متاثرین کی تعداد 10,000سے متجاوز | 24گھنٹوں میں مزید11ہلاکتیں، 5ماہ کے کمسن بچے ، 10سی آر پی ایف اور 20فوجی اہلکاروں سمیت 268مثبت

تاریخ    12 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //11جولائی سنیچر کو11اموات اور نئے 268معاملات  سامنے آنے کے بعد جموں و کشمیر میں کورونا متاثرین کی تعداد 10,000کا ہندسہ متجاوز کرگئی۔ مہلوکین کی تعداد 171تک پہنچ گئی جن میں سے 17جموں جبکہ 153 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ سنیچر کوایک 5ماہ کے کمسن بچے، 10سی آر پی ایف اور20فوجی اہلکاروں سمیت 268 افراد کی رپورٹیں مثبت آنے کے بعد متاثرین کی تعداد 10,156ہوگئی ۔ تازہ 268متاثرین میں 67سرینگر، 37 بارہمولہ، 23 کولگام، ایک شوپیان،6اننت ناگ، 37کپوارہ،5پلوامہ، 4بڈگام، ایک گاندربل،21جموں،3ادھمپور، 20کٹھوعہ، 29راجوری،6سانبہ، 3پونچھ، 4ریاسی اور ایک کشتواڑ سے تعلق رکھتا ہے۔ 

مزید 11اموات

مرکزی زیر انتظام جموں و کشمیر میں11جولائی کو وائرس سے 11افراد فوت ہوگئے ۔ ان میں سے9کشمیر جبکہ 2 جموں میں فوت ہوگئے۔ کشمیر میں فوت ہونے والے8متاثرین میں 4صورہ سرینگر،2صدر اسپتال سرینگر اور3 سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں فوت ہوگئے۔صدر اسپتال سرینگر کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر نذیر چودھری نے بتایا ’’ اسپتال میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 2مریض فوت ہوئے ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہاکورہ اننت ناگ کی حاملہ خاتون کو ہائی بلڈپریشر کی وجہ سے صدر اسپتال میںداخل کیا گیا ‘‘۔ڈاکٹر چودھری نے بتایا ’’ خاتون کو ژچگی کیلئے لل دید اسپتال کے شعبہ ایمرجنسی میں 27جون کو داخل کیا گیا ‘‘۔ڈاکٹر نذید چودھری نے بتایا ’’ خاتون کو دوبارہ 3جولائی کو دماغ کی نس پھٹنے کی وجہ سے اسپتال میں داخل کیا گیا اوروہ خاتون جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب کو فوت ہوگئی۔ڈاکٹر چودھری نے کہا ’’ باغات کنی پورہ بڈگام کا ایک 45سالہ مریض بھی فوت ہوگیا ہے‘‘۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد سلیم ٹاک نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’45سالہ شہری کو چار جولائی کو اسپتال میں داخل کیا گیا اور رپورٹ مثبت آنے کے بعد وہ سنیچر کو فوت ہوگیا.‘‘۔ڈاکٹر ٹاک نے بتایا ’’حبہ کدل سرینگر کی رہنے والے ایک 65سالہ معمر خاتون بھی کورونا وائرس کی وجہ سے فوت ہوگئی‘‘۔سکمز صورہ میںسنیچر کو 4متاثرین فوت ہوگئے۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ حیدرپورہ سرینگر کا ایک 77سالہ معمر شخص نمونیا کی وجہ سے فوت ہوگیا ‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ معمرشخص 11جولائی کو صبح 7بجکر 45منٹ پر فوت ہوگیا ‘‘۔ڈاکٹر فاروق جان نے بتایا ’’ اس کے علاوہ پٹن باہمولہ کا ایک 73سالہ معمر شخص، شالیمار سرینگر کی 56سالہ خاتون اور نونر گاندربل کی رہنے والے 70سالہ معمر خاتون بھی کورونا وائرس کی وجہ سے موت کی آغوش میں چلے گئے ‘‘۔ بری برہمنا سانبہ سے تعلق رکھنے والا ایک 55سالہ متاثرہ شخص فوت ہوگیا ہے۔ جی ایم سی جموں اسپتال کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر دارا سنگھ نے بتایا ’’ مریض کو 29جون کو اسپتال میں داخل کیا گیا اور وہ سنیچر کو فوت ہوگیا ‘‘۔اُدھر جموں کے آر ایس پورہ سے تعلق رکھنے والاایک اور 58سالہ شخص فوت ہوگیا ہے۔

