تازہ ترین

ٹھاٹھری کلہوتران شاہراہ پر 10 گھنٹے بعد ٹریفک بحال

تاریخ    14 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


اشتیاق ملک
ڈوڈہ //بھاری برفباری سے جہاں ڈوڈہ ضلع کی رابطہ سڑکوں پر بھاری پھسلن پیدا ہوئی ہے وہیں متعدد مقامات پر پسیاں گرنے کا سلسلہ بھی شروع ہوا ہے۔ ادھر ٹھاٹھری کلہوتران شاہراہ پر جمعرات کی شب بھاری پسی گرنے کی وجہ سے دس گھنٹوں تک ٹریفک نظام معطل رہا جس دوران مسافروں و باالخصوص مریضوں و ضعیف العمر لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ بھاری پتھر کی وجہ سے پسی ہٹانے میں تاخیر ہوئی تاہم دس گھنٹے بعد ٹریفک کو بحال کیا گیا۔ کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے عتیق الرحمن کی قیادت میں ایک وفد نے کہا کہ تعمیراتی ایجنسیوں نے سڑکوں سے مکمل طور پر برف نہیں ہٹائی ہے جس کی وجہ سے بھاری پھسلن و کورا لگنے سے سفر کرنے میں دقت پیش آتی ہے۔ انہوں نے انتظامیہ سے تعمیراتی ایجنسیوں کو جوابدہ بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔
 

ڈوڈہ کے بالائی علاقوںمیں سڑک رابطے ہنوز منقطع 

چوتھے روز بھی بجلی و سڑک رابطوں کی بحالی کا کام جاری رہا 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بالائی علاقوں میں مسلسل چوتھے روز بھی بجلی و سڑک رابطوں کی بحالی کا کام جاری رہا تاہم ابھی بھی بھدرواہ، بھلیسہ، ٹھاٹھری ،گندنہ و بونجواہ کے کئی دیہات کا زمینی رابطہ ہنوز منقطع ہے۔ بھلیسہ کے دور دراز علاقہ کالجگاسر سے ایک وفد زیر قیادت سابق سرپنچ بال کرشن پٹھانیہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ضلع صدر مقام ڈوڈہ سے سو کلومیٹر کی دوری پر واقع گاؤں کالجگاسر اے ،کاہل بی، سیرو، گوہا، ٹیپری ،گنگوتہ النی و دیگر مضافات آج بھی پانی، بجلی و سڑک سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دیہات ہمسایہ ریاست ہماچل پردیش کے باڈر پر واقع ہیں جہاں پر تین سے چار فٹ کے قریب برف ریکارڈ کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ چنگا کالجگاسر سڑک پر برف نہ ہٹانے کی وجہ سے مقامی لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ پٹھانیہ نے کہا کہ ایک حاملہ خاتون کو چارپائی پر اٹھا کر بیس کلومیٹر دور پی ایچ سی چنگا پہنچایا گیا جہاں سے گندوہ اور پھر ڈوڈہ منتقل کیا گیا۔ انہوں نے انتظامیہ سے پانی، بجلی و سڑک رابطوں کی بحالی کا مطالبہ کیا ہے۔ ادھر بونجواہ ،چرالہ ،فیگسو بھالہ ،گندنہ ،بھاگواہ ،مرمت ،چلی پنگل و دیگر مضافات سے بھی لوگوں نے پینے کے صاف پانی کی فراہمی، تیل خاکی و بالن لکڑی دستیاب رکھنے کا حکام سے مطالبہ کیا ہے۔
 

 

تازہ ترین