راجوری میں کورونا کے 3نئے معاملات

پولیس اہلکاراورپاکستان سے واپس آئی خاتون بھی شامل

تاریخ    30 جون 2020 (00 : 03 AM)   


سمت بھارگو
راجوری //ضلع راجوری میں کورونا وائرس کے 3نئے معاملات سامنے آئے اور متاثرین میں پولیس اہلکار اور پاکستان سے واپس لوٹنے والی خاتون بھی شامل ہے۔اس دوران انتظامیہ نے درہال قصبہ کو ریڈ زون قرار دیتے ہوئے آمدورفت پر پابندیاں عائد کردی ہیں ۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر راجوری شیر سنگھ نے بتایاکہ مہاری گائوں سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے جسے علاج کیلئے کووڈ ہسپتال منتقل کردیاگیا۔انہوں نے بتایاکہ متاثرہ خاتون حال ہی میں پاکستان سے واپس لوٹی ہے اور وہ قرنطینہ میں تھی ۔انہوں نے مزید بتایاکہ پولیس چوکی پیڑی کا ایک پولیس اہلکار بھی کورونا میں مبتلا پایاگیاہے ۔انہوں نے بتایاکہ حال ہی میں پیڑی علاقے کے جموں وکشمیر بینک ملازم میں کورونا کی تصدیق ہوئی تھی جس کے بعد علاقے میں بڑے پیمانے پر نمونے حاصل کئے گئے اور انہی نمونوں میں پولیس اہلکار کا ٹیسٹ مثبت آیاہے ۔انہوں نے بتایاکہ یہ اہلکار قرنطینہ میں نہیں تھا اوراب ایس او پی کے تحت اس کے رابطے میں افراد کی تلاش شروع کردی گئی ہے جبکہ اسے آئیسو لیشن کردیاگیاہے ۔پیر کو متاثر ہوا تیسرا شخص تھنہ منڈی سے تعلق رکھتاہے جو حال ہی میں اتر پردیش سے واپس لوٹا اور وہ قرنطینہ میں تھا۔دریں اثناء ضلع مجسٹریٹ راجوری محمد نذیر شیخ نے درہال کے کچھ علاقوں کو ریڈ زون تو کچھ کو بفر زون قرار دیاہے ۔درہال کو ریڈ زون قرار دینے کافیصلہ علاقے میں درہال ہسپتال میں تعینات ایک ڈاکٹر کی رپورٹ سنیچر کو مثبت آنے کے بعد کیاگیاہے جس نے کئی مریضوں کا معائنہ کیاہے ۔ضلع مجسٹریٹ کے حکمنامے کے مطابق پنچایت چوکیاں سی کے وارڈ نمبر2اوروارڈنمبر7کو ریڈ زون قرار دیاگیاہے اور علاقے کے 500میٹر باہر کا علاقہ بفر زون رہے گاجہاں آمدورفت پر پابندی ہوگی۔
 

تازہ ترین