تازہ ترین

بیروت خوفناک دھماکہ،کئی بستیاں ملیا میٹ

ہلاکتوں کی تعداد 100 سے متجاوز، 4ہزار زخمی

تاریخ    6 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


بیروت //لبنان کے دارالحکومت بیروت کے وسط میں واقع ساحلی ویئرہاؤس میں ہونے والے زوردار دھماکے میں ہلاکتوں کی تعداد 100 سے تجاوز کر گئی ہے اور 4ہزار افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ اموات میں اضافے کا خدشہ ہے کیونکہ ریسکیو اور ایمرجنسی ادارے ملبے کے ڈھیر سے لاشیں نکال رہے ہیں۔یہ معاشی بحران سے دوچار اور کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز سے نبردآزما بیروت میں گزشتہ کئی سالوں کے دوران ہونے والا سب سے زوردار دھماکا ہے۔لبنان کے وزیر داخلہ محمد فہمی نے کہا تھا کہ ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ یہ دھماکہ کوئی حملہ تھا یہ بیروت بندر گا ہ پردھماکہ خیز مواد کے ذخیرہ کے مقام کی وجہ سے ہوا ۔ بیروت کی بندر گاہ ایک ایسی جگہ ہے جہاں بڑی مقدار میں دھماکہ مواد ذخیرہ کیا جاتا ہے ۔لبنان کے وزیر اعظم حسن دیاب نے منگل کے روز قوم سے خطاب میں کہا ہے کہ بیروت دھماکے کے لئے جو لوگ بھی ذمہ دار ہیں انہیں بھاری قیمت ادا کرنی پڑے گی۔مسٹر دیب نے کہا ‘‘ آج جو کچھ بھی ہوااس کے لئے سزا دی جائے گی اور اس کے لئے ذمہ دار لوگوں کو اس کی بھاری قیمت چکانی پڑے گی’’۔وزیر اعظم حسن دیاب نے دوست ممالک سے لبنان کی مدد کرنے کی اپیل کی ہے ۔ انہوں نے کہا ‘‘ ہم ذمہ داری کے ساتھ ہر سطح پر تعاون کرنے کے لئے تیار ہیں ۔ میں آپ سبھی سے لبنان کے زخموں پر مرہم لگانے کے لئے متحد ہونے کی اپیل کرتا ہوں ’’۔  اس خوفناک دھماکے کی وجہ سے بیروت کے رفیق حریری انٹرنیشنل ایئرپورٹ کو بھی نقصان پہنچا ہے ۔کئی لوگوں کے ملبے تلے دبے ہونے کا خدشہ ہے ۔
 

۔2لاکھ سے زائد افراد بے گھر

بیروت//لبنان کے صدر نے بدھ کو کہا کہ دارالحکومت بیروت مین منگل کو ہوئے دھماکوں سے گھروں اور رہائشی عمارتوں سمیت اونچی عمارتوں کو کافی نقصان پہنچا ہے اور اس سے دولاکھ سے زیادہ افراد بے گھر ہوگئے ہیں۔صدر نے کہا کہ کابینہ کی ہنگامی میٹنگ بلائی اور کہا کہ دارالحکومت میں ہوئے زبردست دھماکوں کے بعد دو ہفتے کے لیے ہنگامی حالات کا اعلان کیا جانا چاہیے۔ان دھماکوں میں کم ازکم 100 افراد کی جان چلی گئی اور 4000 سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔حکام نے کہا کہ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے کیونکہ لوگوں کی تلاش کے لیے ہنگامی عملہ ملبے سے لوگوں کو نکالنے کے لیے کھدائی کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بیروت بندرگاہ پر منگل کو زبردست دھماکے ہوئے۔حکام نے کہا کہ گوداموں میں سے جب ایک گودام میں رکھی گئی وافر مقدار میں امونیم نائٹریٹ نے آگ پکڑ لی،تو پورا شہر دہل گیا اور اس سے وسیع پیمانے پر نقصان ہوا۔وزیراعظم حسن دیاب نے بدھ کو تین روز کے سوگ کی اپیل کی۔یواین آئی
 

