تازہ ترین

سپرسپیشلٹی اسپتال میں غیرمعیاری ماسک فراہم کرنے کاالزام

23 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

پرویز احمد
سرینگر //سپر سیپشلٹی اسپتال شرین باغ میں تعینات مریض، تیمادار وںاورعملہ کوکورونا وائرس سے بچانے کیلئے ماسک فراہم کئے گئے ہیں، لیکن ماسک غیر معیاری ہونے کی وجہ سے مریضوں اور عملہ کو سخت دشواریوں کا سامنا ہے۔ اسپتال میں زیر علاج مریضوں اور کام کرنے والے ملازمین کا کہنا ہے کہ ماسک کے غیر معیاری ہونے کی وجہ سے جلد کٹ جاتے ہیں اور انہیں دن میں کئی مرتبہ ماسک بدلنے پڑتے ہیں۔ اسپتال میں زیر علاج بشیر احمد نامی ایک مریض نے بتایا ’’ مریضوں اور ملازمین کو ماسک فراہم کیا جاتا ہے لیکن ماسک آدھے گھنٹے کے بعد کٹ جاتا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ دن میں صرف ایک ہی ماسک فراہم کیا جاتا ہے اور ماسک جلدی کٹ جانے کی وجہ سے ان کو دن بھر بغیر ماسک کے رہنا پڑتا ہے‘‘۔ اسپتال میں کام کرنے والے ایک ملازم نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ’’ جے کے میڈیکل سپلائز کارپوریشن کی طرف سے سپلائی کئے گئے ماسک بہت جلد کٹ جاتے ہیں اور اسی وجہ سے ملازمین کو دن میں کئی مرتبہ ماسک تبدیل کرنے پڑتے ہیں‘‘۔ مذکورہ ملازم نے بتایا ’’اسپتال کو سپلائی کئے گئے ماسکوں میں سے 90فیصد غیر معیاری مواد سے بنے ہیں جسکی وجہ سے وہ بہت جلد کٹ جاتے ہیں‘‘۔ سپر سپیشلٹی اسپتال میں کام کرنے والے ملازمین کو بروقت نہ تو پی پی ای کٹ فراہم کئے گئے اور نہ ہی اب مضبوط اور علیٰ درجے کے ماسک فراہم کئے جاتے ہیں‘‘۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ایس ایس ایچ شرین باغ ڈاکٹر شبیر احمد ڈار نے کہا ’’ اسپتال کو گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر سے ماسک فراہم کئے گئے ہیں جو مضبوط ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ جی ایم سی سرینگر سے جو ماسک فراہم کئے گئے ہیں وہ جموں و کشمیر میڈیکل سپلائی کارپوریشن سے آئے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ اسپتال انتظامیہ نے خود بھی ماسک خریدے ہیں جو کافی مضبوط ہے اور ہم اب مریضوں اور تیمارداروں کو وہیں فراہم کررہے ہیں۔

تازہ ترین