تازہ ترین

پلوامہ اور شوپیان میں 12دیہات کا وسیع پیمانے پر آپریشن

دو بھائیوں سمیت 6گرفتار، کریم آباد میں پر تشدد جھڑپوں میں 8سالہ کمسن آنکھ میں پیلٹ لگنے سے شدید مضروب

23 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

سید اعجاز+شاہد ٹاک
ترال +شوپیان // سیکورٹی فورسز نے جمعہ کو  پلوامہ اور شوپیان میں قریب 12دیہات کا محاصرہ کیا جس کے دوران 2بھائیوں سمیت 6افراد کو گرفتار کیا گیا۔اس دوران کریم آباد پلوامہ میں پر تشدد جھڑپیں ہوئیں جس کے دوران ایک8سالہ کمسن طالب علم پیلٹ لگنے سے شدید مضروب ہوا۔ اسے صدر اسپتال سرینگر منتقل کردیا گیا۔

پلوامہ

 پلوامہ ٹائون میں جمعرات کو جنگجوئوں کی جانب سے پولیس کی ناکہ پارٹی پر حملے ،جس میں ایک اہلکار ہلاک جبکہ دیگر ایک زخمی ہواتھا، کے واقعہ کے بعد فورسز کی مشترکہ پارٹیوں نے جمعہ کی صبح وہی بگ،اشمندر،پرچھو ،سرنو اورمونگہامہ کومحاصرے میں لے کرگھر گھر تلاشی کارروائیاں شروع کیں ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ اس دوران اگر چہ فورسز کو تلاشی کارروائیوں کے دوران کوئی بھی قابل اعتراض چیز برآمد نہیں ہوئی،تاہم4نوجوانوں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔ گرفتار شدگان کی شناخت نادش فاروق اورمبارک احمد ساکنان وہی بگ اورمنتظر احمد ولطیف احمد ساکنان مونگہامہ پلوامہ کے طور کی گئی ہے ۔ گزشتہ شام پرچھو میں واردات کی جگہ کے قریب دکاندارفاروق احمد اور اسکے بھائی کو بھی گرفتار کیا گیاتھا۔ گزشتہ شام ہی فورسز کی ایک پارٹی کریم آباد گائوں میں داخل ہوئی جس دوران یہاں نوجوانوں نے فورسز پر پتھرائوکیا جس کے  بعد یہاں شدید جھڑپیں ہوئیں۔ فورسز نے جوابی کارروائی کر کے آنسو گیس کے گولے داغے اور پیلٹ کا استعمال کیا ،جس کے نتیجے میں متعدد افراد کو چوٹیں آئیں۔واقعہ میں ایک آٹھ سالہ کمسن پیلٹ لگنے کے نتیجے میں زخمی ہوا ۔جمعہ کی صبح فورسز کی بڑی تعدادپھر گائوں میں داخل ہوئی اور گائوںاور کھیت کھلیانوں کی تلاش لی ۔مذکورہ کمسن کو پہلے پلوامہ ضلع اسپتال اور بعد میں صدر اسپتال سرینگر منتقل کردیا گیا۔اسکی ایک آنکھ متاثر ہوئی ہے۔

شوپیان

جمعہ کو سیکورٹی فورس نے ضلع کے 7دیہات کا محاصرہ کیا اور جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا۔62آر آر ، 14بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس آپریشن گروپ نیملک محلہ شوپیان کا محاصرہ کیا اور کئی گھنٹوں تک تلاشیاں لیں لیکن کوئی نا خوشگوار واقع رونما نہیں ہوا۔ایتو محلہ پندچھن شوپیان نامی گائوں کا34آر آر اور دیگر سیکورٹی فورسز نے مشترکہ آپریشن کیا لیکن کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔جمعہ کی صبح ہی ہف شرمال نامی دیہات کا 44آر آر اور پولیس نے کریک ڈائون کر کے تلاشیاں لیں۔ اس دوران میوہ باغات کو بھی کھنگالا گیا۔چتراگام زینہ پورہ کا44آر آر ،178بٹالین سی آر پی ایف اور ایس او جی نے محاصرہ کیا اور تلاشیاں لیں۔ اسی طرح کی کارروائی بٹ محلہ حرمین امام صاحب میں کی گئی جہاں 34آر آر  اور دیگر فورسز ایجنسیوں نے کریک ڈائون کر کے جنگجو مخالف آپریشن کیا۔ڈگہ پورہ شوپیان کا 44آر آر ، 178بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس نے  تلاشی آپریشن کیا لیکن کچھ ہاتھ نہیں لگا۔ سہ پہر قریب ساڑھے پانچ بجے پنجورہ شوپیان میں 44 آر آر ،14بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس نے تلاشیاں لیں لیکن کوئی قابل اعتراض چیز بر آمد نہیں ہوئی۔
 
 

ترال میںجنگجوکے بھائی

 سمیت2افراد گرفتار

ترال/سید اعجاز/اونتی پورہ پولیس نے اس بات کا دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے انصار غزوت الہند کے سرگرم جنگجو سمیت2نوجوانوں کو گرفتار کر لیا ہے۔اونتی پورہ پولیس کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ پولیس نے جنگجوئوں کی مدد کرنے اور انہیں جگہ فراہم کرنے کی پاداش میں ان کے دو معاون سیار احمد شاہ ساکن رٹھسونہ ترال اورتنویر احمد شیخ ساکن اوتنی پورہ کو گرفتار کیا ۔اس سلسلے میں دونوں کے خلاف ترال اور اونتی پورہ میں2ایف آئی آر زیر نمبرات 46/2020اور68/2020درج کئے گئے ہیں۔مقامی لوگوں نے بتایا سیار احمد شاہ ساکن رٹھسونہ ترال انصار کے موجودہ سرگرم کمانڈرامتیاز احمد شاہ کا بھائی ہے، جو پیشے سے دکانداری کرتا ہے ۔ خیال رہے سیار کا بڑا بھائی عادل احمد شاہ 2014ء میں فورسز کے ساتھ اپنے دو ساتھیوں سمیت ایک جھڑپ میں مارا گیا ہے۔اورامتیاز نے گزشتہ سال جنگجو کی صف میں شمولیت اختیار کی ،اور تاحال سرگرم ہے۔ اب سیار ہی گھر والوں کا واحد سہارا بنا ہوا ہے ۔ گھر والوں پر قیامت ٹوٹ پڑی ہے۔