گھر میں کمائی کا واحد ذریعہ بھی نہ رہا

محمد بشارت
کوٹرنکہ //گزشتہ دنوں کوٹرنکہ سب ڈویژن کی پنچایت بے نمبل میں بجلی کی زد میں آکر لقمہ اجل بننے والا 28سالہ طالب حسین ولد منیر حسین اپنے کنبہ میں کمائی کا واحد ذریعہ تھا لیکن محکمہ بجلی کی انتہائی درجہ کی لاپرواہی کی وجہ سے مذکورہ نوجوان بجلی کی لپیٹ میں آکر لقمہ اجل بن گیا ۔اس کے اہل خانہ کیساتھ ساتھ پنچایت کے سرپنچ الحاج محمد اقبال نے بتایا کہ مذکورہ نوجوان گھر میں کمائی کا واحد ذریعہ تھا اور وہ صبح مزدوری کیلئے گھر سے نکالا تھا تاہم راستہ میں وہ بجلی کی 11کے وی لائن کی خرابی کی وجہ سے اس کی زد میں آکر لقمہ اجل بن گیا ۔غور طلب ہے کہ مذکورہ نوجوان کا ایک ڈھائی برس کا بچہ اور اس کی اہلیہ بے سہارہ ہو گئی ہے ۔مقامی معززین و پنچایتی اراکین نے جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ نوجوان کے اہل خانہ کو جلدازجلد معاوضہ دیا جائے جبکہ گھر کے ایک فرد کو سرکاری نوکری دی جائے تاکہ اس کے کنبہ کو سہارہ مل سکے ۔