۔33کے وی کے 96فیصد فیڈر فعال،11کے وی کے 7فیصد فیڈرغیر فعال شمالی اور جنوبی کشمیر کے کئی علاقوں میں سپلائی متاثر

 منیجنگ ڈائریکٹرکی بحالی کے کام کے دوران فیلڈورکروں کی حفاظت یقینی بنانے کی ہدایت

عظمیٰ نیوز سروس

سری نگر//شہر سرینگر سمیت وادی کے شمال و جنوب میں ہوئی بھاری برفباری کے باعث وادی کے کچھ حصوں میں برقی روکی سپلائی متاثر ہوئی جس کے باعث وادی کے متعدد علاقے گھپ اندھیرے میں ہیں۔شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے سوپور، کپواڑہ اور ہندواڑہ میں بجلی کی سپلائی متاثر ہوئی۔ ضلع بڈگام اور ضلع اننت ناگ کے کچھ حصوں میں بھی برفباری کے باعث بجلی سپلائی میں خلل ہوا ۔ اسی طرح کی اطلاعا ت کولگام ، پلوامہ اور شوپیان کے کئی علاقوں سے بھی موصول ہوئیں ۔ اس دوران بجلی سپلائی میں ہوئی خلل کو دور کرنے اور تمام علاقوں میں بجلی سپلائی بحال کرنے کیلئے ہنگامی بنیادو ں پر کام جاری ہے ۔ منیجنگ ڈائریکٹرکشمیر پاور ڈِسٹری بیوشن کارپوریشن لمیٹڈ (کے پی ڈی سی ایل) مسرت اسلام نے کل کہا کہ کے پی ڈی سی ایل کے فرنٹ لائن ورکرز برف باری کے بعد بحالی کے کاموں میں پوری طرح سے مستعد ہیںحالاںکہ شدید برف باری کی وجہ سے بالخصوص شمالی کشمیر کے اَضلاع اور جنوبی کشمیر کے کچھ حصوں میں خلل پڑا ہے۔اُنہوں نے کل سہ پہر میڈیا کو جاری کردہ ایک بیان کہا کہ120 ، 33کے وی فیڈروںمیں سے صرف پانچ میں خرابی ہے جبکہ 11کے وی فیڈروں جن کی تعداد 1118 ہیں میں سے 76 ڈائون ہے۔۔ الیکٹرک ڈویژن ہندواڑہ، بارہمولہ اور کپواڑہ کے کچھ حصوں میں شدید برفباری کی وجہ سے بجلی کے بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچنے کی بھی اِطلاع ملی ہے۔اُنہوں نے کہا کہ شمالی کشمیر کے کپواڑہ اور بارہمولہ اَضلاع سے 33 کے وِی کے پانچ فیڈروںمیں خرابی کی اطلاع ملی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ فالٹ کے تحت فیڈروں کو بحال کرنے کی کوششیں جاری ہیں لیکن اِس کے لئے بالخصوس اِن اَضلاع میں سڑک رابطے کی ضرورت ہوگی جہاں برف باری کی وجہ سے بالائی علاقے منقطع ہوگئے ہیں۔بیان میں کہا گیا کہ 33 کے وِی گریز لائن کو جزوی طور پر چارج کیا گیا ہے جب کہ 33 کے وِی ٹیپ لائن کیرن،مژھل اور ٹنگڈار میں خراب ہے۔ اِسی طرح33کے وِی وانپوہ۔قاضی گنڈ لائن کو بھی جزوی طور پر چارج کیا گیا ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ11 کے وی زمرہ میںبارہمولہ اور کپواڑہ اَضلاع میں 76 میں سے 39 فیڈر خرابی کی زد میں ہیں جب کہ بڈگام میں 12، شوپیاں پلوامہ میں 8فیڈرز فالٹ کے تحت ہیں۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ سری نگر اور اننت ناگ۔پلوامہ اَضلاع میں 5 فیڈر ز میں خرابی ہے۔اُنہوں نے مزید بتایا کہ سرینگر کے تمام فیڈرز کام کر رہے ہیں جبکہ گاندربل، اَننت ناگ، پلوامہ، بڈگام اور شوپیاں جیسے دیگر اَضلاع میں 11 کے وِی فیڈروں میں سے زیادہ تر کام کر رہے ہیں۔منیجنگ ڈائریکٹر کے پی ڈی سی ایل نے او اینڈ ایم سرکلوں کے ایس اِیز اور تمام الیکٹرک اور ایس ٹی ڈی ڈویژنوں کے ایگزیکٹو اِنجینئروں کو ہدایت دی کہ وہ شدید برفباری کے بعد بحالی کے اَقدامات کی ذاتی طور پر نگرانی کریں۔ اُنہوں نے سب ڈویژنل اَفسران پر بھی زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ فیلڈ ورکرز بجلی کی فراہمی کو بحال کرتے ہوئے ہیلمٹ، دَستانے، ہارنس بیلٹ جیسے حفاظتی آلات (پی پی اِی) کا اِستعمال کرتے ہوئے تمام حفاظتی اَقدامات کریں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اِس وقت سری نگر، گاندربل، سوپور، بیجی بہاڑہ میں سب ٹرانسمیشن ڈویژن کے تمام ایگزیکٹو اِنجینئران پورے صوبہ کشمیرمیں ریسونگ سٹیشنوں کی صورتحال کی نگرانی کر رہے ہیں۔منیجنگ ڈائریکٹر نے صارفین پر زور دیا کہ وہ کے پی ڈی سی ایل کے آفیشل میڈیا ہینڈلز کی پیروی کریں تاکہ اس وقت جاری بحالی کے کاموں کے بارے میں باقاعدگی سے اَپ ڈیٹ حاصل کرسکے۔ اُنہوں نے کہا کہ اعداد و شمار شام کو اَپ ڈیٹ کئے جائیں گے۔