تازہ ترین

کوورونا وائرس کے خطرات: لوگوں کی صحت و سلامتی ہمارا بنیادی مقصد : بصیر خان

باہر سے آئے لوگو ں کی نشاندہی کے عمل میں تیزی لانے کی ہدایت

تاریخ    27 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   


 سرینگر//کوروناوائرس یا کووِڈ۔19کے خطرات کے پیش نظر جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر اورصوبہ کشمیر کیلئے سی سی ای انچارج بصیر احمد خان نے جمعرات کو کہا کہ لوگوں کی صحت و سلامتی اور تندرستی اُن کا بنیادی مقصد ہے ۔صد فیصد نتائج حاصل کرنے کے لئے مشیرموصوف نے روزانہ بنیادوں پر متعلقہ محکموں کے ساتھ میٹنگوں کا  سلسلہ جاری رکھا ہے جن کے تحت صوبہ کشمیر کے اطراف و اکناف میں موجودہ صورت حال پر کڑی نظر رکھنا ہے۔مشیر موصوف نے تمام ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ بنیادی سطح نگرانی ٹیموں کو مستحکم کریں اور حال ہی میں باہر سے آئے ہوئے لوگوں کو جنگی بنیادوں پر نشاندہی کریں اور اُنہیں فوری طور مناسب سکریننگ کے لئے نزدیکی طبی مراکز میں داخل کریں۔مشیرموصوف نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ نوول کورونا وائرس کی وَفا کے ساتھ جنگ کرنے میں حکومت کو تعاون دیں اور حال ہی میں سفر سے آئے ہوئے لوگوکے بارے میں حکومت کو اِطلاع دیں۔تاکہ انہیں ضلع کنٹرول روم یا نزدیکی طبی مراکز میں منتقل کیا جاسکے۔اُنہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال کے مد نظر مشتبہ اَفراد کی نشاندہی کرنے کے لئے نمبرداروں ، سرپنچوں ، پنچوں اور کونسلروں کو ایک اہم رول ادا کرنا ہوگا ۔بصیر احمد خان نے تمام شہریوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے  گھروں میں قیام کریں اور اپنے عزیزو اقارب کی صحت کا خیال رکھتے ہوئے لاک ڈاون قائم رکھیں۔اُنہوں نے حکومت کی طرف سے جاری کردہ طبی ایڈوائزرویز پر من و عن عمل کرنے کی تاکید کی۔اُنہوں نے لوگوں کو موجودہ صورتحال کے مد نظر حکومت کے ساتھ مکمل تعاون فراہم کرنے کی بھی اپیل کی۔بصیر احمد خان نے ان باتوں کا اِظہار ایک اعلیٰ سطحی افسروں کی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے کیا جو کورونا وائرس کی وَبا کو روکنے کے سلسلے میں بانڈی پورہ اور کپوارہ اضلاع کی انتظامیہ کی طرف سے کی جارہی تیاریوں اورانتظامات کا جائزہ لینے کے لئے منعقد کی گئی تھی۔میٹنگ میں بتایاگیا کہ دونوں اضلاع میں مختلف مقامات پر ایک ہزار کورنٹین کمروں کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں متعلقہ لوگوں کے لئے چوبیس گھنٹے بنیادی سہولیات کے علاوہ طبی سہولیات بھی فراہم کی گئی ہے۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ پانچ دِنوں کے اندر ہوم ڈیلوری کے ذریعے لوگوں کو راشن فراہم کی جائے گی۔اس کے علاوہ اِن اضلاع میں ایل پی جی اور تیل خاکی کا وافر سٹاک موجود ہے۔میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ ان دو اضلاع میں ہوم ڈیلوری کے لئے 80گراسیری سٹوروں کی نشاندہی کی گئی ہے اور اس سلسلے میں ضلع انتظامیہ کی طرف سے ٹرانسپورٹ کی سہولت بھی فراہم کی گئی ہے۔ہر ایک ضلع میں تحصیل ، بلاک اور سی ایم او سطح پر چوبیس گھنٹے چالورہنے والے کنٹرول روم قائم کئے گئے ہیں جہاں لوگوں کو ضروری اطلاعات فراہم کی جارہی ہے۔لوگوں کی طرف سے پیش کئے گئے مطالبات کا جواب دیتے ہوئے بصیر احمد خان نے کہا کہ اس عمل کو یقینی بنانے کے لئے رقومات کی کوئی کمی نہیں ہے اور دونوں اضلاع میں دو دنوں کے اندر تمام ضروری طبی آلات فراہم کئے جائیں گے۔اس کے علاوہ فرنٹ لائین ورکروں کے لئے پرسنل پروٹیکشن اکیو منٹ بھی فراہم کیا جائے گا۔مشیر  موصوف نے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ دونوں اضلاع میں لاک ڈاون کی عمل آوری یقینی بنائیں۔اُنہوں نے متعلقین کو ہدایت دی کہ وہ موجودہ صورتحال کے بارے میں مسجد کمیٹیوں کو اطلاع دیں اور انہیں مسجدوں میں اجتماعی نماز منعقد نہ کرنے کے لئے مطمئن کریں۔اُنہوں نے مزیدکہا کہ کورونا وائرس وَبا کے توڑ کے لئے سماجی دوریاں اختیار کریں۔اُنہوں نے کہا کہ پولیس عملہ لاک ڈاون کو سختی سے عملائیں اور خلاف ورزی میں ملوث لوگوں کے خلاف ایف آئی آر رجسٹر کریں۔اُنہوں نے ضلع انتظامیہ کو ہدایت دی کہ وہ ضروری خدمات انجام دینے والے ملازمین میں ایمرجنسی پاس جاری کریں۔مشیر موصوف نے اس بات پر زور دیا کہ عوام الناس کو طبی ایڈوائزریوں سے متعلق مطلع کرنے میں پی آر اداروں سے تعلق رکھنے والے نمائندوں کو بھی شامل کریں۔