تازہ ترین

پاورپروجیکٹوں کی تکمیل کیلئے اجتماعی کوششیں کی جائیں

اعلیٰ سطحی میٹنگ میں کام کی رفتار کا جائزہ لیا گیا

23 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
جموں//پرنسپل سیکریٹری محکمہ بجلی روہت کنسل نے یہاں منعقدہ میٹنگ میں جموں و کشمیر پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ میٹنگ میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر الیکٹریکل ، ایگزیکٹو ڈائریکٹر سول ، کمپنی سیکریٹری ، چیف انجینئر بغلیار میکنیکل ، چیف انجینئر سولر اور چیف انجینئر بغلیار الیکٹریکل موجود تھے ۔ ڈائریکٹر فائنانس ، چیف جنرل منیجر لاء ، جنرل منیجر ہائیڈرو اور دیگر افسران نے کشمیر صوبے سے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی ۔ اس موقعہ پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے پرنسپل سیکریٹری جن کے پاس منیجنگ ڈائریکٹر جے کے پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن لمٹیڈ کا چارج بھی ہے ، نے متعلقہ حکام کو پروجیکٹوں کی بروقت تکمیل کیلئے اجتماعی کوششوں کی ہدایت دی تا کہ زیادہ سے زیادہ بجلی کی پیداوار کو یقینی بنا کر صارفین کو بلا خلل بجلی کی ترسیل ممکن ہو سکے ۔ دورانِ میٹنگ جموں و کشمیر میں جاری پروجیکٹوں کی پیش رفت کا بھی جائیزہ لیا گیا ۔ جن میں پی ایم ڈی پی ،سنٹرل الیکٹرسٹی اتھارٹی اور جے اے کے ای ڈی اے کی جانب سے جے کے ایس پی ڈی سی کومنتقل کئے گئے پروجیکٹ بھی شامل ہیں ۔ متعلقہ افسران نے جموں کشمیر میں جاری پروجیکٹوں کی پیش رفت پر مفصل پرذنٹیشن پیش کی ۔ پرنسپل سیکریٹری کو بتایا گیا کہ نشاندہی کی گئی صلاحیت میں سے 3608.46 میگاواٹ ہی اب تک بروئے کار لائی جا چکی ہے جو کہ نشاندہی کی گئی صلاحیت کا 22 فیصد ہے جن میں 1211.96 میگاواٹ ریاستی شعبہ ، 2339 میگاواٹ مرکزی شعبہ اور 57.5 آئی پی پی طریقہ کار کے تحت جاری ہے ۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ 9 میگاواٹ صلاحیت کے ہانو( سندھ ) پروجیکٹ میسرز پی اینڈ آر انجینئرنگ کی جانب سے ای پی سی طریقہ کار کے تحت تعمیر کیا جا رہا ہے اور اس کی تکمیل جولائی 2020 تک متوقع ہے ۔ اس کے علاوہ 48 میگاواٹ اور 37.50 میگاواٹ بالترتیب لور کلنائی ( چناب ) اور پرنائی ( جہلم ) پر بھی کام جاری ہے ۔ پرنسپل سیکرٹری کو جے کے پی ڈی سی ، این ایچ پی سی ، آئی پی پی اور جے کے پی ڈی سی ، آئی پی پی اور سی وی پی پی ایل کے تحت زیر تعمیر پروجیکٹوں کے بارے میں بھی جانکاری دی گئی ۔ انہیں سنٹرل الیکٹر سٹی اتھارٹی کی جانب سے منظور کئے گئے ساولہ کوٹ ، اوجھ اور رتل پروجیکٹوں کے بارے میں بھی جانکاری دی گئی ۔ 
 

تازہ ترین