۔13جولائی کا دن تاریخ کا اہم سنگ میل: حریت (ع) | قربانیاں ناقابل فراموش، مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر

تاریخ    12 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//حریت (ع)نے13 جولائی 1931  کے دن کو جموں و کشمیر کی تاریخ کا ایک اہم سنگ میل قرار دیاہے جب پہلی بار کشمیریوں نے اجتماعی طور پر جابرانہ شخصی راج کے خلاف شدید مزاحمت کرتے ہوئے اپنے جذبات اور امنگوں کے اظہار کیلئے اٹھ کھڑے ہوئے۔ بیان میں کہا گیا کہ اس دن اظہار رائے کی آزادی کو طاقت کے بل پر خاموش کرنے کے لئے ریاستی سنٹرل جیل کے باہر 22 کشمیریوں کو بے دردی سے شہید کردیا گیا اور اس کے بعد سے آج تک بلا امتیازکشمیری عوام اس دن کو ’’ یوم شہدائے کشمیر‘‘ کے طور پر مناتے آئے ہیں اور انہیں اجتماعی طور پر خراج عقیدت پیش کرتے آئے ہیں کیونکہ یہ قربانیاں جموں و کشمیر کے عوام کا ایک قابل فخر ورثہ ہیں جو اس وقت سے سے لیکر آج تک اپنے نصب العین کے حصول کیلئے مسلسل جدوجہد کرتے ہوئے قربانیاں دیتے آئے ہیں۔حریت (ع) نے 13 جولائی کے ان قومی شہیدوں کو زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کی عظیم قربانیاں نہ صرف قابل سراہنا ہیں بلکہ ناقابل فراموش ہیں اور انشاء اللہ ان کے مشن اور خواب کی تکمیل کیلئے ہماری پر امن جدوجہد جاری رہے گی۔ بیان میں یہ بات زور دیکر کہی گئی کہ مسئلہ کشمیر کا پر امن حل وقت اور حالات کا ناگزیر تقاضا ہے جس کیلئے بھارت اور پاکستان کو مل بیٹھ کر ایک ایسا حل تلاش کرنا ہے جو جموں و کشمیر کے عوام کی مرضی اور امنگوں کے مطابق ہو اور اس ضمن میں حریت قیادت اپنی کوششیں جاری رکھے گی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ موجودہ covid-19  کی وبائی بیماری اور حریت(ع) چیئرمین میرواعظ عمر فاروق کی مسلسل خانہ نظر بندی کے سبب  امسال 13جولائی کے تعلق سے عوامی جلسہ جلوس اور شہداء کے تئیں خراج عقیدت کے اجتماعی پروگرام کو ملتوی کیا گیا ہے ۔
 

تازہ ترین