تازہ ترین

لداخ سے چینی فوج کے انخلا ء میں تاخیر | فوجی کمانڈروں کے درمیان11گھنٹے تک بات چیت

تاریخ    4 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی //بھارت اور چین کے فوجی کمانڈروں کے درمیان بات چیت کے بعد ہندستان  نے چین پر زور دیا ہے کہ وہ ایل اے سی پر کشیدگی والے علاقوں سے پوری طرح پیچھے ہٹیں۔ہندستان اور چین کے درمیان کشیدگی ختم کرنے کو لے کر اتوار کو ایک بار پھر سے پانچویں دور کی کمانڈر سطح کی بات چیت ہوئی۔ تقریبا 11 گھنٹے تک چلی اس میٹنگ میں ہندستان کی طرف سے لیہہ میں واقع 14 کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ہریندر سنگھ تھے، جبکہ چین کی قیادت جنوبی شنجیانگ فوجی علاقہ کے کمانڈر، میجرل جنرل لیو لن نے کی۔ اس بات چیت کے بعد ہندستان نے چین کو ایک بار پھر سے دو ٹوک لفظوں میں ایل اے سی کے کشیدگی والے سارے علاقوں سے پیچھے ہٹنے کو کہا ہے۔ دونوں فریقوں کے درمیان یہ میٹنگ صبح 11 بجے سے رات کے تقریبا 10 بجے تک چلی۔ ذرائع کے مطابق، بات چیت کے دوران ہندستان نے پینگ یانگ جھیل اور مشرقی لداخ میں ایل اے سی کے پاس ٹکرائو والے سبھی جگہوں سے چینی فوجیوں کو جلد سے جلد پوری طرح سے پیچھے ہٹنے کو لے کر زور ڈالا۔ ہندستان کی طرف سے ایک بار پھر سے کہا گیا ہے کہ پانچ مئی سے پہلے والی صورت حال فوری طور پر بحال کی جائے۔ذرائع نے کہا کہ چینی فوج گلوان وادی اور ٹکرائو والے کچھ دیگر مقامات سے پہلے ہی پیچھے ہٹ چکی ہے۔ لیکن ہندستان کی مانگ کے مطابق، پینگونگ سو میں فنگر علاقوں سے فوجیوں کو واپس بلانے کا عمل ابھی شروع نہیں ہوا ہے۔
 

تازہ ترین