تازہ ترین

موجودہ حالات میں نماز عید کیسے پڑھیں

تاریخ    24 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


مولوی حبیب اللہ بٹ المعروف ( نوری) ,
 
۱۔حضرت ابوھریرہؓ سے روایت ہے کہ عید کے روز بارش ہوئی تو حضرت نبی کریم ﷺ نے نماز عید مسجد میں پڑھائی ۔ حدیث نمبر 1448 ابن ماجہ ، ابوداوٗد بحوالہ مشکوٰۃ 
۲۔ جناب عبیداللہ ابن ابوبکر جو خادم رسول انس بن مالک کے پوتے ہیں بیاں کرتے ہیں انسؓ اگر کبھی امام کے ساتھ نماز عیدنہ پڑھ سکتے تو وہ اپنے گھر والوں کو جمع کرکے اُن کے ساتھ امام کی نماز کی طرح عید بڑھ لیا کرتے تھے ۔ 
علامہ ابن منذر ؒ بھی یہی کہتے ہیںجس سے نماز عید فوت ہو جائے وہ امام کی نماز کی طرح دو رکعتیں پڑھ لے ۔بحوالہ کتاب فقہ السنہ دارالسلام 
نوٹ نفل چاشت و غیرہ اس کا بدل نہیں تین وجوہات کی بنا پر احتیاط 
الف :۔ طاعون ، کوڑ ، موسم 
طاعون جس بستی میں پھوٹ پڑے وہاں جانا اور وہاں سے نکلنا منع ہے ۔ 
ب:۔ جمعہ کے روز موسمی حالات کی وجہ سے جمعہ کی اذان دی گئی مگر نماز گھر میں اد اکی گئی ۔
پ:۔ آجکل جو حالات دُنیا میں بوجہ کو رونا مہاماری ہوگئے ۔خانہ کعبہ سے لے کر دنیا کی مسجدیں بند ہوگئی اسلئے نماز گھر میں پڑھتے ہیں ۔ اسلئے نماز عید صحابی رسول انس بن مالک کی طرح گھر میں ادا کریں ۔ 
ماانا علیہ و اصحابی کا طریقہ بہتر ہے ۔