کیرن سیکٹرمیںبیٹ ملی ٹینٹ مارا گیا | لاش کی واپسی کیلئے پاکستانی فوج سے رابطہ : میجر جنرل

کپوارہ //فوج نے کہا ہے کہ کیرن سیکٹر میں سنیچر کو BAT کی کوشش ناکام بنا دی گئی جہاں اس طرف گھسنے کی کوشش کرنے والا ایک "درانداز" مارا گیا۔ کپوارہ میں 28انفنٹری ڈویژن کے میجرل جنرل ابھجیت پنڈھاکر نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سنیچر سہ پہر 3 بجے، "جنگ بندی معاہدے کی مکمل خلاف ورزی" کو اس وقت دیکھا گیا جب  پٹھانی لباس اور جیکٹ میں ملبوس ایک جنگجو کو دیکھا گیا جو دراندازی کی کوشش کر رہا تھا ۔انہو ں نے کہا کہ حد متارکہ پر تعینات فوجی جوانو ں نے بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے در اندازی کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے درانداز کو جا ں بحق کیا ۔انہو ں نے کہا کہ ابتدائی طور مارے گئے جنگجو کی شنا خت نہ ہوسکی لیکن بعد میں اس سے بر آمد کئے گئے دستا ویزات سے اس شنا خت محمد شبیر ملک کے بطور ہوئی جو پاکستان کا رہنے والا ہے ۔میجرل جنرل کے مطابق مارے گئے جنگجو کی طویل سے بھاری مقدار میں اسلحہ بر آمد کیا گا جس میں ایک اے کے47رائفل ،7ہتھ گولے اور دیگر اسلحہ شامل ہے جبکہ اس قبضے سے ویکسنیشن سرٹفکیٹ اور پاکستان کا قومی شناختی کارڈ بھی برآمد کیا گیا اور کچھ دستا ویزات میں مہلوک در انداز اپاکستانی وردی میں دیکھا گیا ۔فوجی آفیسر نے مذید بتایا کہ مہلوک جنگجو نے اسی راستہ کا استعمال کیا جہا ں اپریل 2020میں پانچ جنگجوئو ں اس طرف آرہے تھے جنہیں کیرن سیکٹرمیں ہی ایک تصادم کے دوران جا ں بحق کیا ۔انہو ں نے کہا کہ مارے گئے جنگجو کی لاش کو واپس لینے کے لئے پاکستانی حکام سے ہارٹ لائن پر با ضابطہ طور رابطہ کیا گیا ہے ۔ فوجی افسر نے کہا کہ برف باری سے قبل دراندازی کی ممکنہ کوششوں کے بارے میں مسلسل اطلاعات موصول ہورہی ہیں لیکن فوج چوکس ہے اور ایسے تمام منصوبوں کو ناکام بنانے کے لیے بالکل الرٹ ہے۔ امکانی در اندازی کے واقعات کو ناکام بنانے کی خاطر فوج کو سرحدو ں پر چوکنا کیا گیا ہے اور 24گھنٹے نگرانی کی جارہی ہے ۔انہو ں نے یہ بھی کہا کہ گزشتہ سال فروی مہینے میں ہندو پاک افواج کے درمیان سرحدو ں پر امن و امان بر قرار رکھنے کے لئے ایک معاہدہ طے پایاگیا تھا تاہم کیرن سیکٹر میں پاکستانی در انداز کی جانب سے بھارتی حدود میں گھسنے کی کوشش کر نا معاہدے کی خلاف ورزی ہے کیونکہ پاکستانی رینجرس کو اس بات کا پتہ ہوتا ہے کہ جنگجو بھارتی حدود میں داخل ہو تے ہیں ۔