تازہ ترین

سعدپورہ کرناہ میں سینکڑوں کنال زمین بنجرہونے کا خدشہ | لوگ فلیگ میٹنگ کے منتظر، آبپاشی کیلئے سرحد پار کے پانی پر انحصار

تاریخ    4 جون 2020 (00 : 03 AM)   


اشفاق سعید
کرناہ // سب ڈویژن کرناہ کے دھنی سعدپورہ نامی گائوں میں سینکڑوں کنال اراضی بنجر ہونے کا خدشہ ہے کیونکہ سرحد پار سے آنے والا پانی بند ہوگیا ہے ۔ کنٹرول لائن کے نزدیک واقع فاروڈسعدپورہ میں سینکڑوں کنال دھان کی کھیتوں کی سینچائی کیلئے عوام کو پاکستانی زیر انتظام کشمیر پر منحصر رہنا پڑتا ہے ۔ سرحد پار سے اگر یہاں پانی نہیں آتا ہے تو کھیت سیراب نہیں ہوتے اورلوگوں کوہر سال یہ پریشانی لاحق رہتی ہے۔علاقے کے زمینداروں کا کہنا ہے کہ کئی برس قبل آرپار فوجی افسران اورسیول حکام فلیگ میٹنگ کے دوران قاضی ناگ نالہ کے پانی کی روانی پربات چیت سے کوئی حل تلاش کیاکرتے تھے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اُس وقت فوج ،پولیس ، سرپنچ اور نمبردار سرحد پارکے حکام اور مقامی لوگوں سے بات کرتے تھے اور انہیں باندھ کو ٹھیک کرنے کیلئے پیسہ فراہم کرتے تھے جس کیلئے طریقہ کار یہ ہوتا تھا کہ اِس طرف ذمہ داررومال میں پیسے بند کرکے اُس پار پھینکتے تھے اور پھر اُس پار باندھ کو ٹھیک کیا جاتا تھا ،تب جاکر پانی کی سپلائی بحال ہوتی تھی۔لیکن سرحدی کشیدگی بڑ جانے کے بعدکئی برسوں سے ایسی کوئی فلیگ میٹنگ منعقد نہیں ہوئی ۔امسال بھی لوگوں کو یہ اہم مسئلہ درپیش ہے ۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سینچائی کیلئے فوج نے یہاں ایک پمپ نصب کرایا جس سے فارووڈ سعدپورہ کی زرعی اراضی کوسیراب کیاجاتا تھالیکن پانی کی سپلائی لائن ٹوٹنے کے بعدبندہوگئی ۔ محکمہ پی ایچ ای واری گیشن اسپیشل سب ڈویژ ن کرناہ کے ایک اعلیٰ افسر نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے کہا’’ ہم نے اس ٹیوب ویل یاپمپ کیلئے پائپیں فراہم کی تھیں ،لیکن یہ متبادل اسکیم ناکام ہوگئی‘‘ ۔ مقامی لوگوں نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کی زمینیں بنجر ہونے سے بچانے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔
 

تازہ ترین