے ہیں۔ 

 مزید 11اموات

  اتوار کو ایک سینئر معالج سمیت 11افراد کورونا وائرس کی وجہ سے فوت ہوگئے۔ مرنے والوں میں 2سرینگر، 2بارہمولہ، ایک بڈگام، ایک کپوارہ، ایک بانڈی پورہ،2 اننت ناگ، ایک پلوامہ اور ایک جموں سے تعلق رکھتا ہے۔سکمز صورہ کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’منڈی بل پانپور علاقے سے تعلق رکھنے والا ایک 48سالہ ڈاکٹر محمد اشرف میر ضلع اسپتال پلوامہ میں تعینات تھا اور علامات پیدا ہونے کے بعد 23جولائی کوانکی تشخیصی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔سینر ڈاکٹر نے بتایا ’’ مذکورہ ڈاکٹر  اتوار کو صبح 6بجکر 15منٹ پر فوت ہوگیا‘‘ ۔ محکمہ صحت ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ سرینگر میں فوت ہونے والے متاثرین میں سے بژہ پورہ کی ایک 85سالہ خاتون اورلال بازار سرینگر کی 66سالہ خاتون شامل ہے‘‘۔ڈاکٹر نے بتایا ’’ دونوں خواتین دیگر بیماریوں کے علاوہ کورونا وائرس سے پیدا ہونے والے نمونیا کا شکار تھیں اور اتوار کو صبح سکمز صورہ میں فوت ہوگئی‘‘۔بارہمولہ میں محکمہ صحت کے ایک سینئر افسر نے بتایا ’’پٹن بارہمولہ سے تعلق رکھنے والی ایک 70 سالہ خاتون صدر اسپتال سرینگر میں فوت ہوگئی‘‘۔مذکورہ ڈاکٹر نے بتایا ’’مذکورہ خاتون کو 8اگست کو اسپتال میں داخل کیا گیا تاہم وہ سنیچر اور اتوار کی درمیانی رات کو فوت ہوگئی۔ جی ایم سی بارہمولہ میں تعینات ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ ٹنگمرگ سے تعلق رکھنے والی ایک 65سالہ خاتون بھی کورونا وائرس کی وجہ سے اتوار کو فوت ہوگئی‘‘۔ بڈگام میں تعینات ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ ماگام بڈگام سے تعلق رکھنے والی ایک 70سالہ خاتون صدر اسپتال سرینگر میں سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب کو فوت ہوگئی‘‘۔ سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ متل ہاملہ کولگام سے تعلق رکھنے والی ایک 65سالہ خاتون فوت ہوگئی‘‘۔ بانڈی پورہ میں تعینات ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ نائوپورہ گریز سے تعلق رکھنے والا ایک 58 سالہ شخص سکمز صورہ میں فوت ہوگیا ہے‘‘۔کپوارہ میں محکمہ صحت کے ایک سینئر افسر نے بتایا ’’سنیچر کو دیر رات گئے سوگام لولاب سے تعلق رکھنے والی ایک 55سالہ خاتون نمونیا کی وجہ سے فوت ہوگئی ‘‘۔ سی ڈی اسپتال بخشی نگر میں تعینات ایک ڈاکٹر نے بتایا ’’ ]پریڈ ایریا جموں سے تعلق رکھنے والی ایک 63سالہ شخص بھی کورونا وائرس سے پیدا ہونے والے نمونیا کی وجہ سے فوت ہوگئی ‘‘۔جی ایم سی اننت ناگ میں تعیناتایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ بجبہاڑہ سے تعلق رکھنے والی ایک 70سالہ خاتون اتوار کو وائرس کی وجہ سے فوت ہوگئی۔

حکومتی بیان

حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے  بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے24897معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے7422 سرگرم معاملات ہیں ۔ اَب تک17003اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں ۔جموں وکشمیر میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد472تک پہنچ گئی ،جن میں سے 437کا تعلق کشمیر صوبہ سے اور35کاتعلق جموں صوبہ سے ہیں۔اِس دوران اتوار کو مزید336 شفایاب ہوئے ہیںجن میںجموں صوبے کے74اور کشمیر صوبے کے 262اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اَب تک 717110ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  09؍اگست2020ء کی شام تک 692213نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اَب تک391304افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں41318اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔7422کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ48442 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق293650اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔
 
 
 

ملک میں ایک دن میں ریکارڈ 64ہزار معاملے

ہلاک شدگان کی تعداد کے 43ہزار500 کے قریب

یو این آئی

نئی دہلی// گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے بڑھتے قہر کے دوران ملک میں64ہزار سے زیادہ نئے کیسز رپورٹ ہوئے ، جبکہ پہلی بار اسی وقت کے دوران 53ہزار سے زیادہ افراد نے اس وائرس کو شکست دی۔اتوار کے روز مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ایک دن میں پہلی بار ایک دن میں وائرس کے مریضوں کی سب سے زیادہ تعداد 64 ہزار 399 کیسز آنے سے ان کی تعداد مجموعی 21 لاکھ53 ہزار،011ہوگئی ہے ۔ تین دن سے ملک میں لگاتار وائرس کے 61 ہزار سے زیادہ کیسز رپورٹ ہو رہے ہیں۔ جمعہ کو 62 ہزار،538 اور ہفتہ کو 61 ہزار،537 نئے کیسز رپورٹ ہوئے تھے ۔یہ اطمینان کی بات ہے کہ اسی عرصہ کے دوران ایک ہی دن میں زیادہ سے زیادہ 53 ہزار،879 افراد کی شفایابی سے صحت مند ہونے والوں کی تعداد 14 لاکھ،80 ہزار،885 لاکھ ہوگئی۔گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 861 اموات کے ساتھ ہلاک شدگان کی تعداد 43 ہزار،379 ہوگئی ہے ۔ وزارت کے مطابق شفایابی کی شرح 68.78 فیصد اور ا موات کی شرح 2.01 فیصد تک پہنچ گئی ہے ۔شفایابی کی شرح میں مستقل اضافے سے کورونا وائرس کے نئے کیسز میں اضافے کے باوجود فعال کیسز اتنی تیزی سے نہیں بڑھ رہے ہیں۔ اس کی مثال مہاراشٹرا ہے جہاں متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد پانچ لاکھ کے قریب پہنچ چکی ہے ، لیکن کئی دنوں سے تقریباً 1.47 لاکھ فعال کیسز اب بچے ہوئے ہیں۔ملک میں کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرریاست مہاراشٹر ہے جہاں کورونا کے 1466 مریضوں کے بڑھنے سے فعال کیسزکی تعداد بڑھ کر 1،47،355 اور 275 افراد کی اموات سے مجموعی تعداد 17 ہزار،367 ہوگئی ہے ۔ اسی عرصے کے دوران11ہزار،081 افراد جان لیوا وبا سے شفایاب ہوئے ہیں ، جس سے صحت مند افراد کی مجموعی تعداد 3 لاکھ 38 ہزار 300 باسٹھ ہوگئی۔ ملک میں سب سے زیادہ فعال کیسز اسی ریاست میں ہیں۔