تازہ ترین

برفباری سے شہر کی سڑکیں اور نشیبی علاقے زیر آب

عوام مشکلات سے دوچار، انتظامیہ کیخلاف اظہارِ برہمی

تاریخ    8 فروری 2019 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر/ /بھاری برفباری کی وجہ سے شہر سرینگر کی سڑکیں جھیل ڈل کا منظر پیش کررہی ہیں جبکہ ڈرینیج سسٹم نا کارہ ہو گیا اور شہر کی سڑکوں کے ساتھ ساتھ نشیبی علاقے زیر آب آگئے ہیں۔ برفباری کی وجہ سے  بیشتر سڑکیں زیر آب آگئیں جس کے سبب لوگوں کا چلنا پھرنا محال بن گیا ہے۔ ناقص ڈرینج سسٹم کی وجہ سے تمام سڑکیں ندی نالوں میں تبدیل ہوچکی ہیں۔ انتظامیہ نے بھی کوئی بر وقت کارروائی نہیں کی جبکہ لالچوک سمیت مزید علاقوں میںپٹریوں سے برف نہ ہٹانے کی وجہ سے راہگیروں کو چلنے میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ادھر نشیبی علاقوں جواہر نگر، بمنہ،نٹی پورہ، مہجور نگر،پادشاہی باغ،نوگام کے علاوہ سیول لائنز کے کئی ایک علاقوں میں بھی برف کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے یہ علاقے پانی میں ڈوب گئے ہیں ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ مفلوج ہو کر رہ گئی ہے اور بروقت کوئی بھی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔ برفباری کی وجہ سے شہر سرینگر میں محکمہ ’یو ای ای ڈی‘ کی پول کھل کر رہ گئی جبکہ دیگر محکموں کی کار کردگی پر بھی انگلیاں اٹھنی شروع ہوگئی ہیں۔معروف و مصروف ترین بازاروں اور سڑکوں کے زیر آب آنے کی وجہ سے لوگوں کو عبور و مرور میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ متعلقہ محکمے بھی کئی نظر نہیں آئے ۔ راہگیروں نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جہاں انہوںنے سڑکوں پر سے از خود رضاکارانہ طور پر برف ہٹایا تھا وہیں جب سڑکیں اور بازار زیر آب آئے تو یہ محکمے کئی نظر نہیں آئے ۔ انہوںنے کہا کہ متعلقہ محکمے صرف زبانی جمع خرچ سے کام لے رہے ہیں تاہم زمینی سطح پر ان کا نام ونشان نہیں ہے ۔شہر خاص کے معروف بازاروں مہاراج گنج ، زینہ کدل ، راجوری کدل ، بہوری کدل ، نوہٹہ ، گوجوارہ ، نواکدل ، صفا کدل اور دیگر ملحقہ بازاروں و سڑکیں برف کے پانی کی وجہ سے ندی نالوںمیں تبدیل ہوچکی ہیں ۔ دریں اثناء سیول لائنز علاقوں راجباغ ، مگھرمل باغ ، اندرا نگر ، اقبال کالونی ، شیو پورہ ، بٹوارہ ، جواہر نگر ، سونوار اور دیگر علاقوں میں بھی برف کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ سرینگر مونسپل کارپویشن کے حد اختیار کے باہر علاقوں جن پر بادامی باغ کنٹونمنٹ کا کنٹرول ہے،میں بھی یہی صورتحال ہے اور اندرون کوچوں کے علاوہ سڑکوں پر بھی برف ہٹائی نہیں گئی۔