ہائر سیکنڈری سکول اْکڑال پوگل پرستان میں تدریسی عملے کی شدید قلت کے خلاف احتجاج کا انتباہ

محمد تسکین
بانہال //ضلع رام بن کی دو درجن کے قریب دیگر ہائر سیکنڈریوں کی طرح سرکاری ہائیر سیکنڈری سکول اْکڑال میں بھی سٹاف کی شدید قلت کی وجہ سے نظام تعلیم متاثر ہے اور سینکڑوں طلبہ و طالبات کا مستقبل داو پر لگا ہوا ہے۔ ان باتوں کا اظہار ینگ پنتھرس کے ضلع صدر رام بن نے ایک بیان میں کرتے ہوئے کہا ہے کہ جلد از جلد خالی اسامیوں کو پر نہ کرنے کی صورت میں وہ والدین اور بچوں کے ساتھ ملکر احتجاجی مظاہرے کرنے پر مجبور ہو جائینگے۔اخباروں کو بھیجے ایک بیان میں ینگ پنتھرس پارٹی ضلع صدر رام بن افتیاز احمد سوہل نے کہا ہیکہ ہائیر سیکنڈری سکول اْکڑال میں لیکچراروں کی نو اسامیاں برسوں سے خالی پڑی ہیں جبکہ تدریسی عملے کی دیگر اسامیاں بھی مسلسل خالی پڑی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی کمی کے معاملہ سینکڑوں غریب طلبہ اور طالبات کے ساتھ کسی زیادتی سے کم نہیں ہے اور سرکاری سکولوں میں تعلیم حاصل کرنا ایک مذاق بنا ہوا ہے۔ ینگ پنتھرس کے ضلع صدر افتیاز سوھل نے کہا کہ تقریباً تین سال کے بعد سکول کھولے گئے ہیں لیکن افسوس کی بات ہے کہ سرکار کی طرف سے نظام تعلیم کو بہتر بنانے کے دعوی کھوکھلے ہیں اور زمینی صورتحال کی حقیقت سے کوسوں دور ہیں۔ انہوں نے لیفٹیننٹ گورنر اور ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن سے پرزور گزارش کی ہے کہ وہ جلد از جلد ہائیر سیکنڈری سکول اْکڑال میں خاکی پڑی آساتذہ کی اسامیوں کو جلد از جلد پر کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر محکمہ تعلیم کی طرف فوری توجہ نہیں دی گئی تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرف غور نہ کرنے کی صورت میں اْکڑال پوگل پرستان کے بچے اور والدین احتجاجی مظاہرے کرے پر مجبور ہوں گے۔