تازہ ترین

۔3برسوں کی غیر یقینیت سے ٹرانسپورٹ طبقہ متاثر

شہر میں داخلے پر پابندی ،فیصلے پر نظرثانی کی ضرورت: ساگر

تاریخ    7 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


سرینگر// نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے ٹریفک حکام کی طرف سے سومو اور تویرا گاڑیوں کوصبح8بجے شام8بجے تک شہر میں داخلے پر پابندی کے احکامات پر نظرثانی کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاہے کہ گذشتہ3برسوں کی غیر یقینیت، بے چینی اور لاک ڈائونوں سے یہاں کا ٹرانسپورٹ شعبہ بری طرح سے متاثر ہوا ہے اور ایسے احکامات سے اس طبقہ سے وابستہ افراد کے مشکلات میں مزید اضافہ ہوا ہے۔ سومو اور تویرا گاڑیوں کے ڈرائیوروں کا ایک وفد کل پارٹی ہیڈکوارٹر پر جنرل سکریٹری سے ملاقی ہوا اور انہیں اپنے مسائل و مشکلات کی جانکاری دی۔ وفد نے کہاکہ ہمیں صبح 8بجے سے شام 8بجے تک شہر میں سواریاں اُٹھانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے اور اس دوران نہ تو جنوبی کشمیر سے آنے والوں کو بائی پاس سے آگے جانے کی اجازت دی جاتی ہے اور نہ ہی شمالی کشمیر سے آنے والوں کو پارمپورہ سے آگے چلنے دیا جاتاہے۔ وفد نے کہا کہ ایندھن کی قیمتوں میں اضافے، مختلف ٹیکسوں اور ٹول ٹیکس نے پہلے ہی ٹرانسپوٹروں کی کمر توڑ کر رکھ دی تھی اور ٹریفک حکام کے ان احکامات سے ہم روزی روٹی سے محروم ہورہے ہیں۔ علی محمد ساگر نے موقعے پر ہی ٹریفک کے اعلیٰ حکام کیساتھ رابطہ کرکے سومو اور تویرا گاڑیوں کی شہر میں داخلے پر پابندی کے فیصلے پر نظرثانی کی تاکید کی ۔اس موقعے پر پارٹی کے وسطی زون صدر علی محمد ڈار، سینئر لیڈران محمد خلیل بند، صوبائی سکریٹری ایڈوکیٹ شوکت احمد میر، نائب صدر صوبہ سید توقیر احمد بھی موجود تھے۔ 

تازہ ترین