سکمز صورہ 

میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 2463نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 68مثبت جبکہ 2395کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ 68متاثرین میں 23سرینگر، 12سی آر پی ایف، 11کولگام،7اننت ناگ، 3بارہمولہ، 3پلوامہ، ایک بڈگام، ایک گاندربل، ایک کپوارہ، ایک شوپیان اور ایک کرگل سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا کہ سرینگر کے 23متاثرین میں سے 3بمنہ،2زکورہ، 1گوجوارہ،1گلاب باغ، 1حیدرپورہ، 1حبہ کدل،  1بٹہ مالو، 1راجوری کدل، 1بٹہ شاہ محلہ، ایک جواہر نگر، ایک لال بازار، ایک صورہ ، ایک وزیر باغ اور ایک باغات برزلہ سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا کہ کولگام کے 11متاثرین میں سے 9آر آر کولگام کے 5اہلکار،  18بٹالین سی آر پی ایف کے 2اہلکار، ایک ززی پورہ ،  ایک دسن ، ایک اسنور،  ایک بے گم  اور ایک شاہ پورہ کولگام سے تعلق رکھتا ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ اننت ناگ کے 7متاثرین میں سے 2سندر بنی ،  ایک وائل، ایک قاضی گنڈ اور ایک مین ٹائون اننت ناگ سے تعلق رکھتا ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ پلوامہ کے 3متاثرین میں سے ایک لیتہ پورہ ، ایک ترال اور ایک نیو کالونی پلوامہ سے تعلق رکھتا ہے۔ انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ عوامی رابطہ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے جاری کئے گئے اعدادوشمار میںبتایا گیا ہے کہ ابتک کل879مشتبہ مریضوں کا داخلہ کیا گیا جن میں سے600مریضوں کو قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا جبکہ148مثبت قرار دئے گئے مریضوں کو گھر بھیجا گیا ہے۔ابتک142927نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے133275کو منفی قرار دیا گیا ہے جبکہ3315مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔

 جے وی سی بمنہ

پرنسپل سکمز میڈیکل کالج ڈاکٹر ریاض احمد انتو نے بتایا ’’ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران  385نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 12مثبت جبکہ373افراد کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘۔ڈاکٹر ریاض نے بتایا ’’12متاثرین میں سے 2بڈگام جبکہ 10کا تعلق سرینگر شہر سے ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ بڈگام کے 2متاثرین میں حسی پورہ چاڈورہ کا ایک 36سالہ اور چاڈورہ کا ایک 70سالہ معمر شخص شامل ہے‘‘۔ڈاکٹر ریاض نے بتایا ’’ سرینگر کے12متاثرین میں سے وانٹہ پورہ راجوری کدل کے5متاثرین بھی شامل ہیں جن میں ایک 5ماہ کا بچہ بھی شامل ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ایک فتح کدل، ایک قرفلی محلہ، ایک شیخ محلہ ایس آر گنج، ایک ہیرون اور ایک کشمیر یونیورسٹی سے تعلق رکھتا ہے۔ 

 سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ

سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 110افراد کی رپورٹیں مثبت آئیںجن میں سے92بیس اسپتال بادامی باغ کے 17فوجی اہلکار،  16صدر اسپتال سرینگر، 3ایس ڈی ایچ ٹنگڈار، 12جی ڈی سی ہندوارہ، 8جی ایم سی بارہمولہ، 6سی ایچ سی کپوارہ، 8پی ایچ سی کنزر، 5ایس ڈی ایچ پٹن، 4پی ایچ سی ولگام اور 13مریضوں کے نمونے پی ایچ سی شری بارہمولہ سے موصول ہوئے تھے۔ ذرائع نے بتایا ’’ 110متاثرین میں سے بی بی کینٹ بادامی باغ کے 17فوجی اہلکار، 4حاملہ خاتون اور 2پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ 

 جموں

 جموں صوبے میں پچھلے24گھنٹوں کے دوران 87افراد کے نمونے مثبت آئے ہیں ۔جموں ضلع میں سے 10جی ایم سی جموں، 9لال پتھ، ایک کرشنا اور ایک آئی آئی آئی ایم سے مثبت آئیں، کٹھوعہ کے 20متاثرین کی رپورٹیں کرشنا لیبارٹری سے مثبت آئیں۔ محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا کہ کشتواڑ میں ایک کی رپورٹ مثبت آئی جو ماڈرن لیبارٹری سے مثبت قرار دی گئی۔ ذرائع نے بتایا کہ پونچھ میں 3افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں  ایک جی ایم سی جموں جبکہ 2لال پتھ سے مثبت قرار دی گئیں۔ ذرائع نے بتایا کہ راجوری کے 29متاثرین کی رپورٹ ماڈرن لیبارٹری سے مثبت قرار دی گئیںجبکہ ریاسی کے 4متاثرین میں سے 2کو جی ایم سی جموں اور 2کو لال پتھ لیبارٹری سے مثبت قرار دیا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ سانبہ میں 6افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں ایک فوت ہوگیا  جبکہ ادھمپور میں 3افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جو کرشنا لیبارٹری جموں سے مثبت قرار دئے گئے۔ 

