تاریخی زیارت ،خانقاہ معلی کے دروازے مسلسل مقفل | کورونا وبا کے پیش نظر آج عرس مبارک تقریبات نہیں ہوں گی

تاریخ    28 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


یو این آئی
سرینگر //کورونا وبا کے پیش نظر امسال حضرت میر سید علی ہمدانی معروف بہ حضرت شاہ ہمدان کے 655 ویں عرس مبارک کی مناسبت سے آج کسی قسم کی کوئی اجتماعی تقریب منعقد نہیں ہو گی۔حضرت شاہ ہمدان کا عرس مبارک ہر سال ماہ ذی الحجہ کی چھ تاریخ کو انتہائی تزک و احتشام اور مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ منایا جاتا تھا۔سرینگر میں دریائے جہلم کے کنارے پر واقع حضرت شاہ ہمدان سے منسوب زائد از 600 سال پرانی زیارت گاہ تاریخی خانقاہ معلی کے دروازے سال رواں کے ماہ مارچ سے مقفل ہیں۔مذکورہ تاریخی زیارت گاہ کی انتظامیہ نے اعلان کیا ہے کہ کورونا کے پیش نظر امسال عرس مبارک کی مناسبت سے کسی اجتماعی تقریب کا انعقاد نہیں کیا جائے گا۔اس عرس مبارک کے موقع پر وادی کے گوشہ و کنار سے ہزاروں کی تعداد میں عقیدت مند اس ولی بزرگ کے مزار پر حاضر ہو جایا کرتے تھے اور اپنے اپنے حاجات کی روائی کیلئے دعائیں مانگا کرتے تھے۔ایسا دوسری مرتبہ ہوا ہے کہ یہ عرس مبارک ملتوی ہوا ہے۔ سال گزشتہ پانچ اگست کے مرکزی حکومت کے فیصلوں کے پیش نظر پیدا شدہ صورتحال کی وجہ سے بھی یہ عرس مبارک ملتوی ہوا تھا۔بتادیں کہ حضرت میر سید علی ہمدانی وادی کشمیر میں دین اسلام کی تبلیغ کرنے والے مبغلوں کی فہرست میں سر فہرست ہیں۔ آپ چودہویں صدی میں قریب سات سو سادات کے ہمراہ کشمیر وارد ہوئے اور یہاں اسلام کی تبلیغ کے ساتھ ساتھ لوگوں کو مختلف فنون سے بھی آراستہ وپیراستہ کیا جو ان کی روزی روٹی کی سبیل بن گیا۔قابل ذکر ہے کہ وادی کشمیر میں کورونا کے متوفین ومتاثرین کی تعداد میں ہر گذرتے دن کے ساتھ ہورہے اضافے کے باعث ایک بار پھر مکمل لاک ڈاؤن کیا گیا ہے۔جموں و کشمیر میں کورونا کے ایکٹو مثبت کیسز کی تعداد قریب آٹھ ہزار ہے جبکہ متوفین کی تعداد تین سو سے تجاوز کر گئی ہے۔
 

تازہ ترین