تازہ ترین

فیصلہ کُن ٹیسٹ میچ میں ہندوستان کو ہار کا سامنا

جنوبی افریقہ سیریز پر 2-1سے قابض

تاریخ    15 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


کیپ ٹاؤن/مڈل آرڈر بلے باز کیگن پیٹرسن (82) اور ریسی وان ڈیر ڈوسن (ناٹ آؤٹ 41) کی شاندار نصف سنچری شراکت داری سے جنوبی افریقہ نے ہندوستان کے خلاف تیسرے اور آخری فیصلہ کن ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن لنچ کے بعد سات وکٹ سے جیت حاصل کرکے سیریز 1-2 سے اپنے نام کرلی۔میزبان ٹیم نے 212 رن کے ہدف کے تعاقب کو تین وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا اور ٹیم انڈیا کو ایک بار پھر مایوسی ہاتھ لگی۔ ہندوستانی گیند بازوں نے ٹیم کو مایوس کیا اور وہ مطلوبہ وکٹیں حاصل نہ کرسکیں ۔ جنوبی افریقہ نے پہلے ٹیسٹ میں شکست کے بعد جس انداز میں شاندار واپسی کی وہ قابل تعریف ہے اور اس نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے جوہانسبرگ میں چوتھی اننگز میں ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے برابری کی اور یہاں کیپ ٹاؤن میں اپنی جیت پر مہر ثبت کی۔ جنوبی افریقہ نے سپر اسٹار کھلاڑیوں کی غیر موجودگی میں بھی بطور ٹیم شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا اور ایک بار پھر ہندوستان کو سیریز جیتنے سے محروم رکھا۔ اس میچ میں 212 رن کا ہدف اس پچ پر مشکل ہونے والا تھا۔ ہندوستان نے ابتدائی جھٹکا دے کر اچھی شروعات کی تھی لیکن دوسری وکٹ کے لئے ایلگر اور کیگن پیٹرسن کی شاندار شراکت نے ٹیم انڈیا پر دباؤ بنایا ۔ ریویو نے بھی ہندوستان کا ساتھ نہیں دیا اور پیٹرسن اور ون ڈیر ڈوسین نے اسکور کو مزید آگے بڑھایا۔ پیٹرسن بھلے ہی اپنی سنچری مکمل نہیں کرسکے لیکن انہوں نے سیریز جیتنے کی مضبوط بنیاد رکھی اور باوما نے اپنے شاندار شاٹ سے ٹیم کی جیت کو یقینی بنایا۔ ہندوستانی گیند بازوں نے بہت کوشش کی لیکن وہ کامیاب نہ ہو سکیں۔ اس کے علاوہ آسانی سے رن دینا اور ناقص فیلڈنگ نے بھی شائقین کو مایوس کیا۔ آخر کار کپتان کوہلی کی اس ٹیسٹ ٹیم کو خالی ہاتھ وطن لوٹنا پڑے گا۔ تاہم ٹیم نے ایک میچ جیت کر عالمی ٹیسٹ چیمپئن شپ کے پوائنٹس ٹیبل میں اہم پوائنٹس حاصل کیا ۔ یہ مقابلہ 4 ہی دن میں ختم ہوگیا۔ ہندوستانی نے جنوبی افریقہ کو 212 رنوں کا ہدف دیا تھا۔ کیگن پیٹرسن نے دوسری انگن میں 82 رن بناکر ٹیم کو جیت دلانے میں اہم کردار ادا کیا۔ ہندوستان نے پہلی اننگ میں 223 جبکہ دوسری اننگ میں 198 رن بنائے تھے۔ جنوبی افریقہ نے پہلی اننگ میں 210 رنوں کا اسکور کھڑا کیا تھا۔ میچ کے چوتھے دن جنوبی افریقہ نے دوسری اننگ میں 2 وکٹ پر 101 رنوں سے آگے کھیلنا شروع کیا۔ کیگن پیٹرسن 48 رنوں پر ناٹ آوٹ تھے۔ انہوں نے دن کے دوسرے اوور میں سیریز کی اپنی نصف سنچری مکمل کی۔ انہوں نے پہلی اننگ میں بھی شاندار 72 رن بنائے تھے۔ 59 رن پر پیٹرسن کا کیچ پہلی سلپ پر چتیشور پجارا نے ٹپکایا۔ اگر یہ کیچ پکڑ لیا جاتا تو میچ دلچسپ ہوسکتا تھا، کیونکہ اس کے بعد بھی جنوبی افریقہ کو 86 رنوں کی ضرورت تھی۔کیگن پیٹرسن اور راسی وان ڈوسین نے تیسرے وکٹ کے لئے 54 رن جوڑے۔ اس سے پہلے پیٹرسن نے دوسرے وکٹ کے لئے ایلگر کے ساتھ بھی نصف سنچری شراکت کی تھی۔ پیٹرسن نے 113 گیندوں پر 82 رن بنائے۔ 10 چوکے لگائے۔ انہیں شاردل ٹھاکر نے بولڈ کیا۔ لنچ تک اسکور تین وکٹ پر 171 رن تھا۔ ڈوسین 41 اور ٹیمبا باووما 32 رن بناکر ناٹ آوٹ رہے۔ دونوں نے ناٹ آوٹ 57 رن جوڑے۔ ٹیم نے ہدف کو 63.3 اوور میں حاصل کرلیا۔ ایلگر نے بھی دوسری اننگ میں 30 رنوں کا تعاون دیا۔اس سے قبل جنوبی افریقہ نے دوسرا ٹسٹ بھی 7 وکٹ سے جیتا تھا۔ تب اسے 240 رنوں کا ہدف ملا تھا، لیکن ہندوستانی گیند باز دوسری اننگ میں صرف 3 وکٹ حاصل کرسکے تھے۔ اس بار بھی ہندوستانی گیند باز دوسری اننگ میں صرف تین وکٹ حاصل کرسکے۔ ٹیم کے پاس جسپریت سنگھ بمراہ، محمد شمی اور امیش یادو جیسے تجربے کار گیند باز گیند باز تھے، لیکن وہ جنوبی افریقہ کے نوجوان اور کم تجربہ کار بلے بازوں کے آگے پھسڈی ثابت ہوئے۔ اب دونوں ممالک کے درمیان 19 جنوری سے تین میچوں کی ونڈے سیریز کھیلی جائے گی۔