حکومتی بیان

حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے10,156 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے4,092سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک5,895اَفراد شفایاب ہوئے ہیں ۔جموں وکشمیر میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی تعداد169تک پہنچ گئی ،جن میں سے 153کا تعلق کشمیر  صوبہ سے اور16کاتعلق جموں صوبہ سے ہیں۔اِس دوران سنیچر کو مزید109مریض صحتیاب ہوئے ہیںجن میںجموں صوبے کے14اور کشمیر صوبے کے 95اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اب تک 4,45,169ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  11جولائی2020ء کی شام تک 4,35,013نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک3,11,254افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں 38,650اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ36 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔4,092کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ45,156 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق2,23,151اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔
 

لداخ میں متاثرین کی تعداد1077ہوگئی

لیہہ//مرکزی زیر انتظام لداخ میں مزید 13افراد کی رپورٹیں مثبت آنے کے بعد کورونا متاثرین کی تعداد 1077تک پہنچ گئی۔ لہہ اور کرگل میں ابھی بھی 148 افراد زیر علاج ہیں جبکہ 11 مریضوں کو گھر روانہ کردیا گیا ہے۔ محکمہ صحت کے افسران کا کہنا ہے کہ سنیچر کولیہہ میں 6جبکہ کرگل میں 7افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ افسران کا کہنا ہے کہ زیر علاج 148افراد میں سے لہہ کے 104اور کرگل کے 44افراد شامل ہیں لیکن ان تمام متاثرین کی حالت مستحکم ہے۔ 

 اننت ناگ جیل میں قیدیوں کے نمونے حاصل کرنیکا عمل جاری

پرویز احمد

 
 سرینگر// اننت ناگ جیل میں ایک قیدی کی رپورٹ مثبت آنے کے بعد محکمہ صحت نے جیل میں بند تمام افراد کی تشخیص کیلئے نمونے حاصل کرنے کا عمل شروع کردیا ہے اور پہلے دن 100قیدیوں کے نمونے حاصل کئے گئے۔ پرنسپل اننت ناگ میڈیکل کالج ڈاکٹر شوکت جیلانی نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ جیل میں موجود قیدیوں کو جیل میں ہی قرنطینہ میں رکھا گیا ہے جبکہ دو دنوں کے دوران جیل عملہ اور قیدیوں کی تشخیص کیلئے نمونے حاصل کئے جائیں گے‘‘۔ڈاکٹر شوکت جیلانی نے بتایا ’’ سنیچر کو 100قیدیوں کے نمونے حاصل کرلئے گئے ہیں جبکہ باقی قیدیوں کے نمونے اتوار کو حاصل کئے جائیں گے۔ اننت ناگ میں کورونا وائرس کے نوڈل آفیسر ڈاکٹر عبدالمجید نے بتایا کہ سنیچر کو 100قیدوں کے نمونے حاصل کئے گئے ہیں جبکہ ابھی بھی 125قیدیوں کے نمونے حاصل کرنا باقی ہے‘‘۔ڈاکٹر عبدالمجید نے بتایا ’’ عملہ کے50افراد سمیت مزید 125افراد کے نمونے اتوار کو تشخیص کیلئے حاصل کئے جائیں گے۔ 
 

دوبارہ لاک ڈائون کے نفاذکامشورہ | تجویززیرغور،فیصلہ عنقریب:صوبائی کمشنر

بلال فرقانی

 
سرینگر// صوبائی کمشنر کشمیر پی کے پولے نے کہا کہ وادی میں کرونا وائرس کے کیسوں میں اضافے کے پیش نظر سر نو لاک ڈائون کی تجویز حکومت کے  زیر غور ہے۔صوبائی کشمیر نے کہا کہ با اختیار حکام اس سلسلے میں عنقریب ہی فیصلہ لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لاک ڈائون کے کئی ایک پہلوئوں،جن میں اس کی مدت اور طریقہ کار کے علاوہ نفاذ کا فیصلہ بھی شامل ہے، ابھی تک نہیں کیا گیا۔ صوبائی کمشنر نے کہا’’ لاک ڈائون کی مدت پر اب بھی تبادلہ خیال جاری ہے کہ یہ کتنے ایام پر مشتمل ہوگااور ہمیں اس کے طریقہ کار پر بھی غور کرنا ہوگا‘‘۔صوبائی کمشنر کشمیر ،پی کے پولے نے کہا کہ ڈاکٹروں ،طبی عملے ، تاجروں اور سماج کے دیگر طبقوں وحلقوں سے یہ مطالبہ سامنے آرہا ہے کہ کووڈ ۔19کیسوں میں بے تحا شہ اضافہ کے پیش نظر دوبارہ لاک ڈائون کیا جائے ۔ پولے نے کہا’’ صوبائی انتظامیہ کشمیر نے حکومت( لیفٹیننٹ گور نر جی سی مرمو اور اُنکے سبھی مشیروں) کو آگاہ کیا ہے ۔ صوبائی کمشنر کشمیر نے لوگوںکو چہرے کو ماسکوں سے ڈھکنے اور سماجی فاصلہ عملانے پر زور دیا۔ذرائع نے بتایا کہ’’یل جی کی سربراہی میں حکومت مستقبل کی حکم

تازہ ترین