عالمی رہنمائوں کا شدید رد عمل

لبنان کو امداد کی پیش کش

بیروت//دنیا کے لگ بھگ تمام رہنماؤں نے لبنان کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اسکی ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے ۔فرانس پہلا ملک ہے جس نے لبنان کی مدد کے لئے امداد بھیجی ہے ۔فرانسیسی صدر امانوئل میکرون نے ٹوئٹ کیا ‘‘میں بیروت میں ہونے والے دھماکے کے بعد لبنان کے عوام کے لئے خیر سگالی کے جذبے سے اظہار یکجہتی کرتا ہوں’’۔ لبنان کی امداد کے لئے فرانس سے ضروری سامان بھیجا گیا ہے ’’۔برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے بھی لبنان کے عوام سے اظہار یکجہتی اور تعزیت کرتے ہوئے مدد کی پیش کش کی ہے ۔کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے بھی ایک بیان جاری کیا جس میں کہا گیا ہے کہ بحران کی اس گھڑی میں ان کا ملک لبنان کے ساتھ کھڑا ہے اور وہ ہر ممکن مدد فراہم کرنے کے لئے تیار ہے ۔اس کے علاوہ ، یوروپی یونین ، شام کے صدر بشار الاسد ، ترک صدر رجب طیب اردگان ، یوکرین کے صدر ولادمیر زیلنسکی اور بہت سے دوسرے عالمی رہنماؤں نے لبنان کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے مدد کی پیش کش کی ہے 
 
عالمی ادارہ صحت نے طبی امداد بھیجی
اقوام متحدہ//ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) نے لبنان میں خوفناک دھماکے کے بعد 500 سے زائد زخمیوں کے علاج کے لئے میڈیکل آلات کے علاوہ ادویات اور 500 سرجری کٹس بھیجنے کا اعلان کیا ہے ۔منگل کو ڈبلیو ایچ او کے ترجمان اناس حمام نے یہ اطلاع دی۔مسٹر حمام نے کہا‘‘دھماکے کے بعد لبنانی وزیر صحت کی ایک درخواست کی بنیاد پرڈبلیو ایچ او 500 زخمیوں کے علاج کے لئے تمام ضروری طبی سامان کے علاوہ دوائیں اور 500 سرجری کٹس بھی بھیج رہا ہے ۔لبنانی دارالحکومت بیروت میں ایک بندرگاہ پر منگل کی شام ایک زبردست دھماکے میں کم از کم 63 افراد ہلاک اور 3000 سے زائد دیگر زخمی ہوگئے تھے ۔ بیروت کا رفیق حریری انٹرنیشنل ایئرپورٹ کو بھی اس خوفناک دھماکے کی وجہ سے نقصان پہنچا ہے ۔ڈبلیو ایچ او کے ترجمان نے بتایا کہ تنظیم لبنان کے وزیر صحت اور ان اسپتالوں سے مستقل رابطے میں ہے جہاں زخمیوں کا علاج کیا جارہا ہے ۔انہوں نے کہا‘‘دھماکے سے متاثر تمام افراد کے لئے اظہار تعزیت اور دعا ہے ۔ لبنان میں ڈبلیو ایچ او کا مشن ملک میں لوگوں کی بہتر صحت کو یقینی بنانے کی سمت کام کرتا رہے گا۔ ’’ڈبلیو ایچ او نے لبنان کے پڑوسی ممالک سے دھماکہ کے وقت میں متحد ہونے کی اپیل کی ہے ۔
 
امریکہ مدد کے لئے تیار:ٹرمپ
واشنگٹن//امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے لبنان کے دارالحکومت بیروت میں ہوئے خوفناک دھماکے کو خوفناک حملہ قرار دیتے ہوئے ہر ممکن امداد کی یقین دہانی کرائی ہے ۔مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ امریکہ لبنان کے ساتھ کھڑا ہے اور ہر ممکن امداد کے لئے تیار ہے ۔اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو نے کہا کہ بیروت میں خوفناک دھماکے کی جانچ رپورٹ کا امریکہ منتظر ہے ۔مسٹر پومپیو نے ایک بیان میں کہا ‘‘ ہم سمجھتے ہیں کہ لبنانی حکومت دھماکے کی وجوہات کا پتہ لگانے کے لئے جانچ میں مصروف ہے ۔ ہم جانچ کے نتائج کا انتظار کر رہے ہیں ۔ وزارت خارجہ پوری صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہے اور لبنان کی ہر طرح سے مدد کرنے کے لئے تیار ہے ’’ ۔امریکہ نے اس دھماکے کے بعد زہریلی گیسوں کے اخراج کی بات کہی ہے اور حادثے کے آس پاس رہنے والے لوگوں کو گھروں سے باہر نہ آنے کا مشورہ دیا ہے ۔امریکی محکمہ خارجہ نے ایڈوائزی جاری کرتے ہوئے کہا ‘‘ ہم لبنانی دارالحکومت بیروت میں ہونے والے دھماکے کی رپورٹ پر نظر رکھے ہوئے ہیں ۔