تازہ ترین

وادی میں لگاتار تیسرے روز بھی قہر انگیز ژالہ باری

میوہ باغات ، دھان کی پنیری اور سبزیاں تباہ، اگلے کچھ روز تک اسی طرح کی سورتحال رہنے کا امکان

تاریخ    7 جون 2020 (00 : 03 AM)   


اشفاق سعید
 سرینگر //وادی میں سنیچر کو لگاتار تیسرے روز بھی متعدد علاقوں میں شدید ژالہ باری نے تباہی مچا دی ۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اگلے کچھ روز تک دوپہر بعد موسم جوں کا توں رہنے کا امکان ہے۔سنیچر کی شام ہوائیں چلنا شروع ہوئیں اور اسکے ساتھ ہی شدید بارشیں اور ژالہ باری ہوئی۔ بڈگام سے اطلاع ہے کہ ضلع کے متعدد علاقوں میں بھی شدید بارشوں کے بعد ژالہ باری ہوئی ۔ضلع کے آری زال ، گوری پورہ ، لال پورہ ، گمبورہ ، پوشکر ، خوسپورہ ،گوہر پورہ ، نوپورہ ، کنیرہ ، زانیگام اور دیگر ملحقہ علاقوں میں میوہ باغات اور فضلوں کو شدید نقصان پہنچا ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ژالہ باری کئی منٹوں تک جاری رہی جس نے بڑے پیمانے پر دھان کی پنیری ، سبزی کی کیاریوں، اخروٹ اور دیگر میوہ کی فضل کو نقصان پہنچا۔گاندربل سے ارشاد احمد کے مطابق ضلع میں شام دیر گئے کالے بادل چھا گئے اور دیکھتے ہی دیکھتے گرج چمک کے ساتھ بارش اور ژالہ باری ہوئی ،ژالہ باری کی وجہ سے ضلع کے شالہ بگ ، ژھندنہ ، گوٹلی باغ ، وتہ لار چونٹھ ولی وار ، کرہامہ ، واکورہ ، ززنہ ، بٹہ وینہ، پھاک ، شہامہ باکورہ ، سمیت دیگر علاقوں میں گلاس اور میوہ فضل کو نقصان پہنچا ۔ کنگن سے غلام نبی رینہ کے مطابق ،ہائین پالہ پورہ، گنہ ون کنگن، مرگنڈ، گنڈ، یچھ ہامہ اور دیگر مقاما ت پربھی شدید ژالہ باری ہوئی ۔ جس کی وجہ سے میوہ باغات، دھان کی پنیری اور دیگر فصلوں کو نقصان ہوا ۔کپوارہ سے اشرف چراغ نے اطلاع دی ہے ضلع کپوارہ میں کئی روز سے جاری خراب موسمی صورتحال کے بیچ ہفتہ کو قہر انگیز ژالہ باری ہوئی ۔ضلع کے لنگیٹ ،گلورہ ،ماور ،راجواڑ ،برمری ،درگمولہ ،ہری ،باتر گام، ،گلگام ،زرہامہ ،ترہگام ،لدرون سمیت درجنو ں دیہات میں 10منٹ کی قہر انگیز ژالی باری نے تباہی مچا دی ۔ادھر طوفانی ہوائیں چلنے سے کرالہ گنڈ قاضی آباد میں سکولی عمارت اور ایک رہائشی مکان پر درخت گر آنے سے کافی نقصان ہوا جبکہ مکان مالک عبدا لاحد لون اہلخانہ سمیت بال بال بچ گئے ۔واضح رہے کہ کپوارہ ضلع میں جمعہ کے روز بھی وادی لولاب کے درجنو ں علاقوں میں تباہ کن ژالہ باری کی وجہ سے کھڑی فصلو ں کو شدید نقصان پہنچ چکا ہے ۔  جمعرات کو  چاڑورہ، بڈگام، پکھر پورہ، چراری پورہ، کمرازی پورہ، فٹلی پورہ، تلہ سرہ، تجن، اگلر پلوامہ، ابہامہ، کھیگام، چوون، ایچھ گوز اور دبگام میں شدید ژالہ باری سے تباہی مچی تھی۔جمعہ کو شوپیان اور پلوامہ کے علاوہ سری گفوارہ، بجبہاڑہ اور اننت ناگ کے دیگر متعدد علاقوں میں شدید نوعیت کی ژالہ باری سے میوہ باغات تباہ ہوئے تھے۔محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر مختار احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ شام کے وقت کچھ ایک علاقوں میں تیز ہوائوں، بارشوں اور ژالہ باری کا سلسلہ جاری رہے گا کیونکہ درجہ حرارت بڑھ جانے کے سبب پہاڑوں سے برف پگل رہی ہے اور اس وجہ سے ہوا میں نمی پیدا ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ شام کے وقت ٹھنڈی ہوائیں چلتی ہیں اور کچھ علاقوں میں ژالہ باری ہوتی ہے ۔
 

تازہ ترین