کپوارہ کا شہری 7سال بعدتہاڑ جیل سے رہا

 
کپوارہ//کپوارہ قصبہ سے تعلق رکھنے والے صف اول کے جنگجو فاروق احمد ڈاگہ جو گزشتہ 7برسوںسے دلی کے تہاڑ جیل میںبند تھے ،کو عدالت نے بری کر دیا ۔فاروق احمد ڈاگہ کو 7سال قبل پولیس نے حوالہ سکینڈل کیس میں گرفتار کر کے تہاڑ جیل میں بند کیا ۔فا روق احمد ولد غلام محمد ڈاگہ 90کی دہائی میں جنگجو ئوں کی صف میں شامل ہوئے تھے تاہم بعد میں اس کو گرفتار کیا گیا اور چند سال بعد رہا کیا گیا ۔جیل سے رہائی کے بعد فاروق احمد ڈاگہ افراد خانہ کا پیٹ پالنے کے لئے تجارت کے ساتھ مصروف ہوگیا لیکن 11جنوری2011کو وہ کسی کام سے کپوارہ سے سرینگر جارہا تھا اور نار بل کے مقام پر پولیس کی ایک خصوصی ٹیم نے انہیں گرفتار کیا جس کے بعد انہیں دلی کے تہاڑ جیل میں بند کیا گیا۔فاروق پر الزام تھا کہ وہ حوالہ سکینڈل میں ملو ث ہے ۔فاروق کی گرفتار ی اور 7برسو ں سے تہاڑ جیل میں بند ہونے کے دوران ان کے اہل خانہ کسمپرسی کی زندگی گزار رہے تھے جبکہ معمر والدین 7برسو ں کے دوران ان کی رہائی کے انتظار میں لا غر ہوگئے ۔دو روز قبل فاروق احمد ڈاگہ اور ان کے دو ساتھیو ں محمد صدیق گنائی اور غلام جیلانی ساکنا ن سوپورکو پٹیالہ کورٹ ہائو س دلی نے بری کر دیا اور اس کے رہائی کے احکامات صادر کئے ۔فاروق احمد ڈاگہ جمعرات کو سرینگر پہنچ گئے جہا ں انہو ں نے مزار شہد اء پر حاضری دی اور انہیں خراج عقیدت پیش کیا ۔