تازہ ترین

ڈائریکٹراسکول ایجوکیشن جموں کی صلاح

نجی اسکول بچوں کے طویل آن لائن کلاسز لینے سے احتراز کریں

24 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

یواین آئی
جموں//ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن جموں نے نجی اسکولوں کے لئے چودہ نکاتی ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ لاک ڈاؤن کے دوران بچوںکے طویل آن لائن کلاسز لینے سے احتراز کریں کیونکہ یہ ان کے صحت کے لئے ضرر رساں ثابت ہوسکتے ہیں۔ناظم اسکول ایجوکیشن جموں انو رادھا گپتا نے مذکورہ ایڈوائزری کے متعلق بات کرتے ہوئے بتایا،’’ہم نے تمام نجی اسکولوں کو ہدایات دی ہیں کہ وہ طلبا کے روزانہ بنیادوں پر طویل آن لائن کلاسز لینے سے احتراز کریں کیونکہ اس سے ان کی صحت پر منفی اثرات پڑسکتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ اسکولوں سے کہا گیا ہے کہ وہ والدین ایسوسی ایشنز کے نمائندوں کے ساتھ صلح مشورے کرکے بچوں کے آن لائن کلاسز لینے کے لئے ایک شیڈول بنائیں۔موصوفہ نے بتایا کہ لاک ڈاؤن کے پیش نظر نجی اسکولوں اور ان میں زیر تعلیم طلبا کے والدین کے نام یہ ایڈوائزری جاری کرنے کی ضرورت محسوس کی گئی تاکہ بچوں کے آن لائن کلاسز کے دوران اہم معاملات کا بھی خیال رکھا جاسکے۔انہوں نے کہا کہ تمام نجی اسکولوں کو ان طلبا جن کی سمارٹ فونوں یا لیپ ٹاپوں کے ذریعے انٹرنیٹ تک رسائی ہے اور ان طلبا جنہیں انٹرنیٹ تک رسائی حاصل نہیں ہے لیکن ان کے گھروں میں ٹیلی ویڑن ہیں، کا ڈاٹا مرتب کرنے کی بھی ہدایات دی گئی ہیں۔موصوفہ نے بتایا کہ اسکولوں کو ان طلبا کا بھی ڈاٹا مرتب کرنا ہے جو ان دونوں سہولیات سے محروم ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اسکولوں سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ وہ نصاب کو مکمل کرنے کی دوڑ میں بچوں کو زیادہ تعداد میں ویڈیوز بھیجنے سے بھی احتراز کریں اس کے بجائے طلبا سے کہا جائے کہ وہ وٹس ایپ گروپس پر اپنے شکوک و شبہات کے ازالے کے بارے میں لکھیں۔انو رادھا گپتا نے بتایا کہ اسکولوں کو ہدایات دی گئی ہیں کہ وہ ان امور کی طرف توجہ مرکوز کریں جن میں آن لائن کلاسز لینے کی ضرورت نہ پڑ جائے جیسے بچوں کو انگریزی، اردو، ہندی اور علاقائی زبانوں کے الفاظ کو یاد کرائیں اور گنتی اور ٹیبل یاد کرائیں، بنیادی ریاضی سکھائیں، مقامی تاریخ، کلچر وغیرہ کی مختصر جانکاری دیں۔انہوں نے کہا کہ نجی اسکولوں سے کہا گیا ہے کہ وہ سال 2019-20 اور سال 2020-21 کا فیس اسکول ویب سائٹوں پر ظاہر کریں اور لاک ڈاؤن کے دوران بچوں سے صرف ٹیوشن فیس ہی وصولیں۔موصوفہ نے بتایا کہ گاڑی فیس کی وصولی کے لئے حکومت ایک الگ حکمنامہ جاری کرے گی تب تک بچوں سے گاڑی کا فیس وصول نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی اسکول یہ اجازت نہیں دی جائے گی کہ وہ بچوں کو کسی خاص کتاب دکان سے کتابیں خریدنے کو کہیں۔موصوفہ نے بتایا کہ اسکولوں کو اپنے اپنے اسکولوں کی والدین ایسوسی ایشنوں کو متحرک کرنے کی بھی ہدایات دی گئی ہیں۔