سرکاری اخراجات کے رہنما خطوط

اطلاق دوسری سہ ماہی بھی جاری رہے گا

تاریخ    10 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر//حکومت نے عالمگیر ئوبا کرونا وائرس کے پیش نظر اخراجات کی پابندی کے رہنما خطوط جاری کئے ہیں جن کا اطلاق دوسرے سہ ماہ تک جاری رہے گا،تاہم سرکار نے مشاہرئوں، وظائف، معاوضہ اور سماجی بہبود اور دیگر محکموں کے تحت مستحقین کیلئے اسکیموں کو اس سے مستثنیٰ رکھا ہے۔ فائنانشل کمشنر خزانہ ڈاکٹر ارن کمار مہتا کی جانب سے جمعرات کو ایک سرکیولر زیر نمبر FD-VII-GEN(110)2009-10-II محرر29اپریل2020  کے تحت اخراجات پر پابندی کو جموں کشمیر میں دوسرے سہ ماہی میں بھی جاری رکھنے کی ہدایت دی اور اس کا اطلاق رواں مالی سال میں جولائی سے ستمبر تک رہے گا۔ محکموں کو تاکید کی گئی ہے کہ وہ رواں مالی سال کے بجٹ میں تخمینے کے مجموعی اخراجات کو اس عرصے میں 40  فیصد کے اندر محدود رکھے۔سرکیولر میں کہا گیا ہے کہ آمدنی بجٹ کے تمام غیر تنخواہ دارکی مد میں دوسرے سہ ماہی میں بجٹ کے تخمینے کو 20 فیصد تک محدود کیا جائے اور وہ اس مد میںمجموعی بجٹ کے تخمینہ میں40 فیصد سے تجاوز نہ کریں۔ سرکیولر میں کہا گیا ہے کہ کیپکس بجٹ کے تحت ممکنہ طور پر فی الوقت جاری کام اور غیر تعمیراتی سرگرمیوں کو بھی دوسرے سہ ماہی میںبجٹ تخمینہ کا40فیصد تک محدود کرنے کی ہدایت دی گئی ہے،تاہم محکمہ تعمیرات عامہ،آب رسانی(جل شکتی) دیہی ترقی،اور بجلی محکمے50 فیصد بجٹ کا استعمال کرنے کے علاوہ مالی سال2020-21کے تحت منظور شدہ بجٹ کے تحت آنے والے کاموں کو بھی شروع کرسکتے ہیں۔ فائنانشل کمشنر خزانہ کی جانب سے جاری سرکیولر میں تاہم مشاہرئوں، وظائف،معاوضہ اور سماجی بہبود اور دیگر محکموں کے تحت مستحقین کیلئے اسکیموں کو اس سے مستثنیٰ رکھا گیا ہے۔ موجودہ مالی سال کے پہلے سہ ماہی تک ’’ رخصتیوں کے عوض رقومات کی ادائیگی‘‘(لیو انکیش منٹ) کے دعوے،طبی معاوضے ٹیلی فون چارجز، بجلی کے اخراجات،صحت اور طبی محکمہ میں غذا ،ادویات اور آلات،افزائش بھیڑ و جانور اور ماہی گیری محکمہ میں ادویات،چارہ کے علاوہ محکمہ شہری رسدات و امور صارفین میںغذائی اجناس کی خریداری  اور آفات سماویٰ رقومات سے متعلق اخراجات کو مستثنیٰ رکھا گیا ہے۔

تازہ ترین