پونچھ میں ایل او سی کے تین سیکٹروں پر آر پار گولہ باری

20 مئی 2020 (15 : 04 PM)   
(      )

یو این آئی
جموں// جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ کے کرنی، قصبہ اور دگوار سیکٹروں میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بدھ کے روز ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان شدید گولہ باری کا تبادلہ ہوا تاہم کسی بھی جانب کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔
یاد رہے کہ ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان ایل او سی اور بین الاقوامی سرحد پر گذشتہ پانچ روز سے ایک دوسرے کے ٹھکانوں کو نشانہ بناکر گولہ باری کے تبادلے کا سلسلہ جاری ہے۔
ایک دفاعی ترجمان نے بتایا کہ ضلع پونچھ کے کرنی اور دگوار سیکٹروں میں ایل او سی پر بدھ کی صبح قریب ساڑھے نو بجے پاکستانی فوج نے بلا اشتعال اگلی چوکیوں کو نشانہ بنا کر شدید گولہ باری شروع کردی۔
انہوں نے بتایا کہ وہاں تعینات بھارتی فوجی اہلکاروں نے اس حملے کا بھر پور جواب دیا تاہم کسی بھی جانب کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔
دفاعی ترجمان نے بتایا کہ صبح کے وقت کرنی سیکٹر میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرنے کے بعد پاکستانی فوج نے دوپہر ڈیڑھ بجے کرنی کے علاوہ قصبہ سیکٹر میں بھی فائرنگ کی اور مارٹر گولے داغے۔ انہوں نے کہا کہ سرحد پار سے ہونے والی فائرنگ کا موثر اور منہ توڑ جواب دیا جارہا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کی فوج کے درمیان سرحد پر کشیدگی کا سلسلہ تواتر کے ساتھ جاری ہے جس سے آر پار کے لوگوں کا جینا حرام ہو کر رہ گیا ہے۔ سال 2003 میں طرفین کے درمیان جنگ بندی کا ایک معاہدہ طے پانے کے باوصف بھی سرحدی لوگوں کو کوئی راحت نصیب نہیں ہوئی ہے۔