ہڑتالی ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی

 سرینگر //سکمز میدیکل کالج بمنہ نے ہڑتالی ڈاکٹروں کے خلاف سخت اقدامات اٹھاتے ہوئے 7 جونیئر ڈاکٹروں کو ڈیوٹی سے خارج کردیا ہے۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پرنسپل کی جانب سے تنخواہوں میں اضافہ کرنے کی یقین دہانی کے بائوجود بھی جب ڈاکٹروں نے ہڑتال ختم نہیں کی تو کالج انتظامیہ نے ہڑتال میں شامل 7 جونیئر ڈاکٹروں کو ڈیوٹی سے خارج کرنے کے احکامات صادر کردئے۔پرنسپل سکمز میڈیکل کالج نے اپنے حکمنامے زیر نمبر SKIMS/MC-Acard/1422-29  بتاریخ6جون 2018میں ڈاکٹروں کو خارج کرنے کی وجوہات کی وضاحت کرتے ہوئے لکھا ہے کہ اگر چہ ڈاکٹروں کو تنخواہوں میں تفاوت دور کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی گئی مگر اسکے بائوجود بھی اخبارات میں یہ خبر شایع ہوئی ہے کہ ڈاکٹر 5جون سے ہڑتال پر چلے جائیں گے۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ اگرچہ کالج انتظامیہ نے کالج میں سینئر فیکلٹی ممبران کی خدمات حاصل کرکے جونیئر ڈاکٹروں کو انکے مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی مگر اسکے بائوجود بھی ڈاکٹر ہڑتال کرنے پر بضد رہے جسکی وجہ سے مریضوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ پرنسپل سکمز میڈیکل کالج ڈاکٹر ریاض ایتو کی جانب سے جونیئر ڈاکٹروں کے خلاف سخت اقدام کے بعد اگر چہ سکمز ریذیڈنٹ ڈاکٹروں نے ہڑتال جمعہ 10بجے تک ختم کردی ہے مگر ایسوسی ایشن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اگر انتظامیہ نے اگر صبح دس بجے تک معتبر ذرائع سے تنخواہوں مین تفاوت ختم کرنے کی یقین دہانی اور ڈیوٹی سے ڈاکٹروں کو خارج کرنے کے حکم نامہ کو واپس نہیں لیا تو وہ ہڑتال جاری گی۔