تازہ ترین

جموں کی ایک عدالت کا حکم | بسنت رتھ پر 6افراد کیخلاف تحقیر آمیز ریمارکس پوسٹ کرنے پر روک

تاریخ    12 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
جموں //جمو ں کی ایک عدالت نے سینئر آئی پی ایس افسر بسنت رتھ کو ان 6افراد کے خلاف تحقیر آمیز ریمارکس پوسٹ کرنے سے روک دیاہے جن کے نام موجودہ پولیس سربراہ کے ساتھ جوڑے جانے کا دعویٰ ہے۔یہ فیصلہ سیکنڈ ایڈیشنل منصف جموں جیون کمار شرما نے سنایاہے ۔یہ حکم تاجرپروین کمار متل ، میڈیکل پریکٹیشنروریندر دوبھے،تاجرراہل بنسل، تاجردیوندر ورمااورتاجر امت کوہلی کی عرضی پر سنایاگیاہے جنہوںنے درخواست میں آئی پی ایس افسر کوسوشل میڈیا جیسے ٹوئٹر، فیس بک، انسٹاگرا م وغیرہ پر تحقیر آمیز ریمارکس سے روکنے کاکہاتھا۔سیکنڈ ایڈیشنل منصف جموں جیون کمار شرما نے ایڈوکیٹ پرنو کوہلی کے دلائل سنے جس دوران عدالت کے سامنے کئی سکرین شارٹ بھی پیش کئے گئے ۔ درخواست گزاروں کے مطابق بسنت رتھ کی طرف سے پوسٹ کئے جارہے ریمارکس فطری طور پر تحقیر آمیز ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ان کے موجودہ پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کے ساتھ خاندانی تعلقات ہیں اور ایسا لگتاہے کہ بسنت رتھ کو پولیس سربراہ کے ساتھ کوئی ذاتی معاملہ ہے جس وجہ سے وہ نہ صرف دلباغ سنگھ بلکہ ان کے خلاف بھی ریمارکس پوسٹ کرتے رہتے ہیں ۔عدالت کے سامنے یہ حوالہ پیش کیاگیاکہ رتھ نے کئی ریمارکس لفظ’’دلو‘‘کا استعمال کیاہے جو مبینہ طور پر پولیس سربراہ کیلئے ہے۔دلائل سننے کے بعد عدالت نے رتھ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے تحریری جواب دینے کوکہا۔ساتھ ہی رتھ کو ہدایت دی گئی کہ وہ سماعت کی اگلی تاریخ تک مذکورہ بالا تمام افراد کے خلاف ایساریمارکس نہ لکھیں جو تحقیر آمیز ہو اور جس سے سماج میں انکی عزت کو ٹھیس پہنچتی ہو۔اب اس معاملے کی سماعت 25جولائی کو ہوگی۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ وزارت داخلہ نے منگل کو2000بیچ کے آئی پی ایس افسر بسنت رتھ کی معطلی کے احکامات جاری کرتے ہوئے ان سے کہاکہ وہ پولیس سربراہ کی اجازت کے بغیر ہیڈ کوارٹر نہ چھوڑیں ۔
 

تازہ ترین