ہندوستانی پائلٹ کو جلد واپس لوٹایا جائے:بھارت

نئی دہلی/یو این آئی/ہندوستان نے پاکستان سے ہندوستانی فضائیہ کے پائلٹ کو جلد اور بحفاظت واپس لوٹانے کو کہا ہے اور زخمی حالت میں ان کی ویڈیو کلپ عام کرنے پر سخت احتجاج کیا ہے۔وزارت خارجہ نے پاکستان کے قائم مقام ہائی کمشنر کو طلب کر کے کہا کہ اس کے فضائیہ  پائلٹ کو زخمی حالت میں دکھانے والی ویڈیو کلپ کو عام کرنا  بین الاقوامی انسانی قانون اور جنیوا معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ پاکستانی سفارتکار سے واضح الفاظ میں کہا گیا کہ ان کے ملک کی حراست میں  ہندوستانی فضائیہ پائلٹ کو کوئی گزند نہ پہنچایا جائے اور امید ظاہر کی  گئی کہ پائلٹ کو فوری طور پر اور بحفاظت واپس لوٹایا جائے گا۔ وزارت خارجہ نے پاکستانی کارگزار ہائی کمشنر کو طلب کرکے پاکستان کی طرف سے سویرے بغیر اشتعال کے حملے اور پاکستانی فضائیہ کے ہندوستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے اور فوجی ٹھکانوں کو نشانہ بنا نے پر سخت احتجاج درج کرایا گیا۔
وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ پاکستانی سفارت کار کو دو ٹوک الفاظ میں بتا دیا گیا ہے کہ ہندوستان کو کسی بھی طرح کے حملے اور سرحد پار دہشت گردی کی کارروائی کے جواب میں اپنی قومی سلامتی، خودمختاری اور علاقائی سالمیت کی حفاظت کرنے کا پورا حق ہے۔وزارت نے کہا ہے کہ ہندوستان نے بالاکوٹ میں دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے کیمپ پر کارروائی کی تھی۔ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ پاکستان نے بین الاقوامی ذمہ داری کی پرواہ نہ کرتے ہوئے اپنی زمین سے دہشت گردانہ سرگرمیوں کو انجام دینے والے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے ہندوستان پر حملہ کیا ہے۔ اس بات پر بھی افسوس ظاہر کیا گیا کہ پاکستان کی سیاسی اور فوجی قیادت اپنی زمین سے چلائے جارہے دہشت گرد کیمپوں کی موجودگی سے مسلسل انکار کرتا رہا ہے۔وزارت نے پاکستانی سفارتکار کو پلوامہ حملے میں جیش محمد کے رول سے متعلق دستاویزات کا پلندہ بھی سونپا۔ یہ کہا گیا کہ ہندوستان توقع کرتا ہے کہ پاکستان اپنی سر زمین سے ہونے والی دہشت گردانہ سرگرمیوں کے خلاف ٹھوس کارروائی کرے گا۔