شاہراہ پر ٹریفک جام ، قصبہ بانہال محور ، گھنٹوں تک معمول کی زندگی اثر انداز رہنا روز کامعمول

شاہراہ کے مسافروں ،سیاحوں ، ضلع رام بن کے مریضوں، ملازمین سکول و کالج طلاب کو شدید مشکلات کا سامنا

تاریخ    14 مئی 2022 (00 : 01 AM)   


محمد تسکین
بانہال// جموں سرینگر قومی شاہراہ پر رام بن بانہال سیکٹر خاص کر شاہراہ پر واقع قصبہ بانہال میں آئے روز کا ٹریفک جام مقامی لوگوں اور شاہراہ کے مسافروں کیلئے درد سر بنا ہوا ہے اور شاہراہ کا دشوار سفر طے کرکے کشمیر وادی کی سیاحت پر انے جانے والے ہزاروں سیاحوں کے ذہنوں میں بھی شاہراہ پر ٹریفک جام کے حوالے سے منفی تصورات مرتب کر رہے ہے۔ پچھلے کئی ہفتوں کی طرح جمعہ کے روز بھی رام بن اور بانہال فورلین ٹنل کے درمیان کئی مقامات پر وقفے وقفے کا ٹریفک جام رہا جس کی وجہ سے ضلع رام بن کے نوگام ، بانہال، کھڑی ، ناچلانہ،  رامسو ، اْکڑال پوگل پرستان، ڈگڈول، بیٹری چشمہ ، سیری ، رام بن اور چندرکوٹ کے درجنوں مریضوں ، سرکاری ملازموں اور سکول اور کالج جانے والے بچوں کو اپنی اپنی جگہوں تک پہنچنے میں کم از کم دو گھنٹوں کی تاخیر کا سامنا رہا اور معمولات کی زندگی وقفے وقفے سے متاثر رہی۔ یہی حال وادی کشمیر کی سیر وتفریح پر انے والے سیاحوں اور شاہراہ کے دیگر مسافروں کا بھی رہتا ہے اور گھنٹوں کے حساب سے ٹریفک جام میں پھنسا رہنا معمول بنا ہوا ہے ۔ کئی سرکاری ملازمین نے بتایا کہ شاہراہ پر رام بن اور بانہال کے درمیان متعدد مقامات پر ٹریفک جام کی وجہ سے ان کے معمولات روزانہ کی بنیادوں پر متاثر ہو رہے ہیں اور ٹریفک جام کی وجہ سے مسافر گاڑیوں میں سوار مریضوں اور بانہال اور رام بن کے کالجوں کا رخ کرنے والے طلاب کیلئے خورد سر بنا ہوا ہے اور گھنٹوں کی تاخیر کے بعد ہی منزل نصیب ہوتی ہے اور کئی سکولی بچوں اور دیگر لوگوں کو کئی بار گھنٹوں جام میں پھنسے رہنے کے بعد واپس اپنے گھروں کا رخ کرنا پڑتا ہے۔ ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ قصبہ بانہال میں پچھلے دو مہینے سے شاہراہ کے ساتھ ساتھ ایک ڈرین کی تعمیر کی جارہی یے اور میونسپل کونسل کے ٹھیکیداروں نے کھدائی کا ملبہ اور تعمیرات کیلئے استعمال کئے جانے والے میٹریل کو سڑک کے کنارے ہی جمع رکھا ہے اور یہ قصبہ بانہال میں پچھلے دو مہینوں سے ٹریفک جام کی اہم وجہ بنا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاؤہ بانہال اور رامسو کے درمیان کئی مقامات پر فورلین شاہراہ کا جاری کام بھی ٹریفک جام کی وجوہات میں شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ قصبہ بانہال سے گذرنے والی شاہراہ پہلے ہی تنگ ہے اور گہری ڈرین کی کھدائی کے ملبے اور میٹریل کی وجہ سے قصبہ بانہال میں ٹریفک کی نقل وحرکت متاثر ہوتی یے۔ انہوں نے کہا کہ قصبہ بانہال میں مقامی گاڑیوں کی پارکنگ کو ممنوع قرار دیا گیا یے اور ٹریفک کی روانی کو بنائے رکھنے کیلئے  ڈی ایس پی ٹریفک نیشنل ہائے وے بانہال ، پولیس اور دیگر اہلکار ٹریفک کو معمول کی طرح چکائے رکھنے اور ٹریفک جام کو صاف کرنے کیلئے  سڑک پر موجود ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شاہراہ پر آجکل ٹریفک کی  بھاری نقل وحرکت رہتی یے اور دو طرفہ مسافر ٹریفک کو قاضی گنڈ اور ادہمپور سے وقت مقررہ کے اندر اندر نکالنے کے بعد شاہراہ پر ٹریفک جام نہیں رہتا ہے۔انہوں نے کہا بعد دوپہر تین بجے چملواس ، بانہال قصبہ اور فورلین ٹنل بعد کے درمیان ٹریفک کو معمول کے مطابق بحال کیا گیا اور بیشتر مسافر گاڑیوں کو نکالنے کے بعد وادی کشمیر سے جموں کی طرف ٹریفک ٹرکوں اور ٹینکروں کو نکالا جا رہا ہے۔ ٹریفک پولیس  نے مقامی دکانداروں ،تاجروں اور عام لوگوں سے تعاون کی اپیل کی ہے۔ اس دوران جموں سرینگر قومی شاہراہ پر رام بن کے ماروگ علاقے میں جمعرات کو جموں سے سرینگر کی طرف آنے کے دوران سڑک پر نصف سے زائد پلٹی ایک مال گاڑی اور اس کی زد میں آئے ایک لوڈڈ ٹینکر کو کرینوں کی مدد سے ایک طرف کرکے اس مقام پر شاہراہ کو دو طرفہ ٹریفک کے قابل بنایا گیا ہے اور اب وہاں گاڑیوں کی نقل وحرکت دو طرفہ طور معمول کے مطابق بحال کی گئی ہے۔ 
 

تازہ ترین