کنگن فلٹریشن پلانٹ میں شگاف | پانی کے اخراج سے زمین بھی کھسک رہی ہے ،نزدیکی بستی کو خطرہ لاحق

کنگن//وسطی ضلع گاندربل کے بملونہ کنگن میں قائم فلٹریشن پلانٹ میں شگاف پڑنے کے نتیجے میں آس پاس کی رہائشی بستی کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے جبکہ پانی کے اخراج سے زمین بھی کھسک رہی ہے۔ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ بملونہ کنگن میں قائم فلٹریشن پلانٹ میں شگاف پڑگیا ھے جس کے باعث فلٹریشن پلانٹ سے پانی کااخراج ہورہا ہے۔ مقامی لوگوں کے مطابق پانی کے اخراج کی وجہ سے آس پاس کی بستی کے لوگوں میں خوف لاحق ہوگیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ فلٹریشن پلانٹ سے جو پانی اخراج ہورہا ہے، اس سے زمین بھی کھسک رہی ہے جس سے کبھی بھی کوئی بڑا نقصان ہوسکتا ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ فلٹریشن پلانٹ کے ذریعے پورے کنگن قصبہ کو پانی سپلائی کیا جارہا ہے۔ مقامی لوگوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگرچہ معمول کے مطابق فلٹریشن پلانٹ کی مرمت کچھ برس قبل کی گئی لیکن اس کے بعد اس کی اچھی طرح مرمت نہیں کی گئی۔ مقامی لوگوں نے مزید بتایا کہ اس فلٹریشن پلانٹ میں اپر سندھ ہائڈرو پاور پروجیکٹ کنگن کنال سے پانی سپلائی کیا جارہا ہے جو بعد میں کنگن قصبہ کو سپلائی کیا جاتا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ فلٹریشن پلانٹ کی مرمت کرنے میں جل شکتی محکمہ کوئی اقدام نہیں کررہا ہے۔ انہوں نے ایل جی انتظامیہ سے اس سلسلے میں اقدامات کا مطالبہ کیا ہے تاکہ عوام کو مزید مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ ادھر جل شکتی محکمہ گاندربل میں گذشتہ چار ماہ سے ایگزیکٹو انجینئر کی کرسی خالی پڑی ہے جس کو آج تک پُر نہیں کیا جارہاہے۔