کوٹاں کانڈی گلہوتہ سڑک 2015میں مکمل اراضی متاثرین کو9سال بعد بھی معائوضہ ملنا باقی ،ڈی سی سے فریادی

جاوید اقبال

مینڈھر// مینڈھر کے گائوں کوٹاں کانڈی گلہوتہ چھ کلومیٹر سڑک کے زمین متاثرین پچھلے نو سال سے معاوضے کیلئے دربدر بھٹک رہےہیں لیکن پی ایم جی ایس وائی حکام ٹس سے مس نہیں ہو رہے ہیں۔ایک مقامی شخص شوکت علی خان نے بتایا کہ اس سڑک کا کام 2002 میں شروع ہوا اور کئی سال گزر جانے کے بعد یہ سڑک 2015میں مکمل ہوئی جس دوران سڑک کی تعمیر کی وجہ سے کئی لوگوں کی کئی کنال زمین سڑک کی زد میں آئی اور کئ چکر دفاتر کے لگنے کے بعد بھی آج تک معاوضہ ادا نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہاکہ سڑک کی وجہ سے وسیع اراضی تباہ ہوئی اور لوگوں کا بھاری نقصان ہوا جس پر حکام ہنوز خاموش ہیں۔ اُنکا کہنا تھاکہ محکمہ مال کا کہنا ہے کہ معاوضہ ہمارے پاس نہیں آيا جبکہ محکمہ پی ایم جی ایس وای کے اعلیٰ آفیسران کا کہنا ہے کہ ہمارے پاس کوئی معاوضہ نہیں ہے، ہم نے سب پیسہ محکمہ مال کو دے دیا ہے تاکہ لوگوں کو معاوضہ دیا جائے ۔شوکت علی خان کا مزید کہنا تھا کہ ہم کبھی محکمہ پی ایم جی ایس وای اور کبھی محکمہ مال کے دفاتر کے چکر کاٹ کاٹ کر تنگ آ گئے ہیں۔ اُنکا کہنا تھا کہ میرا لاکھوں روپے معاوضہ محکمہ کے پاس کئی سال سے بقایا ہے لیکن متعلقہ محکمہ کے آفیسران ٹس سے مس نہیں ہورہے ہیں اور آج کل کرتے ہیں۔ انہوں نے ڈپٹی کمشنر پونچھ سے اپیل کی کہ وہ ذاتی مداخلت کرکے ان کے ساتھ انصاف کریں اور معاوضے کی ادائیگی کو یقینی بنایا جائے۔