تازہ ترین

بجلی کرنٹ لگنے کا شاخسانہ

تین دن میں 3افراد لقمہ ٔاجل

تاریخ    4 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


ارشاد احمد
سرینگر//وادی میں گزشتہ 3دنوں کے دوران کرنٹ لگنے سے محکمہ بجلی اور لیکس اینڈ واٹر ویزڈیولپمنٹ اتھارٹی کے ملازمین کرنٹ لگنے سے لقمۂ اجل بن گئے ۔ ادھر ترال میں کرنٹ لگنے سے 10روز قبل زخمی ہوا محکمہ بجلی کاملازم زندگی کی جنگ ہار گیا۔  سنیچر کو عیدالاضحی کے روز دانامزار صفاکدل میں محکمہ بجلی کا عارضی ملازم ریاض احمد راتھر ولد عبدالرحمان ساکن کرشہ بل نورباغ قمرواری ترسیلی لائنوںکی مرمت کررہا تھاجس کے دوران برقی رو بحال ہوگئی جس کے باعث اسے زوردار جھٹکا لگا اور شدید زخمی ہوا۔ ریاض احمد کو فوری طور پر میڈیکل انسٹیچیوٹ صورہ لے جایاگیا جہاں اتوار کو وہ زندگی کی جنگ ہارگیا۔ادھر لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی کا ملازم الطاف احمد میر ولد عبدالعزیز میر ساکنہ برین نشاط کو تاروںکی مرمت کے دوران کرنٹ لگ گئی۔مذکورہ ملازم کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قراردیا۔ دریں اثناء  بس سٹینڈ ترال میں 10دن قبل ترسیلی لائنوں کی مرمت کے دوران منظور احمد شاہ ساکن ترال پائین کرنٹ لگنے سے زخمی ہوا تھا اور صورہ انسٹیچیوٹ میں موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد دم توڑ بیٹھا۔ مذکورہ ملازم کی میت جب آبائی گھر لائی گئی تو وہاں کہرام مچ گیا۔ 
 

تازہ ترین