تازہ ترین

ضلع بارہمولہ کے بیشتر علاقوں میں پا نی کی شدید قلت

تاریخ    12 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   


فیاض بخاری
بارہمولہ //ضلع بارہمولہ کے بیشتر علاقوںمیںپینے کے پا نی کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہا ہا کار مچی ہوئی ہے۔عوام کو گرمیوں کے ان ایام میں بھی سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔ضلع کے ٹنگمرگ ،پٹن ،سوپور ،رفیع آباد ، واگورہ ،کنڈی ،نارواو ،بونیار اور اوڑی کے متعدد دیہات کے لوگوں کو کہنا ہے کہ اُنہیں پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ انہوں نے جل شکتی محکمہ پر الزام عائد کر تے ہوئے بتا یا کہ محکمہ ہذا کی عدم توجہی کے سبب لوگ ندی نالوں کاناصاف پانی پینے پر مجبور ہیں۔ ایک مقامی شہری اشفاق احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ جل شکتی محکمہ کی طرف سے اگرچہ کئی سکیموں پرکام شروع کیا گیا تھا لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا پر اُسے ادھورا چھوڑاگیا جس کے نتیجے میں ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو پینے کا صاف پانی میسر نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کئی جگہوں پر پہلے ہی واٹر سپلائی سکیمیں موجود ہیں لیکن اُنہیں ابھی تک شروع نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے وہ زنگ آلودہ ہوچکی ہیں ۔ جل شکتی محکمہ کے ایک افسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ دراصل خشک سالی کی وجہ سے ندی نالوں میں پانی کی قلت ہے اور اسی وجہ سے کئی علاقوں میں پانی کی کمی ہے۔
 
 
 

بمہامہ کپوارہ کے باشندے بوند بوند کو ترساں

کپوارہ//اشرف چراغ //بمہامہ کی باگت کالونی میں گزشتہ10روز سے پینے کے پانی کی سخت قلت ہے۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ باگت کالونی بمہامہ واٹر سپلائی سکیم میں کچھ خرابی پیدا ہو گئی ہے جس کے نتیجے میں لوگ پینے کے پانی کی ایک ایک بوند کے لئے ترس رہے ہیں ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ کئی بار معاملہ جل شکتی محکمہ کی نو ٹس میں لایا گیا لیکن کوئی اقدام نہیں کیا گیا ۔انہوں نے کہاکہ پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے انہیں طرح طرح کے مشکلات درپیش ہیں جبکہ خواتین کو ندی نالو ں سے پانی حاصل کرنا پڑتا ہے جو استعمال کے قابل نہیں ہوتا ہے ۔انہوں نے متعلقہ محکمہ کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ پینے کا صاف پانی سپلائی کرنے کے لئیاقدامات کئے جائیں۔
 
 

قلتِ آب  | سی پی آئی ایم کا اظہار تشویش

سرینگر//سی پی آئی ایم کے سیکریٹری غلام نبی ملک نے سرینگر اور وادی کے دیگر علاقوں میں پانی کی عدم دستیابی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے اس ضمن میں اقدامات کی اپیل کی ہے۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ سرینگر شہر اور وادی کے شمال و جنوب میں بہت سارے علاقے ایسے ہیں جہاں پینے کے پانی کی قلت سے ہاہا کار مچی ہوئی ہے اور لوگوں کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔
 

تازہ ترین