تازہ ترین

جموں کشمیرمسلسل دوسرے برس بھی نچلے پائیدان پر

تاریخ    31 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر//جموں کشمیرمسلسل دوسرے برس بھی ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں کی ’مستحکم ترقیاتی مقاصد‘کی فہرست میں نچلے پائیدان پر ہے۔ سال2018کی ہی طرح جموں وکشمیرایک بار پھر مستحکم ترقیاتی مقاصد کی فہرست میں 20ویں نمبر پر ہے۔سابق ریاست کوسال 2019میں قومی سطح کی اوسط 60میں سے59پوائنٹ حاصل کرنے پرکارکردگی دکھانے والے زمرے میں رکھاگیاتھا۔لداخ کوبھی اس فہرست میں 59پوائنٹ حاصل ہوئے تھے۔نیتی آیوگ نے اقوام متحدہ کے اشتراک سے مستحکم ترقیاتی مقاصد کی فہرست تیار کی ہے جس کی مدد سے ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں کی مجموعی ترقی کو ایک واحد فہرست میں جانچا جاتا ہے۔پہلی کم سے کم فہرست سال2018میں جاری کی گئی۔یہ درجہ بندی صحت عامہ،جنسی یکسانیت، صاف توانائی،ڈھانچہ،تعلیم ،امن اور مضبوط اور جوابدہ اداروں کے قیام سمیت 169اہداف اور 17 مقاصدپرمشتمل ہے۔مجموعی اسکورصفر سے ایک سو تک ہے  اور ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں میں مقاصد کے تحت اہداف کے حصول کی مجموعی کارکردگی کوظاہر کرتا ہے۔ صدفیصد اسکورحاصل کرنے والی ریاستوں  کو امتیازی زمرے میں رکھا جاتا ہے ۔65سے99تک کا اسکورحاصل کرنے والی ریاستوں کو آگے آگے رہنے والے زمرے میں رکھاجاتا ہے جبکہ50سے64پوائنٹ حاصل کرنے والوں کوکارکردگی دکھانے والے زمرے میں رکھاجاتا ہے اوراس سے کم پوائنٹ حاصل کرنے والے یعنی صفر سے49پوائنٹ حاصل کرنے والی ریاستوں کو آرزومندزمرے میں رکھا جاتا ہے۔رپورٹ کے مطابق جموں وکشمیرکو دوزمروں میں سبقت حاصل تھی ،غریبی نہ ہونے کے درجہ میں جموں کشمیرکو58پوائنٹ حاصل تھے اورصنفی یکسانیت میں53پوائنٹ ملے تھے۔بھوک نہ ہونے،اچھی صحت،معیاری تعلیم ،صاف پانی اورپاکیزگی،صاف اور سہل توانائی،بہترین کام اور اقتصادی ترقی کے شعبوں میں جموں کشمیرکو بالترتیب55،62،54،65،76،اور48پوائنٹ حاصل ہوئے۔صنعتی ایجاداورڈھانچے ،کم نابرابری،مستحکم شہراور طبقے،قابل تائیدکھپت اورپیداوار،موسم،زیرآب زندگی،خطہ ارض پر زندگی،امن ،انصاف اورمضبوط ادارے وشراکت داری میں جموں کشمیر کو بالترتیب 49،47،33،61،59،0،74،69اور0پوائنٹ حاصل ہوئے۔کیرالہ نے فہرست میں قومی اوسط60کے مقابلے میں70پوائنٹ حاصل پہلا مقام پایا ہے جبکہ دوسرے نمبر پر آندھراپردیش،اور اس کے بعد نمل ناڈ اور تلنگانہ آتا ہے،جنہوں نے بالترتیب69،67،اور67پوائنٹ حاصل کئے ہیں۔دوسری طرف اترپردیش ،سکم، اوراڑیشہ نے اپنی کارکردگی کو بہتر بنایا ہے ۔اترپردیش کا مجموعی اسکور2018میں42سے بڑھ کر 2019میں55ہوگیا اور یہ سب سے زیادہ بڑھوتری ہے ۔اُڑیشہ مجموعی کارکردگی میں بہتری کے لحاظ سے دوسرے نمبر پر ہے اور اُس کے پوائنٹس میں 7کااضافہ ہوا ہے اوریہ51سے58تک پہنچ گئے ۔مجموعی کارکردگی میں سکم تیسری بہترین ریاست ہے اوراس کااسکور58سے بڑھ کر65ہوگیاہے۔قابل ذکر ہے کہ جموں کشمیرحکومت  نے سال2018 میں ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی جس میں چیف سیکریٹری سمیت23انتظامی سیکریٹری شامل تھے تاکہ وہ مستحکم ترقیاتی مقاصدکے حصول کیلئے ہر شعبے میں اہداف کو پورا کرنے کیلئے نقش راہ مرتب کرے۔
 

تازہ ترین