حد متارکہ پر پراسرار واقعات

نوشہرہ میں فوجی اور مینڈھر میں بی ایس ایف اہلکار ہلاک

تاریخ    1 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


رمیش کیسر+جاوید اقبال
نوشہرہ+مینڈھر//راجوری کے نوشہرہ اور پونچھ کے مینڈھر سیکٹروں میں حد متارکہ پر تعینات آرمی اور بی ایس ایف کے دو اہلکارپراسرار طور پر ہلاک ہوگئے ہیں۔نوشہرہ سیکٹر کے رملی دھڑا علاقے میں حد متارکہ پر تعینات ایک فوجی اہلکارپراسرار حالت میں بندوق کی گولیاں لگنے سے ہلاک ہوگیا۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ 23 سالہ فوجی اہلکار کی شناخت موسم علی کے طور پر کی گئی ہے جس کو حد متارکہ پر تعیناتی کے دوران بندوق کی گولیاں لگیں اورموقعہ پر ہی موت ہوئی۔ذرائع نے بتایا’’نعش کو پوسٹ مارٹم اور دیگر طبی لوازمات کیلئے مقامی ہسپتال منتقل کیاگیا‘‘۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم کے بعد نعش کومتعلقہ فوجی یونٹ کے حوالے کیاگیاہے۔ایک افسرنے بتایا کہ اہلکار کی موت کی اصل وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے اور اس کے جسم میں یاتو حادثاتی طور پر گولیاں لگی ہوں گی یاپھر سرحد پار سے فائرنگ سے یہ واقعہ رونماہواہوگا۔دریں اثناجمعہ کی سہ پہربی ایس ایف کے ایک اہلکار کی پراسرار حالت میں موت ہوگئی۔یہ اہلکار مینڈھر کے سونا گلی علاقے میں حد متارکہ پر تعینات تھا۔ہلاک ہونے والے بی ایس ایف اہلکار کی شناخت کانسٹیبل ارویندرا کے نام سے ہوئی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ جمعہ کی سہ پہر کو متوفی کی طبیعت اس وقت خراب ہوگئی جب وہ حد متارکہ پرتعینات تھاجس کے بعد اسے مقامی فوجی ہسپتال منتقل کیاگیاجہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ایک افسر نے بتایا’’اس معاملے میں مزید تفتیش کی جارہی ہے تاہم یہ حرکت قلب بندہونے کا معاملہ ہوسکتاہے لیکن پوسٹ مارٹم کے بعد معاملات واضح ہوجائیں گے‘‘۔
 

تازہ ترین