۔10سال میں ڈیزل اور پٹرول گاڑیوں کو ختم کرنے کا ہدف ایک سال کے دوران الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں مسلسل اضافہ:گڈکری

 عظمیٰ نیوز سروس

موہالی //مرکزی وزیر نتن گڈکری نے بدھ کو کہا کہ حکومت نے 10 سال کے اندر ڈیزل اور پٹرول گاڑیوں کو ختم کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے۔انہوں نے منڈی، ہماچل پردیش میں ایک عوامی ریلی میں کہا”میں 10 سال کے اندر اس ملک سے ڈیزل اور پیٹرول والی گاڑیاں ختم کرنا چاہتا ہوں، آج کل الیکٹرک اسکوٹر، کار اور بس آگئی ہے، جب کہ آپ ڈیزل پر 100 روپے خرچ کرتے ہیں، وہ 4 روپے کی بجلی استعمال کرتے ہیں،” ۔ہندوستان میں الیکٹرک گاڑیوں کو اپنانے میں مسلسل اضافہ دیکھا گیا ہے۔ بھارت نے اپریل 2023 سے اپریل 2024 کے درمیان الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں مسلسل اضافہ دیکھا، جیسا کہ وہان پورٹل نے دکھایا، جوحکومت کا پورٹل جو ملک میں گاڑیوں سے متعلق نمبروں کو ٹریک کرتا ہے۔انہوں نے نشاندہی کی کہ ریاست(ہماچل پردیش)ہائیڈرو پاور کی صلاحیت سے لیس ہے جس کا استعمال ریاست میں نقل و حمل کی بہتر سہولت تیار کرنے کے لیے کیا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا”میں نے جئے رام ٹھاکر سے کہا تھا کہ ہم تمام روپ وے بنائیں گے، اگر آپ صرف 3 روپے میں بجلی فراہم کریں گے، تو ہم 20 ہزار کروڑ کی روپ ویز اور کیبل کاریں بنانے کے لیے پرائیویٹ پلیئر (پی پی پی ماڈل)لائیں گے۔”انہوں نے کہا “مجھے خوشی ہے کہ مہادیو روپ وے کو منظوری مل گئی ہے‘‘۔ گڈکری نے مزید کہا کہ یہ 2.8 کلومیٹر کا روپ وے ہے اور 40 ہزار عقیدت مندوں کو سہولت فراہم کرے گا۔ وزیر نے کہا، ان 10 سالوں میں ہم نے نہ صرف وعدے کیے ہیں بلکہ ہر کام کیا ہے۔ ہم ہندوستان کو 5 ٹریلین ڈالر کی معیشت بنانا چاہتے ہیں۔