تازہ ترین

عوامی ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی

حبہ کدل کے لوگوں کی فریاد صدا بہ صحرا ثابت

تاریخ    14 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// شہر کے حبہ کدل علاقے میںعوامی ٹرانسپورٹ کا فقدان مقامی شہریوں اور کاروباری طبقے کیلئے سوہان روح ثابت ہو رہا ہے اورمقامی لوگوں کی جانب سے فریاد صدا بہ صحرا ثابت ہو رہی ہے۔ حبہ کدل اور اس سے ملحقہ علاقوں کے لوگوںنے بتایا کہ ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی نے دفتر جانے والے ملازمین،طلاب،کاروباریوں،دکانداروں اور عام لوگوں کو بھاری نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹرانسپورٹ محکمہ کی جانب سے انکی راحت کیلئے حبہ کدل کیلئے ناہی مسافربردار سروس کا انتظام کیا جا رہا ہے اورنا ہی متبادل سہولیات فراہم کی جا رہی ہے۔ حبہ کدل کے محمد شعبان نے کہا کہ انہیں لالچوک تک آنے کیلئے یا تو پیادہ سفر کرنا پڑتا ہے یا آٹو سے آنا پرتا ہے،تاہم ہر ایک شہری آٹومیں سفر کو برداشت نہیں کرسکتا۔انہوں نے مزید کہا ’’ حبہ کدل کے باشندوں خاص طور پر خواتین اور مریضوں کو سخت دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،کیونکہ ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی نے انہیں ذہنی طور پرعذاب میں مبتلا کیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر چہ انہوں نے ٹرانسپورٹ آپریٹروں سے رابطہ کرنے کی کوشش بھی کی لیکن کچھ نہیں ہوا۔ طلباء  نے کہا کہ یہ مسئلہ ان کی تعلیم کو متاثر کر رہا ہے جبکہ گاڑیوں کی عدم دستیابی کی وجہ سے با لخصوص شام کے وقت انہیں مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ شائستہ گل نامہ طالبہ نے کہا ’’ہر ایک کے پاس نجی گاڑی نہیں ہے ، یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائے کہ مسافر بردار ٹرانسپورٹ سڑکوں پر دستیاب ہو۔‘‘ 

تازہ ترین